طارق انور19 سال بعد کانگریس میں کریں گے واپسی، کٹیہارپارلیمانی سیٹ سے ہوں گےعظیم اتحاد کےامیدوار!۔

آرجے ڈی کی حمایت ملنا بھی انتہائی آسان ہے وہیں کانگریس میں شمولیت اختیارکرنے میں ان کے لئے کوئی رکاوٹ بھی نہیں ہے۔

Sep 29, 2018 03:27 PM IST | Updated on: Sep 29, 2018 05:35 PM IST
طارق انور19 سال بعد کانگریس میں کریں گے واپسی، کٹیہارپارلیمانی سیٹ سے ہوں گےعظیم اتحاد کےامیدوار!۔

سینئرلیڈر طارق انور کانگریس میں جلد شامل ہوسکتے ہیں۔

پانچویں باربہارکے کٹیہارلوک سبھا علاقے کا پارلیمنٹ میں نمائندگی کررہے طارق انورآئندہ لوک سبھا الیکشن کانگریس کے ٹکٹ پرلڑسکتے ہیں۔ شرد پوارکا رافیل ڈیل پرنریندر مودی کا ساتھ دینا طارق انورکواتنا ناگوار گزرا اورانہوں نے جمعہ کو نیشنلسٹ کانگریس پارٹی (این سی پی) کی رکنیت کے ساتھ ساتھ لوک سبھا کی رکنیت سے بھی استعفیٰ دے دیا۔

نریندرمودی کی مخالفت کے نام پرشرد پوارکا 19 سال پرانا ساتھ چھوڑنے والے طارق انورنے اپنے پتے نہیں کھولے، لیکن کانگریس ان کا استقبال کرنے کےلئے تیارہوتی نظرآرہی ہے۔ دراصل ان کا رشتہ کانگریس سے بہت قدیم ہے۔

Loading...

طارق انورنے کانگریس سے ہی سیاست شروع کی تھی۔ 1976 میں وہ بہاریوتھ کانگریس کے صدربنے اور1980 میں کٹیہارسے کانگریس کے ٹکٹ پرپہلی بارممبرپارلیمنٹ منتخب ہوئے تھے۔

کانگریس سے 20 سال پرانا ساتھ انہوں نے 1999 میں چھوڑدیا۔ سونیا گاندھی کے غیرملکی نژاد کے مدعے پرشرد پوار، طارق انوراورپی اے سنگما نے پارٹی چھوڑدی اوراین سی پی کی تشکیل ہوئی۔ حالانکہ ان کی کانگریس مخالفت زیادہ دنوں تک نہیں چلی، کیونکہ پوارنے 2004 میں یوپی اے کا ساتھ دینے کافیصلہ کیا۔

یہ بھی پڑھیں:     پوار سے ناراض طارق انور نے لوک سبھا اور پارٹی کی رکنیت سے دیا استعفیٰ

ویسے سچائی یہ بھی ہے کہ طارق انورنے پواریا سنگما کے قریبی ہونے کےسبب کانگریس نہیں چھوڑی تھی، بلکہ سیتارام کیسری کےساتھ سونیا گاندھی نے جس طرح کا برتاو کیا تھا، اس سے طارق انورمایوس تھے اوروہ سونیا کوزبردست جھٹکا دینا چاہتے تھے۔

تبھی توکہا جارہا ہے کہ طارق انوراگرکانگریس نہیں چھوڑتے تووہ آج پارٹی میں احمد پٹیل اورغلام نبی آزاد کی طرح کی حیثیت میں ہوتے۔ ان کے این سی پی چھوڑنے کے بعد راشٹریہ جنتا دل کے لیڈر تیجسوی یادو نے ان کے فیصلے کا استقبال کیا۔

یہ بھی پڑھیں:     رافیل جنگی طیارہ سودے میں ہوئی مبینہ بے ضابطگی کی جے پی سی سے جانچ ہو : طار ق انور

تیجسوی یادو نے کہا کہ طارق انوربہت ہی تجربہ کار لیڈرہیں، وہ جوطے کرنا چاہیں، کرسکتے ہیں۔ ایسے میں مانا جارہا ہے کہ طارق انورلالوپرساد یادو کی مدد سے کٹیہارسے آئندہ لوک سبھا الیکشن لڑیں گے۔

دوسری جانب کانگریس لیڈرپریم چند مشرا نے کہا کہ طارق انورکانگریسی ہی ہیں، اس لئے ان کی فطری جگہ پارٹی میں ہے۔ اس درمیان ذرائع نے بتایا ہے کہ طارق انورآئندہ کچھ دنوں میں سونیا گاندھی اورراہل گاندھی سے ملاقات کریں گے۔ وہیں تیجسوی یادو کی پارٹی آرجے ڈی کے لیڈروں کا کہنا ہے کہ اگر طارق انورالیکشن لڑتے ہیں توان کو پوری حمایت ملے گی۔

یہ بھی پڑھیں:    روہنگیا مہاجرین پر مودی حکومت کا فیصلہ حقوق انسانی کے خلاف: طارق انور

یہ بھی پڑھیں:    بی جے پی لوگوں کی توجہ بھٹکانے کےلئے تین طلاق کے مسئلے کو طول دے رہی ہے: طارق انور

Loading...