உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ملک کی50فیصد آبادی بناکسی مراعات والےنجی اسکولوں میں حاصل کررہی ہے تعلیم : ماہر معاشیات عامراللہ خان

    حکومت تلنگانہ کے مشیر اے کے خان نے ان بجٹ اسکول کو سرکاری اسکولس کا حریف نہیں بلکہ ایک معاون بتایا جو سماج کے لیے ایک نعمت ہے

    حکومت تلنگانہ کے مشیر اے کے خان نے ان بجٹ اسکول کو سرکاری اسکولس کا حریف نہیں بلکہ ایک معاون بتایا جو سماج کے لیے ایک نعمت ہے

    AMEI کے سیمینار میں مولانا ابوالکلام آزاد کی تعلیمی خدمات پر خراج عقیدت پیش کیاگیاہے۔اس موقع پر خطاب کے دوران ماہر معاشیات عامر اللہ خان نے بجٹ اسکول کی تعلیمی کوششوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ یہ اسکولس ملک کی ایک بڑی آبادی کو اپنے محدود وسائل سے فیض پہنچا رہے ہیں۔انہوں نے سماجی ادارے اور سرکاری محکموں کو ان اسکولوں کی مدد کے لیے آگے آنے کا مشورہ دیاہے۔

    • Share this:
      قومی یوم تعلیم کے موقع پر آج ایسوسی ایشن آف مائنوریٹی ایجوکیشنل انسٹی ٹیوشنس (AMEI ) کی طرف سے منعقدہ سیمینار میں مولانا ابوالکلام آزاد کی تعلیمی خدمات پر روشنی ڈا لی گئی اور انہیں قومی یکجہتی اور ہندو مسلم اتحاد کا ایک بڑا علمبردار قرار دیاگیا ۔ اس موقع پر شرکا ء نےبجٹ اسکولز کی تعلیمی کاوشوں کو بھی سراہا اور اسے سماج کے لیے ایک نعمت بتایا جو وسائل کی کمی کے باوجود سماج کے ایک بڑے حصے کو تعلیم کی روشنی سے منور کر رہا ہے۔

      اس سمینار میں حکومت تلنگانہ کے مشیر اے کے خان نے ان بجٹ اسکول کو سرکاری اسکولس کا حریف نہیں بلکہ ایک معاون بتایا جو سماج کے لیے ایک نعمت ہے کیونکہ سرکار اپنے تمام وسائل کے استعمال کے باوجود آبادی کے تمام حصہ کو تعلیم فراہم نہیں کرپارہی اور اس خلا کو یہ بجٹ اسکولس اپنی کاوشوں سے پْر کررہے ہیں اے کے خان نے کہا کہ سرکاری اسکولز کو بجٹ اسکول کا حریف نہیں کہا جاسکتاہے انہوں نے کہا کہ سرکاری اسکول اپنی ذمہ داری پوری کررہے ہیں اور ان کی خدمات کو نظر اندازنہیں کیاجاناچاہیے۔انہوں نے ایسوسی ایشن آف مائنوریٹی ایجوکیشنل انسٹی ٹیوشنز(AMEI ) کے اراکین سے کہا کہ وہ جامع منصوبے کے ساتھ حکومت سے ملے تو حکومت ان کی باتوں پر غور کرنے کے ساتھ ساتھ عمل آوری کو یقینی بنانے کی کوشش کریگی۔

      حکومت تلنگانہ کے مشیر اے کے خان نے ان بجٹ اسکول کو سرکاری اسکولس کا حریف نہیں بلکہ ایک معاون بتایا جو سماج کے لیے ایک نعمت ہے
      حکومت تلنگانہ کے مشیر اے کے خان نے ان بجٹ اسکول کو سرکاری اسکولس کا حریف نہیں بلکہ ایک معاون بتایا جو سماج کے لیے ایک نعمت ہے


      حکومت تلنگانہ کے سیکریٹری محمد عبدالعظیم آئی اے ایس نے کورونا وباء کے بعد تعلیمی صورتحال اور حکومت کی طرف سے کی جانے والی کاوشوں کا ذکر کیا اور اعداد و شمار کی روشنی میں کہا کہ اس وبا کے سبب طلبا کی ایک بڑی تعداد نے اسکولوں کو خیر باد کہہ دیا ۔ انہوں نے بتایا کہ حکومت اس معاملے کو سنجیدگی سے لے رہی ہے اور طلبہ کو دوبارہ اسکولوں میں لانے کی کوششیں کر رہی ہے

      ماہر معاشیات عامر اللہ خان نے بجٹ اسکول کی تعلیمی کوششوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ یہ اسکولس ملک کی ایک بڑی آبادی کو اپنے محدود وسائل سے فیض پہنچا رہے ہیں۔انہوں نے سماجی ادارے اور سرکاری محکموں کو ان اسکولوں کی مدد کے لیے آگے آنے کا مشورہ دیاہے۔عامر اللہ خان نے کم فیس لیکر چلائے جانے والے بجٹ اسکولوں کو ٹیکس اور دیگر چیزوں میں رعایت دینے کی سفارش کی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی ۵۰فیصد آبادی بنا کسی مراعات والےان پرائیوٹ اسکولوں میں تعلیم حاصل کر رہے ہیں ۔انہوں نے اعداد و شمار کی روشنی میں بتایا کہ اس وجہ سے حکومت کو 1.74لاکھ کروڑ روپئے کی بچت کررہی ہے۔

      (AMEI ) کے صدر انور احمد نے اپنی کلیدی خطبہ میں مولانا ابوالکلام آزاد کی تعلیمی کاوشوں پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ مولانا نے ملک میں ہندو مسلم اتحاد پرزور ڈالتے ہوئے ملت کو جگانے کا کام بھی کیا ہے اور لوگوں سے کہا کہ اے لوگو اٹھو اور اپنے حق حاصل کرو۔ انوار احمد نے کہا کہ ملک کے اس پہلے وزیر تعلیم نے جو تاریخ رقم کی ہے اس کو آج ہمیں سمجھنا نا ضروری ہے ۔

      (AMEI ) کے جنرل سکریٹری ڈاکٹر ساجد علی نےپنی تقریر میں کہا کہ مولانا آزاد نے تعلیم کے لیے تین اہم کام کیے پہلا انہوں نے تعلیم کو سب کے لیے عام کیا ہے۔ تعلیم کو سیکولر کردار فراہم کیا اور تعلیم کو ڈیموکریٹک بنایا۔ بجٹ اسکولس کے مسائل پر روشنی ڈالتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ ا سکول ماہانہ 500 روپئے یا اس سے کم فیس میں بھی معیاری تعلیم فراہم کر رہے ہیں لیکن حکومت کی طرف سے ان اسکولوں کو موجودہ صورت حال میں کوئی راحت نہیں ملی انہوں نے کہا کہ ملک کی ۵۰ فیصد آبادی ان پرائیویٹ اسکولوں میں تعلیم حاصل کر رہے ہیں۔

      ماہر تعلیم سیدہ خدیجہ نے بجٹ اسکولس میں حکومت کے رول پر روشنی ڈالیں اوران ا سکولوں کی مسائل کو حل کرنے کی تجاویز پیش کیا۔ ساہیتہ ٹرسٹ کے میر محمود علی نے بھی اس موقع پر بجٹ اسکولز کو درپیش مسائل پر روشنی ڈالی۔ (AMEI ) کے اسسٹنٹ سیکریٹری ظفراللہ فہیم نے مہمان کا شکریہ ادا کیا۔اس سیمینار میں اسکولس کرسپنڈنٹ ، ماہر تعلیم کے ساتھ ساتھ اساتذہ کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی۔اس موقع پر (AMEI ) نے ہر سال قومی یوم تعلیم منانے کا اعلان بھی کیا ۔
      Published by:Mirzaghani Baig
      First published: