உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    انڈسٹری بن گئی ہے تعلیم .... مہنگی پڑھائی پر Supreme Court کا تلخ تبصرہ، جانئے پوری تفصیل

     انڈسٹری بن گئی ہے تعلیم .... مہنگی پڑھائی پر Supreme Court کا تلخ تبصرہ، جانئے پوری تفصیل

    انڈسٹری بن گئی ہے تعلیم .... مہنگی پڑھائی پر Supreme Court کا تلخ تبصرہ، جانئے پوری تفصیل

    Supreme Court on Education: جسٹس بی آر گوائی اور جسٹس ہما کوہلی کی بینچ نے کہا کہ ملک میں تعلیمی نظام ایک انڈسٹری بن چکا ہے ، جنہیں بڑے کاروباری گھرانے چلا رہے ہیں۔

    • Share this:
      نئی دہلی : سپریم کورٹ نے ملک کے تعلیمی نظام کو لے کر تلخ تبصرہ کیا ہے ۔ منگل کو ایک معاملہ میں جسٹس بی آر گوائی اور جسٹس ہما کوہلی کی بینچ نے کہا کہ ملک میں تعلیمی نظام ایک انڈسٹری بن چکا ہے ، جنہیں بڑے کاروباری گھرانے چلا رہے ہیں۔ میڈیکل کالج کی فیس اتنی بڑھ چکی ہے کہ ڈاکٹری کی پڑھائی کرنے کے خواہش مند طلبہ کو یوکرین جیسے دور دراز کے ممالک تک جانا پڑ رہا ہے ۔ سپریم کورٹ کا یہ تلخ تبصرہ فارمیسی کاونسل آف انڈیا کی اس عرضی پر آیا ، جس میں اس نے دہلی اور کرناٹک ہائی کورٹ کے فیصلوں کو چیلنج کیا ہے ۔ کاونسل کے ذریعہ نئے فارمیسی کالج کھولنے پر 2020۔21 کے سیشن سے اگلے پانچ سال تک کے لئے روک لگائی گئی تھی ، جسے ہائی کورٹ نے خارج کردیا تھا ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : ای ڈی کی بڑی کارروائی، سونیا اور راہل گاندھی کو بھیجا سمن


      نیوز ایجنسی پی ٹی آئی کے مطابق پی سی آئی کے حکم کے خلاف 88 عرضیاں ہائی کورٹ میں داخل کی گئی تھیں ۔ یہ عرضیاں نئے فارمیسی کالج کھولنے کے خواہشمند لوگوں کی طرف سے دائر کی گئی تھیں، کیونکہ نئے کالج کھولنے کیلئے پی سی آئی سے منظوری لینا ضروری ہوتا ہے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : Azam Khan کے جیل سے چھوٹنے کے بعد پہلی مرتبہ اکھلیش یادو نے کی ملاقات، جانئے کیا ہوئی بات


      پی سی آئی کے اس حکم میں شمال مشرق اور ایسی ریاستوں کو چھوٹ دی گئی تھی ، جہاں پر ڈی فارما اور بی فارما کے کالجز کی تعداد 50 سے کم ہے ۔ پی سی آئی کے حکم پر روک لگاتے ہوئے ہائی کورٹ نے کہا تھا کہ کاونسل نے اپنے دائرہ اختیار سے آگے جاکر یہ حکم پاس کیا ہے ، ایسے میں اسے جاری نہیں رکھا جاسکتا ۔

      ٹی او آئی کی ایک رپورٹ کے مطابق ہائی کورٹ کے حکم کے خلاف اپیل پر سپریم کورٹ میں سماعت کے دوران کاونسل کی طرف سے سالیسٹر جنرل تشار مہتا نے کہا کہ یہ روک اس لئے لگائی گئی ، تاکہ فارمیسی کالجز کے سیلاب پر لگام کسی جاسکے، جنہیں پیسہ کمانے کا ذریعہ بنایا دیا گیا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: