آر جے ڈی لیڈر تیجسوی یادو کو پٹنہ ہائی کورٹ سے لگا جھٹکا ، اب بنگلہ کرنا ہوگا خالی

پٹنہ ہائی کورٹ نے بہار اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر تیجسوی یادو کے نائب وزیراعلیٰ رہتے ہوئے انہیں الاٹ بنگلے کو خالی کرنے کے حکومت کے فیصلے کو چیلنج کرنے والی عرضی آج خارج کر دی ۔

Jan 07, 2019 06:38 PM IST | Updated on: Jan 07, 2019 06:38 PM IST
آر جے ڈی لیڈر تیجسوی یادو کو پٹنہ ہائی کورٹ سے لگا جھٹکا ، اب بنگلہ کرنا ہوگا خالی

تیجسوی یادو کی فائل فوٹو ۔

پٹنہ ہائی کورٹ نے بہار اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر تیجسوی یادو کے نائب وزیراعلیٰ رہتے ہوئے انہیں الاٹ بنگلے کو خالی کرنے کے حکومت کے فیصلے کو چیلنج کرنے والی عرضی آج خارج کر دی ۔ چیف جسٹس امریشور پڑتاپ شاہی اور جسٹس انجنا مشرا کی بنچ نے مسٹر یادو کے نائب وزیراعلی رہتے ہوئے انہیں دار الحکومت پٹنہ کے پانچ دیش رتن مارگ واقع الاٹ سرکاری بنگلہ کو خالی کرنے کے حکومت کے فیصلے کو چیلنج دینے والی عرضی خارج کر دی ۔

اس سے قبل چیف جسٹس مسٹر شاہی اور جسٹس انجنا مشرا کی بینچ نے گذشتہ جمعرات کو دونوں طرف کی دلیلیں سننے کے بعد فیصلہ محفوظ رکھ لیا تھا۔اپوزیشن لیڈر نے اس سے قبل بنگلہ خالی کرنے کے حکومت کے فیصلے کو پٹنے ہائی کورٹ کی سنگل بینچ میں چیلنج کیا تھا۔بینچ نے معاملے میں سماعت کے بعد مسٹر یادو کی عرضی 06 اکتوبر 2018 کو خارج کر دی تھی ۔ اس کے بعد مسٹر یادو نے ڈبل بینچ میں عرضی دائر کی جو آج خارج کر دی گئی ۔

واضح رہے کہ مسٹر یادو کو عظیم اتحاد میں نائب وزیراعلیٰ رہنے کے دوران پانچ دیش رتن مارگ کا یہ بنگلہ الاٹ ہوا تھا۔ لیکن بہار میں قومی جمہوری اتحاد( این ڈی ) کی حکومت بننے پر نائب وزیراعلیٰ کا عہدہ ختم ہونے کے بعد بھی بنگلہ کو خالی نہیں کیا ۔ حکومت بہار نے انہیں بنگلہ خالی کرنے کی ہدایت دی تھی ۔بہار میں این ڈی اے حکومت میں مسٹر سشیل مودی کے نائب وزیراعلی بننے کے بعد انہیں پانچ دیش رتن مارگ واقع بنگلہ الاٹ کیا گیا ہے ۔ وہیں مسٹر تیجسوی یادو کو ریاستی حکومت نے 1 پولو روڈ کا بنگلہ الاٹ کیا ہے ۔

Loading...

Loading...