بہار میں عظیم اتحاد کا حصہ بنے مکیش سہنی، بی جے پی پرعائد کیا وعدہ خلافی کا الزام

تیجسوی یادونے مکیش سہنی کا عظیم اتحاد میں شامل ہونے پراستقبال کرتے ہوئے کہا کہ ان کے آنے سے عظیم اتحاد مزید مضبوط ہوا ہے جبکہ کشواہا نے بی جے پی پرسخت تنقید کی۔

Dec 23, 2018 08:58 PM IST | Updated on: Dec 23, 2018 09:11 PM IST
بہار میں عظیم اتحاد کا حصہ بنے مکیش سہنی، بی جے پی پرعائد کیا وعدہ خلافی کا الزام

پٹنہ میں مکیش سہنی کوعظیم اتحاد میں شامل کراتے ہوئے تیجسوی یادواوراوپیندرکشواہا۔

پٹنہ:  وکاس شیل انسان پارٹی (وی آئی پی) کے قومی صدراورسن آف ملاح کے نام سے مشہورمکیش سہنی آج اپنے حامیوں کی بڑی تعداد میں کے ساتھ بہارمیں راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) کے عظیم اتحاد میں شامل ہو گئے۔  بہاراسمبلی میں حزب اختلاف کے رہنما تیجسوی پرساد یادو، راشٹریہ لوک سمتا پارٹی (آر ایل ایس پی ) کے صدراوپیندرکشواہا، ہندوستانی عوام مورچہ (ہم) کے قانون سازکونسلر سنتوش مانجھی اور لوک تانترک جنتا دل (ایل جے ڈی) کے سینئر لیڈراورسابق ممبر پارلیمنٹ ارجن رائے کی موجودگی میں مکیش سہنی نے عظیم اتحاد میں شامل ہونے کا اعلان کیا۔ سہنی کے ساتھ بڑی تعداد میں ان کی پارٹی کے لیڈر اور کارکن موجود تھے۔

اپوزیشن کے لیڈرتیجسوی یادونے مکیش  سہنی کا عظیم اتحاد میں شامل ہونے پراستقبال کرتے ہوئے کہا کہ ان کے آنے سے عظیم اتحاد مزید مضبوط ہوا ہے۔ پارٹی کے قومی صدر لالوپرساد یادونےغیربی جے پی جماعتوں کومتحد کرنے کا جوخواب دیکھا تھا، وہ اب شرمندہ تعبیرہورہا ہے۔ انہوں نے ایک بارپھردہرایا کہ عظیم اتحاد عوام کے دلوں کا اتحاد ہے۔ آئین کے تحفظ، غریبوں کومضبوط کرنے، کسانوں، بے روزگاروں کے ساتھ ہی سماجی انصاف کومضبوط کرنے کے لئے عظیم اتحاد، دن بہ دن فروغ  پاتا جا رہا ہے۔

تیجسوی یادو نے کہا کہ مرکز کی بی جے پی قیادت کی حکومت کے اقتدار میں آنے کے بعد سے ملک میں غیر اعلانیہ طور پر ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے۔ لوگوں کی آزادی پر حملے ہو رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اقتدار کے لئے بہار میں عوام کی حمایت کی توہین کی گئی۔ بہار کے عوام سب دیکھ رہی ہے اور آئندہ لوک سبھا کے انتخابات میں عوام اس کا سخت جواب دیں گے۔

اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ  مکیش سہنی کو قومی جمہوری اتحاد (این ڈی اے) نے عزت نہیں دی۔ اسی طرح سے آر ایل ایس پی کی بھی توہین کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ این ڈی اے ایک ظالم کی طرح کام کررہا ہے۔ آئندہ لوک سبھا انتخابات میں مهاگٹھ بندھن کی جیت یقینی ہے، وہیں بہارمیں این ڈی اے کا کھاتہ بھی کھلنا مشکل ہے۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ لوک سبھا انتخابات میں بی جے پی نے بہارمیں 22 سیٹوں پرجیت حاصل کی تھی اوردوسیٹوں پرجیت درج کرنے والی جے ڈی یوکو اس بار17 سیٹ دی جا رہی ہیں۔

اس موقع پر مکیش سہنی نے کہا کہ گزشتہ لوک سبھا انتخابات کے وقت سے ہی وہ این ڈی اے کے حق میں تشہیرکرتے رہے اورنریندرمودی کو وزیراعظم بنانے میں اہم تعاون دیا۔ انہوں نے کہا کہ نریندرمودی کے ساڑھے چارسال کی مدت کے دوران نشاد سماج کومغربی بنگال، دہلی اوراوڈیشہ کے طرزپرریزرویشن حاصل ہو، اس کے لئے وہ جدوجہد کرتے رہے، لیکن وعدہ کرنے کے باوجود ریزرویشن نہیں دی گئی۔ تقریب میں دیگررہنماؤں نے بھی اپنے خیالات کا اظہارکیا۔

Loading...