உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Banks Jobs: سرکاری اورپبلک سیکٹر بینکوں میں ملازمتیں، کامن ایلجبلٹی ٹیسٹ پھرسےتاخیرکاشکار؟

    ٹیسٹ پہلے اس سال مارچ تک منعقد ہونا تھا۔

    ٹیسٹ پہلے اس سال مارچ تک منعقد ہونا تھا۔

    نیوز 18 ڈاٹ کام کو معلوم ہوا ہے کہ ہندوستان کا پہلا کامن ایلجبلٹی ٹیسٹ (CET) ملک میں عالمی وبا کورونا وائرس (COVID-19) کے بڑھتے ہوئے کیسوں کے پس منظر میں ایک بار پھر تاخیر کا شکار ہونے کا امکان ہے۔

    • Share this:
      نیوز 18 ڈاٹ کام کو معلوم ہوا ہے کہ ہندوستان کا پہلا کامن ایلجبلٹی ٹیسٹ (CET) ملک میں عالمی وبا کورونا وائرس (COVID-19) کے بڑھتے ہوئے کیسوں کے پس منظر میں ایک بار پھر تاخیر کا شکار ہونے کا امکان ہے۔ اس امتحان کا مقصد مرکزی حکومت اور پبلک سیکٹر کے بینکوں میں ملازمتوں کے لیے امیدواروں کی جانچ کرنا ہوتا ہے۔

      مرکزی حکومت اور پبلک سیکٹر بینکوں میں گروپ بی (نان گزیٹیڈ)، گروپ سی (نان ٹیکنیکل) آسامیوں کے لیے امیدواروں کے انتخاب کے ضمن میں اسکریننگ ٹیسٹ پہلے اس سال مارچ تک منعقد ہونا تھا۔ محکمہ پرسونل اینڈ ٹریننگ (DoPT) کے ایک سینئر اہلکار نے نیوز 18 ڈاٹ کام کو بتایا کہ حکومت کی طرف سے امتحان کے انعقاد کی فزیبلٹی کا جائزہ لینے اور اگلی کارروائی اور اگلے ممکنہ ٹائم فریم کے بارے میں فیصلہ کرنے کے لیے ایک مکمل جائزہ لیا جائے گا۔

      ایک اہلکار نے کہا کہ موجودہ صورتحال کو دیکھتے ہوئے مارچ تک اس کے انعقاد کا امکان نہیں ہے۔ یہ دوسری بار ہے کہ سی ای ٹی (نریندر مودی حکومت کا ایک پرجوش منصوبہ ) کورونا کی وجہ سے تاخیر کا شکار ہوا ہے۔ یہ سب سے پہلے پچھلے سال ستمبر اکتوبر میں منعقد ہونا تھا۔

      سال 2020 میں حکومت نے تقریباً 4 کروڑ امیدواروں کے لیے کے لیے ابتدائی امتحان کے انعقاد کے مقصد کے لیے ایک مرکزی بھرتی کرنے والی ایجنسی قومی بھرتی ایجنسی قائم کی۔ ہر سال تقریباً 1.25 لاکھ مرکزی حکومت کی ملازمتوں کے لیے درخواست موصول ہوتی ہیں۔

      این آر اے سیٹ (NRA CET) کے ذریعے سرکاری ملازمتوں کے لیے امیدواروں کی ابتدائی اسکریننگ اور شارٹ لسٹنگ کرے گا جو فی الحال اسٹاف سلیکشن کمیشن (SSC) اور انسٹی ٹیوٹ آف بینکنگ پرسنل سلیکشن (IBPS) اور ریلوے ریکروٹمنٹ بورڈ (RRB) کے پاس ہیں۔

      تاہم یہ ایجنسیاں سیٹ میں حاصل کردہ اسکور کی بنیاد پر شارٹ لسٹ کیے گئے امیدواروں کے حتمی انتخاب کے لیے اہم کام جاری رکھیں گی۔ مذکورہ اہلکار نے بتایا کہ امتحان کے دائرہ کار کو آئندہ برسوں میں دیگر سرکاری ملازمتوں کا احاطہ کرنے کے لیے بڑھایا جائے گا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: