ماؤنوازوں کی دھمکی کی وجہ سے ٹرینوں کی آمدورفت چھ گھنٹے تک رہی ٹھپ

لکھی سرائے: بہار میں ممنوعہ تنظیم ہندوستانی کمیونسٹ پارٹی (ماؤنواز) کے انتہاپسندوں کی دھمکی کے پیش نٖظر مشرقی ریلوے کے مالدہ ریلوے ڈویژن کے کیول۔ جمال پور ریلوے روٹ پر نصف شب سے تقریباً چھ گھنٹے تک ٹرینوں کی آمدورفت ٹھپ رہی۔

Feb 15, 2016 02:05 PM IST | Updated on: Feb 15, 2016 02:05 PM IST
ماؤنوازوں کی دھمکی کی وجہ سے ٹرینوں کی آمدورفت چھ گھنٹے تک رہی ٹھپ

لکھی سرائے: بہار میں ممنوعہ تنظیم ہندوستانی کمیونسٹ پارٹی (ماؤنواز) کے انتہاپسندوں کی دھمکی کے پیش نٖظر مشرقی ریلوے کے مالدہ ریلوے ڈویژن کے کیول۔ جمال پور ریلوے روٹ پر نصف شب سے تقریباً چھ گھنٹے تک ٹرینوں کی آمدورفت ٹھپ رہی۔

ریلوے پولیس کے ذرائع نے آج یہاں بتایا کہ کیول۔ جمال پور روٹ پر واقع اورین اسٹیشن کے کیبن مین کو کل دیر رات ماؤنوازوں نے فون کرکے ریلوے اس روٹ پر ٹرینوں کی آمدورفت روکنے کو کہا اور ایسا نہ کرنے پر انجام بھگتنے کے لئے تیار رہنے کی دھمکی دی۔ کیبن مین نے سینئر افسر وں کو اس کی اطلاع دی۔ جس کے بعد احتیاطاًً اس ریلوے روٹ پر رات تقریباً ایک بجے سے صبح 7 بجے تک ٹرینوں کی آمدورفت روک دی گئی۔ 

ذرائع نے بتایا کہ ٹرینوں کی آمدورفت روکے جانے کی وجہ سے اس ریلوے ڈویژن پر طویل مسافت کی ایکسپریس ٹرینوں سمیت کئی پسنجر ٹرینیں مختلف اسٹیشنوں پر رکی رہیں۔ اس کے علاوہ 53427 اور 53428 اور 53479 اور 53480 دو جوڑی گاڑیاں کیول ۔ جمال پور پسنجر کینسل کردی گئیں۔

دریں اثنا دہلی سے گوہاٹی جانے والی برہمپتر میل کے منکدا اسٹیشن پر سات گھنٹے تک روکے جانے سے ناراض مسافروں نے زبردست ہنگامہ کیا۔ اس ٹرین کو تقریباً سات گھنٹے کی تاخیر سے صبح 07:15 بجے اپنی منزل کے لئے روانہ کردیا گیا۔

Loading...

خیال رہے کہ ممنوعہ ہندوستانی کمیونسٹ پارٹی (ماؤنواز) کے انتہا پسندوں نے اپنی تنظیم کے خودساختہ زونل کمانڈر چراغ دا کے پولیس حراست میں مارے جانے کے خلاف احتجاج میں 15 اور 16 فروری کو مشرقی بہار اور مشرقی بہار اور شمال مشرقی جھارکھنڈ بند کا اعلان کیا ہے۔

Loading...