راہل گاندھی میں وزیراعظم بننے کی تمام خوبیاں موجود ہیں: تیجسوی یادو

آرجے ڈی لیڈرنے بی جے پی پر کانگریس لیڈر کی شبیہ خراب کرنے کے لئے کروڑوں روپئے خرچ کرنے کا الزام لگاتے ہوئے کہا وزیراعظم کا فیصلہ انتخابات کے بعد عظیم اتحاد کرے گی۔

Jan 27, 2019 09:39 PM IST | Updated on: Jan 27, 2019 09:39 PM IST
راہل گاندھی میں وزیراعظم بننے کی تمام خوبیاں موجود ہیں: تیجسوی یادو

راہل گاندھی اور تیجسوی یادو: فائل فوٹو

بہار کے سابق نائب وزیراعلیٰ اورراشٹریہ جنتا دل سربراہ لالو یادو کے بیٹے تیجسوی یادو نے کہا ہے کہ کانگریس صدرراہل گاندھی میں ایک اچھے وزیراعظم بننے کے لئے ضروری تمام خوبیاں موجود ہیں۔ ان کی قیادت پرسوال نہیں اٹھایا جانا چاہئے۔ حالانکہ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کون بنے گا، اس کا فیصلہ عام انتخابات کے بعد عظیم اتحاد کی تمام جماعتیں مل کر کریں گی۔

تیجسوی یادو نے اس کے ساتھ ہی بی جے پی پرکانگریس لیڈرکی شبیہ خراب کرنے کے لئے کروڑوں روپئے خرچ کرنے کا الزام بھی عائد کیا۔ انہوں نے کہا کہ راہل گاندھی اپنے خلاف چلائے گئے اتنے طویل منفی مہم کے بعد بھی اپنی پختگی، رحم دلی اوربڑے دل سے لوگوں کا دل جیتا ہے۔

Loading...

بی جے پی پرطنزکرتے ہوئے تیجسوی یادو نے کہا کہ جمہوریت ہمیشہ عوامی مرکوزہوتا ہے، یہاں شخص مرکوزنہیں ہوتا ہے۔ ہم حکومت کی تانا شاہی والا رویہ نہیں چاہتے ہیں۔ موجودہ وقت میں بی جے پی شخصی عبادت سے متاثرہے۔ ہم اس ثقافت کو نہیں چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ راہل گاندھی کی قیادت میں تین اہم ریاستوں راجستھان، چھتیس گڑھ اورمدھیہ پردیش میں کانگریس کی جیت نے پارٹی اوران 69 فیصد رائے دہندگان کے دل میں جوش اور خود اعتمادی کا جذبہ پیدا کردیا ہے۔

آرجے ڈی لیڈرنے کہا کہ وہ ہندوستان کی سب سے قدیم پارٹی کے صدرہیں اورگزشتہ 15 برسوں سے ممبرپارلیمنٹ ہیں۔ انہوں نے راہل گاندھی کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ مت بھولئے کہ ان کی پارٹی سے ملک میں پانچ وزرائے اعلیٰ ہیں اوروہ ان کی قیادت کررہے ہیں۔ اس لئے ان کی قیادت اورصلاحیت پرکوئی سوال نہیں اٹھایا جانا چاہئے۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ کانگریس کے اہم اتحادیوں میں سے ایک اے آئی اے ڈی ایم کے  صدرایم کے اسٹالن نے پہلی بارعوامی طورپرکہا تھا کہ نریندرمودی حکومت کو ہرانے کے لئے متحد اپوزیشن کووزیراعظم عہدے کے امیدوارکے طورپرکانگریس سربراہ راہل گاندھی کو میدان میں اتارنا چاہئے۔ اس بیان کولے کراسٹالن کی تنقید بھی کی گئی تھی، لیکن وہ اپنے خیالات پرقائم رہے۔

تیجسودی یادو سے جب پوچھا گیا کہ راہل گاندھی اپوزیشن اتحاد کی قیادت کرنے کے لئے سب کی پسند ہیں؟ تو انہوں نے کہا کہ ہندوستان ایک جمہوری ملک ہے، اس میں لوگ اپنے نمائندوں کا انتخاب کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن کے بعد ہم ساتھ بیٹھ کرایک لیڈرکا انتخاب کرسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن کے بعد ہم ساتھ بیٹھ کرایک لیڈر منتخب کرسکتے ہیں، اس کے لئے کوئی جلد بازی نہیں ہے۔ مت بھولئے کہ منموہن سنگھ 2004 میں وزیراعظم عہدے کے امیدوارنہیں تھے، پھربھی انہوں نے کامیابی کے ساتھ 10 سال تک حکومت چلائی۔

Loading...