چھتیس گھنٹے بعد ممتا ریاستی سیکریٹریٹ سے گھر روانہ ہوئیں، فوج نہ ہٹانے پر دی کورٹ جانے کی دھمکی

کلکتہ۔ بنگال میں مختلف ٹول پلازہ پر فوجی جوانوں کی تعیناتی کی وجہ سے پیدا تنازع کے دوران مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی 36گھنٹے کے بعد آج ریاستی سیکریٹریٹ سے گھر روانہ ہوگئی ہیں ۔

Dec 02, 2016 08:33 PM IST | Updated on: Dec 02, 2016 08:33 PM IST
چھتیس گھنٹے بعد ممتا ریاستی سیکریٹریٹ سے گھر روانہ ہوئیں، فوج نہ ہٹانے پر دی کورٹ جانے کی دھمکی

کلکتہ۔ بنگال میں مختلف ٹول پلازہ پر فوجی جوانوں کی تعیناتی کی وجہ سے پیدا تنازع کے دوران مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی 36گھنٹے کے بعد آج ریاستی سیکریٹریٹ سے گھر روانہ ہوگئی ہیں ۔ ریاستی سیکریٹریٹ کے باہر نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے ممتا بنرجی نے کہا کہ ہم فوج کا احترام کرتے ہیں ۔مگر ہم نے مرکز ی حکومت کا اس طرح کا رویہ کبھی بھی نہیں دیکھا ہے ۔انہوں نے کہا کہ اگر فوج کو ٹول پلازہ سے نہیں ہٹایا گیا تو ہم قانونی کارروائی کریں گے ۔ جب کہ فوج اور مرکزی حکومت نے ممتا بنرجی کے دعوؤں کو خارج کرتے ہوئے کہا کہ ٹول پلازہ پر فوجی جوانوں کی تعیناتی معمول کا حصہ ہے ۔ریاستی حکومت کو مطلع کردیا گیا تھا۔

خیال رہے کہ وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے کل شام ریاستی سیکریٹریٹ نوبانا کے پاس واقع ٹول پلازہ پر فوجی جوانوں کی تعیناتی پر ناراضگی ظاہرکرتے ہوئے کہا کہ وہ ریاستی سیکریٹریٹ نوبانا سے اس وقت تک نہیں جائیں گی جب تک ٹول پلازہ سے فوج کو نہیں ہٹادیا جاتا ہے۔ ممتا بنرجی کے سخت احتجاج کے بعد ریاستی سیکریٹریٹ نوبانا کے پاس واقع ودیاساگر پل پر ٹول پلازہ سے نصف رات میں فوج کو ہٹادیا گیا تھا۔ممتا بنرجی نے کہا کہ مودی سے قبل کسی بھی وزیر اعظم نے فوج سیاست کیلئے استعمال نہیں کیا ہے ۔ممتا بنرجی نے کہا کہ ہم فوج کا احترام کرتے ہیں مگر وفاقی ڈھانچہ کا تقاضا ہے کہ اداروں کا احترام کیا جائے اور ہر ایک اپنے دائرے میں رہ کر کام کرے ۔

Loading...

Loading...