உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Canada: کینیڈا کے 3 کالج بند! ہزاروں متاثرہ ہندوستانی طلبا کے لیے ایڈوائزری جاری

    کینیڈا کے سی بی سی نیوز نے اطلاع دی ہے کہ ان تینوں کالجوں میں مونٹریال میں ایم کالج، شیربروک میں سی ڈی ای کالج اور لانگوئیل میں سی سی ایس کیو کالج شامل ہے۔ ان کالجوں نے ٹیوشن فیس کی ڈیڈ لائن کو آگے بڑھا دیا، جس سے طلبا کو اچانک بھاری مقدار میں ادائیگی کرنی پڑی-

    کینیڈا کے سی بی سی نیوز نے اطلاع دی ہے کہ ان تینوں کالجوں میں مونٹریال میں ایم کالج، شیربروک میں سی ڈی ای کالج اور لانگوئیل میں سی سی ایس کیو کالج شامل ہے۔ ان کالجوں نے ٹیوشن فیس کی ڈیڈ لائن کو آگے بڑھا دیا، جس سے طلبا کو اچانک بھاری مقدار میں ادائیگی کرنی پڑی-

    کینیڈا کے سی بی سی نیوز نے اطلاع دی ہے کہ ان تینوں کالجوں میں مونٹریال میں ایم کالج، شیربروک میں سی ڈی ای کالج اور لانگوئیل میں سی سی ایس کیو کالج شامل ہے۔ ان کالجوں نے ٹیوشن فیس کی ڈیڈ لائن کو آگے بڑھا دیا، جس سے طلبا کو اچانک بھاری مقدار میں ادائیگی کرنی پڑی-

    • Share this:
      لاکھوں ڈالر کی ٹیوشن فیس جمع کرنے کے بعد کینیڈا (Canada) کے تین کالجوں کے اچانک بند ہونے کے بعد ہزاروں ہندوستانی طلبا کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ اوٹاوا میں ہندوستانی ہائی کمیشن (Indian High Commission) نے اچانک تبدیلی سے متاثر ہونے والے ہندوستانی طلبا کے لیے ایک ایڈوائزری جاری کی ہے۔

      کینیڈا کے سی بی سی نیوز نے اطلاع دی ہے کہ ان تینوں کالجوں میں مونٹریال میں ایم کالج، شیربروک میں سی ڈی ای کالج اور لانگوئیل میں سی سی ایس کیو کالج شامل ہے۔ ان کالجوں نے ٹیوشن فیس کی ڈیڈ لائن کو آگے بڑھا دیا، جس سے طلبا کو اچانک بھاری مقدار میں ادائیگی کرنی پڑی، انہیں نوٹس جاری کیا۔

      تمام کالج ایک ہی بھرتی کرنے والی فرم، Rising Phoenix International (RPI) Inc. کے ذریعے چلائے جاتے ہیں، جس نے دیوالیہ ہونے کے لیے درخواست دائر کی ہے۔ سی بی سی نیوز کی رپورٹ کے مطابق یہ کیوبیک ایم کالج اور سی ڈی ای کالج سمیت متعدد پرائیویٹ کالجوں کی چھان بین شروع کرنے کے ایک سال بعد سامنے آیا ہے، جو ہندوستان میں طلبا کے لیے ’قابل اعتراض‘ بھرتی کے طریقوں کے لیے ہیں۔ اچانک بندش کی وجہ سے ہندوستان سے خوف زدہ ہزاروں طلبا کو مدد کے لئے اوٹاوا میں ہندوستانی ہائی کمیشن میں بھی کئی درخواستیں وصول ہوئی ہیں۔

      ہندوستان کے ہائی کمیشن نے جمعہ کو جاری کردہ ایک ایڈوائزری میں کہا کہ ہندوستان کے کئی طلبا نے ہائی کمیشن سے رابطہ کیا ہے جو تینوں اداروں میں داخلہ لے رہے تھے۔ ایڈوائزری میں کہا گیا ہے کہ اس صورت میں کہ انہیں اپنی فیس کی ادائیگی یا فیس کی منتقلی میں کوئی دشواری محسوس ہوتی ہے، وہ وزارت اعلیٰ تعلیم، حکومت کیوبیک میں شکایت درج کر سکتے ہیں۔ اس نے طلبا کو یہ بھی یقین دلایا کہ ایسے راستے موجود ہیں جن کے ذریعے وہ اپنی کھوئی ہوئی رقم واپس حاصل کرنے کی کوشش کر سکتے ہیں۔

      ایڈوائزری میں بتایا گیا کہ ہائی کمیشن طلبا کو مدد فراہم کرنے کے لیے کینیڈا کی وفاقی حکومت، کیوبیک کی صوبائی حکومت کے ساتھ ساتھ کینیڈا کی ہندوستانی کمیونٹی کے منتخب نمائندوں کے ساتھ قریبی رابطے میں ہے۔ طلبا کو یہ بھی بتایا گیا کہ وہ اوٹاوا میں ہائی کمیشن کے ایجوکیشن ونگ یا ٹورنٹو میں قونصلیٹ جنرل آف انڈیا سے رابطہ کرنے کے لیے آزاد ہیں اگر انہیں اس مسئلے کے بارے میں فوری مدد کی ضرورت ہے۔

      اس مہینے کے شروع میں طلبا کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: