ہوم » نیوز » تعلیم و روزگار

Bihar Board 10th Result 2021:بہاربورڈ 6اپریل سے پہلے جاری کرسکتاہے دسویں جماعت کےنتائج

اطلاع ہے کہ جمعرات کو دوپہر کے بعد ، بورڈ کی جانب سے ٹاپرز کو فون بھی کیے جارہے ہیں۔ ٹوپرس کے Physical verificationکا عمل 2 اپریل سے بورڈ آفس میں شروع ہوگا۔جس کے بعد عملی طورپر درج کیے گئے کے نمبروں کو کمپیوٹرائزڈ کیا جائے گا۔

  • Share this:
Bihar Board 10th Result 2021:بہاربورڈ 6اپریل سے پہلے جاری کرسکتاہے دسویں جماعت کےنتائج
بورڈ ہر ممکن کوشش کر رہا ہے کہ میٹرک کے نتائج جلد ازجلد جاری کرکے ایک نیا ریکارڈ بنایاجائے۔

نئی دہلی: بہار اسکول امتحان بورڈ(Bihar School Examination Board) میں ، ملازمین سے لے کر افسروں تک ، جیسے ہی ہولی کی چھٹی ختم ہوئی ہے سب میٹرک کے نتائج(Bihar Board 10th Result 2021) کے اعلان کے لیے تیاریاں شروع کردی ہے ۔ عالم یہ ہے کہ بورڈ میں ان دنوں رات، دن کام مسلسل چل رہا ہے۔ 2 اپریل سے ، ماہرین کی ٹیم پہلے ہی ٹاپرز کی تصدیق کے سلسلے میں تشکیل دی گئی ہے۔


اطلاع ہے کہ جمعرات کو دوپہر کے بعد ، بورڈ کی جانب سے ٹاپرز کو فون بھی کیے جارہے ہیں۔ ٹوپرس کے Physical verificationکا عمل 2 اپریل سے بورڈ آفس میں شروع ہوگا۔جس کے بعد عملی طورپر درج کیے گئے کے نمبروں کو کمپیوٹرائزڈ کیا جائے گا۔ جس کے ساتھ ہی کل سے بورڈ میں ہلچل تیز ہوگئی ہے۔ یادرہے کہ میٹرک کی کاپیاں کی جانچ پڑتال 7 روز قبل مکمل ہوئی تھی ، بورڈ نے تمام اضلاع سے عملی نمبر بھیجنے کی ہدایت جاری کی تھی۔جس کے بعد تمام اضلاع کے مرکزی انسپکٹرز نے بھی بورڈ کو عملی نشانات بھیج دیئے ہیں۔


ٹاپر کی لکھی ہوئی تحریر کومضمون کے مطابق ٹاپ ویو انٹر ویو ایکسپرٹ سے تقابل کیاجائے گا اور اس میں ہینڈ رائٹنگ کی میچنگ کرکے بھی جانچ کی جائیگی۔ اسی کے ساتھ ہی ، کل تک متعلقہ اضلاع کے خصوصی افسروں کے ذریعہ ٹوپرز کی کاپیاں بورڈ میں لائی جارہی ہے۔ خبر یہ ہے کہ ریاست میں پہلی سے 20 ویں پوزیشن حاصل کرنے والے ٹاپرز کو تصدیق کے لئے بلایا جائے گا۔ بورڈ ہر ممکن کوشش کر رہا ہے کہ میٹرک کے نتائج جلد ازجلد جاری کرکے ایک نیا ریکارڈ بنایاجائے۔


یہی وجہ ہے کہ پہلی بار ، بہار بورڈ نے نہ صرف سب سے پہلے امتحان منعقد کروائے بلکہ سب سے پہلے نتائج جاری کرنے کے بھی تیاریوں میں مصروف ہے۔ بتادیں کہ میٹرک کا امتحان بہار کے 38 اضلاع کے 1525 امتحانی مراکز میں 15 سے 24 فروری تک منعقد کیاگیاتھا۔ جس میں 16 لاکھ 84 ہزار سے زیادہ یعنی 8،37،803 لڑکیاں اور 8،46،663 لڑکوں نے حصہ لیا تھا۔
Published by: Mirzaghani Baig
First published: Apr 01, 2021 01:43 PM IST