ہوم » نیوز » تعلیم و روزگار

ان لاک 5 میں کھلنے کے بعدسرکاری اسکولوں نے  پرائیویٹ اسکولوں کو پیچھے چھوڑا

حکومت کی جانب سے دی گئی سخت ہدایات اور شرائط کے ساتھ میرٹھ کے بھی کئی اسکول اور کالجوں میں نویں جماعت سے لیکر بارہویں جماعت تک کے بچوں کی آف لائن تعلیم کا سلسلہ شروع ہو چکا ہے لیکن دلچسپ بات یہ رہی کہ جہاں زیادہ تر پرائیویٹ اسکولوں نے بچوں کی کمی کے سبب دسھرے کے بعد کلاسز شروع کرنے کا ارادہ ظاہر کرتے ہوئے کلاسز کی شروعات نہیں کی ہے۔

  • Share this:
ان لاک 5 میں کھلنے کے بعدسرکاری اسکولوں نے  پرائیویٹ اسکولوں کو پیچھے چھوڑا
ان لاک 5 میں کھلنے کے بعدسرکاری اسکولوں نے  پرائیویٹ اسکولوں کو پیچھے چھوڑا

حکومت کی جانب سے 19 اکتوبر سے اسکولوں میں نویں جماعت سے لیکر 12 ویں جماعت تک کی آف لائن کلاس شروع کرنے کی اجازت ملنے کے بعد اُتر پردیش میں بھی باضابطہ طور پر اسکول اور مدارس میں آف لائن کلاسز کی شروعات ہو گئی ہیں لیکن پرائیویٹ اور سرکاری اسکولوں میں طالب علموں کی تعداد میں کافی فرق نظر آ رہا ہے ، کچھ پرائیویٹ اسکولوں کے علاوہ ابھی زیادہ تر پرائیویٹ اسکول طالب علموں کی کمی کے سبب ابھی آف لائن کلاسز کی شروعات کرنے سے قاصر ہیں اور جن پرائیویٹ اسکولوں میں کلاسز شروع ہوئی ہیں وہاں بھی بچوں کی تعداد نا کے برابر ہے جبکہ اس کے برعکس سرکاری اسکولوں میں طالب علموں کی خاطر خواہ تعداد نظر آ رہی ہے۔

حکومت کی جانب سے دی گئی سخت ہدایات اور شرائط کے ساتھ میرٹھ کے بھی کئی اسکول اور کالجوں میں نویں جماعت سے لیکر بارہویں جماعت تک کے بچوں کی آف لائن تعلیم کا سلسلہ شروع ہو چکا ہے لیکن دلچسپ بات یہ رہی کہ جہاں زیادہ تر پرائیویٹ اسکولوں نے بچوں کی کمی کے سبب دسھرے کے بعد کلاسز شروع کرنے کا ارادہ ظاہر کرتے ہوئے کلاسز کی شروعات نہیں کی ہے۔ وہیں سرکاری اسکولوں میں بچوں کی خاطرخواہ تعداد نظر آئی۔


میرٹھ کے اسماعیل گرلز انٹر کالج ، جی آئی سی ، ایس ڈی صدر اور رام سہائے جیسے سرکاری انٹر کالجوں میں بڑی تعداد میں طالب علم کلاس کرنے پہنچ رہے ہیں۔ ان سرکاری اسکولوں کے ذمہ داران کا کہنا ہے کہ آن لائن تعلیم کی دشواریوں سے پریشان سرکاری اسکول کے ان بچوں کو آف لائن کلاس شروع ہونے کا انتظار تھا اور اب جبکہ یہ انتظار ختم ہوا ہے تو بچے آف لائن تعلیم سے فائدہ حاصل کر رہے ہیں۔ احتیاطی اقدامات کے ساتھ ساتھ کافی دنوں بعد اسکول کھلنے سے طلباء اور طالبات کے چہروں پر جہاں خوشی نظر آئی۔ وہیں پرائیویٹ اسکولوں میں طالب علموں کی تعداد نا کے برابر رہی ۔

ORANGE CAP:

پرائیویٹ اسکول پرنسپل کے مطابق اجازت نامے کی شرط اور انفیکشن کے خوف کی وجہ سے زیادہ تر والدین ابھی اپنے بچوں کو اسکول بھیجنے کو راضی نہیں ہیں۔ پرائیویٹ اسکولوں میں تعلیم حاصل کرنے والے بچوں کے والدین جہاں انفیکشن کے خطرے کے خوف کی وجہ سے ابھی بچوں کو اسکول بھیجنے سے گریز کر رہے ہیں، وہیں سرکاری اسکولوں میں پڑھنے والے زیادہ تر بچوں کے لیے اسکول کلاسز ہی تعلیم کا واحد سہارا ہے۔ایسے میں اسکول کھولتے ہی ان بچوں کے والدین نے نہ صرف بچوں کو اسکول جانے کی اجازت دی ہے بلکہ آنے والے دنوں میں مزید رعایت کی بھی اُمید ظاہر کی ہے۔
Published by: sana Naeem
First published: Oct 23, 2020 07:02 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading