உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بھارت ہیوی الیکٹریکلز لمیٹڈ میں 10 نوجوان پیشہ ورانہ عہدوں پر بھرتیاں، دستاویزات کے بارے میں جانیے مکمل تفصیلات

    بی ایچ ای ایل نے نوکری کے نوٹس میں بتایا ہے کہ معروف اداروں سے انجینئرنگ کے فارغ التحصیل افراد کو ترجیح دی جائے گی

    بی ایچ ای ایل نے نوکری کے نوٹس میں بتایا ہے کہ معروف اداروں سے انجینئرنگ کے فارغ التحصیل افراد کو ترجیح دی جائے گی

    نوجوان پیشہ ور افراد کو جن شعبوں میں بھرتی کیا جائے گا، ان میں ہائیڈروجن اکنامکس، ایڈیٹیو مینوفیکچرنگ، اپ اسٹریم سولر ویلیو چین، انرجی اسٹوریج، کوئلہ سے میتھانول اور کاربن کیپچر شامل ہیں۔

    • Share this:
      بھارت ہیوی الیکٹریکلز لمیٹڈ (BHEL) نے نوجوان پیشہ ور افراد کی 10 آسامیاں بھرنے کے لیے 30 نومبر 2021 تک درخواستیں طلب کی ہیں۔ درخواست فارم BHEL کی سرکاری ویب سائٹ پر دستیاب ہیں۔

      نوجوان پیشہ ور افراد کو جن شعبوں میں بھرتی کیا جائے گا، ان میں ہائیڈروجن اکنامکس، ایڈیٹیو مینوفیکچرنگ، اپ اسٹریم سولر ویلیو چین، انرجی اسٹوریج، کوئلہ سے میتھانول اور کاربن کیپچر شامل ہیں۔

      علامتی تصویر
      علامتی تصویر


      اس نے مزید کہا گیا کہ ’’امیدوار کی عمر 30 سال سے زیادہ نہ ہو، پوسٹ گریجویٹ ڈگری یا 2 سالہ پوسٹ گریجویٹ ڈپلومہ ان مینجمنٹ کے حامل افراد درخواست دینے کے اہل ہیں‘‘۔

      بی ایچ ای ایل نے نوکری کے نوٹس میں بتایا ہے کہ معروف اداروں سے انجینئرنگ کے فارغ التحصیل افراد کو ترجیح دی جائے گی۔ پوسٹ گریجویٹ ڈگری/ڈپلومہ، قومی ادارہ جاتی درجہ بندی کے فریم ورک (NIRF) کے تحت ایم ایچ آر ڈی کی طرف سے جاری کردہ درجہ بندی کے مطابق کسی بھی آئی آئی ایم یا سرفہرست 50 مینجمنٹ انسٹی ٹیوٹ سے حاصل کیا جانا چاہیے، جس میں کم از کم 70 فیصد مجموعی یا 10 میں سے 7.0 فیصد ہوگا۔

      مذکورہ پوسٹوں کے سلسلے میں براہ راست لنک یہاں ملاحظہ کیجیے۔

      پے اسکیل پر BHEL نے امیدواروں کو مطلع کیا ہے کہ ینگ پروفیشنلز کو روپے کی مجموعی فیس ادا کی جائے گی۔ جس کے لیے 80,000 فی مہینہ ہوگا۔ ماہانہ یکجا شدہ فیس کے علاوہ وہ فیملی (یعنی خود اور شریک حیات) کی میڈی کلیم پالیسی کے لیے 3500 جی ایس ٹی ​​تک کے سالانہ پریمیم کی واپسی کے اہل ہوں گے۔ اسائنمنٹ کی کامیابی سے تکمیل پر نوجوان پیشہ ور افراد کو یکمشت رقم دی جائے گی۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: