உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    DA Hike: سرکاری ملازمین کیلئے ڈی اے میں بہت جلد ہوگااضافہ، کیا DA میں اضافےکی شرح میں تبدیلی آئے گی؟

    اب ایسی خبریں آئی ہیں کہ مرکز دوبارہ ڈی اے میں 3 فیصد اضافہ کر سکتا ہے۔ اس تازہ ترین اضافے کے ساتھ ڈی اے بنیادی تنخواہ کا 34 فیصد ہو جائے گا۔ اس فیصلے سے 50 لاکھ سرکاری ملازمین اور 65 لاکھ پنشنرز کو فائدہ ہوگا۔

    اب ایسی خبریں آئی ہیں کہ مرکز دوبارہ ڈی اے میں 3 فیصد اضافہ کر سکتا ہے۔ اس تازہ ترین اضافے کے ساتھ ڈی اے بنیادی تنخواہ کا 34 فیصد ہو جائے گا۔ اس فیصلے سے 50 لاکھ سرکاری ملازمین اور 65 لاکھ پنشنرز کو فائدہ ہوگا۔

    اب ایسی خبریں آئی ہیں کہ مرکز دوبارہ ڈی اے میں 3 فیصد اضافہ کر سکتا ہے۔ اس تازہ ترین اضافے کے ساتھ ڈی اے بنیادی تنخواہ کا 34 فیصد ہو جائے گا۔ اس فیصلے سے 50 لاکھ سرکاری ملازمین اور 65 لاکھ پنشنرز کو فائدہ ہوگا۔

    • Share this:
      سرکاری ملازمین کے لیے 7ویں پے کمیشن کے ڈی اے میں اضافہ (7th Pay Commission DA Hike For Govt Employees): مرکزی حکومت نے حال ہی میں پارلیمنٹ میں کہا ہے کہ 7ویں پے کمیشن (7th Pay Commission) کے تحت مرکزی حکومت کے ملازمین کے لیے مہنگائی الاؤنس (Dearness Allowance) یا ڈی اے کو 3 فیصد سے زیادہ بڑھانے کی ضرورت درست نہیں ہے کیونکہ یہ اضافہ اس وقت کیا گیا ہے جب مہنگائی کی شرح کے برابر ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی (Narendra Modi) کی کابینہ کی بدھ کو سرکاری ملازمین کے ڈی اے میں اضافے کے معاملے پر ملاقات متوقع تھی، لیکن اس فیصلے پر کوئی سرکاری اپ ڈیٹ نہیں تھا۔ توقع ہے کہ حکومت ہولی سے پہلے ڈی اے میں اضافے کا فیصلہ لے گی۔

      منگل کو بجٹ سیشن کے دوسرے حصے کے دوران مرکزی حکومت نے کئی سوالات کے جوابات بھیجے کہ مرکزی حکومت کے ملازمین کے مہنگائی الاؤنس میں اضافے کو ایسے وقت میں کیوں مستحکم رکھا گیا ہے جب مہنگائی کی شرح بلند ہو گئی ہے۔ یہ سوالات بھی پوچھے گئے کہ کیا حکومت موجودہ مہنگائی کی شرح کے مطابق ڈی اے/ڈی آر بڑھانے پر غور کرے گی۔

      مرکزی وزیر مملکت برائے خزانہ پنکج چودھری نے راجیہ سبھا میں ایک تحریری جواب میں کہا کہ مرکزی حکومت کے ملازمین اور پنشنرز کو بالترتیب مہنگائی الاؤنس (DA) اور مہنگائی ریلیف (DR) کا حساب مہنگائی کی شرح کی بنیاد پر کیا جاتا ہے جو کہ لیبر بیورو کی طرف سے جاری کردہ آل انڈیا کنزیومر پرائس انڈیکس فار انڈسٹریل ورکرز (AICPI0IW) کے مطابق کیا جاتا ہے۔

      ایک سوال کے جواب میں کہ کیا حکومت قیمتوں کے مطابق DA/DR دینے پر غور کرے گی اور DA/DR کو مستحکم 3 ​​فیصد پر برقرار نہیں رکھے گی؟ اس پر وزیر نے کہا کہ ان کے مذکورہ بالا خدشہ کے پیش نظر سوال ہی پیدا نہیں ہوتا ہے۔ سال 2021 کی اکتوبر-دسمبر سہ ماہی کے لیے اوسط خوردہ افراط زر 5.01 فیصد تھی، جب کہ اس سال فروری کے مہینے میں یہ 6.07 فیصد تک بڑھ گئی۔

      مزید پڑھیں: Jobs in Telangana: تلنگانہ میں 80 ہزار نئی نوکریوں کا اعلان، لیکن پہلے سے وعدہ شدہ اردو کی 558 ملازمتیں ہنوز خالی!

      ڈی اے میں اضافہ، اس وقت کیا توقع کی جائے؟

      اب ایسی خبریں آئی ہیں کہ مرکز دوبارہ ڈی اے میں 3 فیصد اضافہ کر سکتا ہے۔ اس تازہ ترین اضافے کے ساتھ ڈی اے بنیادی تنخواہ کا 34 فیصد ہو جائے گا۔ اس فیصلے سے 50 لاکھ سرکاری ملازمین اور 65 لاکھ پنشنرز کو فائدہ ہوگا۔

      ڈی اے کیا ہے؟

      مہنگائی الاؤنس سرکاری ملازمین اور پنشنرز کی تنخواہ کا ایک جزو ہے، جس کا مقصد مہنگائی کے اثرات کو کم کرنا ہے۔ مہنگائی کی بڑھتی ہوئی شرح سے نمٹنے کے لیے سرکاری ملازمین کی موثر تنخواہوں میں وقتاً فوقتاً نظر ثانی کی جاتی ہے۔ ڈی اے میں عام طور پر ہر سال دو بار جنوری اور جولائی میں نظر ثانی کی جاتی ہے۔ تاہم اس سال کے لیے ابھی تک ڈی اے میں اضافے کا کوئی اعلان نہیں کیا گیا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں: تلنگانہ : اردو میڈیم اساتذہ کی خالی اسامیوں پرجلد ہوسکتی ہے بھرتی، آئندہ 2دنوں میں ہوگا اجلاس

      جولائی 2021 میں مرکز نے مہنگائی الاؤنس اور مہنگائی میں ریلیف کو 17 فیصد سے بڑھا کر 28 فیصد کر دیا۔ مرکزی حکومت نے کورونا وائرس وبائی امراض کی وجہ سے ڈی اے کو تقریبا ڈیڑھ سال تک روک دیا۔ اکتوبر 2021 میں مزید 3 فیصد اضافے کے ساتھ مرکزی حکومت کے ملازمین کا ڈی اے بڑھ کر 31 فیصد ہو گیا۔

      مرکزی حکومت کے پنشنرز کے لیے مہنگائی کی ریلیف کو بھی 31 فیصد تک بڑھا دیا گیا، جو 1,2021 جولائی سے نافذ ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: