راشٹریہ جنتا دل کی ممبر اسمبلی کنتی دیوی کے بیٹے نے ڈاکٹر کو پیٹ پیٹ کر کیا لہولہان

گیا : جے ڈی یو کے ممبر اسمبلی سرفراز عالم کے بعد اب گیا کے اتری سے آر جے ڈی کی رکن اسمبلی کنتي دیوی کے بیٹے رنجیت یادو پر بدھ کو نيم چك بتھاني اسپتال کے ڈاکٹر ستیندر کمار سنہا کو پیٹ پیٹ کر لہولہان کر دینے کا الزام لگا ہے۔

Jan 28, 2016 11:02 AM IST | Updated on: Jan 28, 2016 11:02 AM IST
راشٹریہ جنتا دل کی ممبر اسمبلی کنتی دیوی کے بیٹے نے ڈاکٹر کو پیٹ پیٹ کر کیا لہولہان

گیا : جے ڈی یو کے ممبر اسمبلی سرفراز عالم کے بعد اب گیا کے اتری سے آر جے ڈی کی رکن اسمبلی کنتي دیوی کے بیٹے رنجیت یادو پر بدھ کو نيم چك بتھاني اسپتال کے ڈاکٹر ستیندر کمار سنہا کو پیٹ پیٹ کر لہولہان کر دینے کا الزام لگا ہے۔

الزام ہے کہ رکن اسمبلی کے بیٹے نے ڈاکٹر کو لہولہان کر دیا اور کرسی پھینک کر ماری ، جس میں ڈاکٹر بال بال بچ گئے۔ زخمی ڈاکٹر جے پرکاش نارائن اسپتال میں لایا گیا۔ متاثرہ نے بتایا کہ واقعہ کے وقت رکن اسمبلی کا بیٹا شراب کے نشے میں مدہوش تھا۔

اطلاعات کے مطابق رکن اسمبلی کا بیٹا رنجیت اپنے حامیوں کے ساتھ اسپتال پہنچا اور انچارج کے بارے میں پوچھا۔ انچارج چھٹی پر تھے، لہذا اس نے ڈیوٹی پر تعینات ڈاکٹر سے رجسٹر دکھانے کیلئے کہا ۔ ڈاکٹر ستیندر نے رجسٹر دینے سے انکار کر دیا ، تو رنجیت نے اپنے حامیوں کے ساتھ مل کر اس پر حملہ کر دیا۔

خیال رہے کہ رنجیت 2013 میں جے ڈی یو کے لیڈر سمرت یادو کے قتل کیس میں بھی ملزم ہے اور فرار چل رہا ہے۔ رنجیت کے گھر سے کافی تعداد میں اسلحے بھی ملے تھے، جس کا بھی اس پر کیس چل رہا ہے۔

Loading...

رنجیت کے والد راجندر یادو بھی وزیر رہ چکے ہیں اور فی الحال قتل کیس میں سزا کاٹ رہے ہیں۔ نيم چك بتھاني کے ڈی ایس پی ودیا اس پورے معاملے کی جانچ کر رہے ہیں۔

ادھر آئی ایم اے نے اس واقعہ کی شدید مذمت کی ہے اور اس سلسلے میں ایک میٹنگ بلائی ہے ، جس میں آئندہ کی حکمت عملی طے کی جائے گی۔

Loading...