ہوم » نیوز » تعلیم و روزگار

نجی اسکولوں کو ٹیوشن فیس کے علاوہ کوئی اور فیس مانگے کا حق نہیں: دہلی حکومت

منیش سسودیا نے کہا اس وقت ملک بحران سے دوچار ہے۔ اس لئے سبھی کو ایک دوسرے کا خیال رکھنا ہے۔ کسی بھی طالب علم کو آن لائن کلاس سے اس لیے محروم نہیں کیا جائے گا کہ وہ فیس جمع نہیں کرا سکا

  • Share this:

دہلی:نجی اسکولوں کی من مانی پر بالآخر دہلی حکومت نے لگام لگاتے ہوئے نیا حکمنامہ جاری کر دیا ہے ۔دہلی کے نائب وزیر اعلیٰ منیش سسودیا نے ڈیجیٹل پریس کانفرنس کرکے بتایا دہلی حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ کوئی بھی اسکول فیس میں اضافہ نہیں کرے گا اور آن لائن کلاس سے کسی بھی طالب علم کو اسکول فیس نہ دے پانےکے باعث محروم نہیں کیا جائے گا۔ منیش سسودیا نے بتایا دہلی ایجوکیشن ایکٹ اور ڈیزاسٹر ایکٹ کے تحت دہلی حکومت نے نو ٹیفکیشن جاری کیا ہے ۔کوئی بھی اسکول چاہے وہ سرکاری زمین پر بنایا گیا ہوں یا پھر وہ نجی زمین پر بنایا گیا ہو کسی بھی اسکول کو یہ حق حاصل نہیں ہوگا کہ وہ ٹیوشن فیس کے علاوہ کوئی دوسرا چارج والدین سے مانگے ۔




ٹیوشن فیس بھی تین مہینے کی نہیں بلکہ ایک مہینے کی اسکول مانگ سکتے ہیں۔منیش سسودیا نے کہا جو بھی اسکول چلائے جاتے ہیں وہ تمام تنظیموں اور ٹرسٹ کے ذریعے سے چلائے جاتے ہیں ۔ایجوکیشن کا شعبہ غیر منفعت بخش سیکٹر میں آتا ہے ۔ اس لیے جب ٹرانسپورٹیشن کا استعمال نہیں ہو رہا ہے تو پھر ٹرانسپورٹ کی فیس نہیں لی جائے گی اسی کے ساتھ ساتھ دوسرے تمام چارجز بھی نہیں لئے جائیں گے ۔منیش سسودیا نے کہا اس وقت ملک بحران سے دوچار ہے۔ اس لئے سبھی کو ایک دوسرے کا خیال رکھنا ہے۔ کسی بھی طالب علم کو آن لائن کلاس سے اس لیے محروم نہیں کیا جائے گا کہ وہ فیس جمع نہیں کرا سکا ، اسی کے ساتھ ساتھ تمام اسکول چلانے والے اداروں کو اپنے اسٹاف کو تنخواہ اور سیلری دینا ضروری ہے۔ یہ تنخواہ وقت پر دی جانی چاہیے کوئی بھی اسکول اس طرح کا کوئی بہانہ نہیں کرے گا کہ اس کے پاس پیسے نہیں ہے اگر پیسے کی کمی ہے تو وہ اپنی اورگنائزیشن سے پیسے لے کر تنخواہ دے گا۔


نائب وزیراعلی ٰنے کہا اگر کوئی اسکول فیس بڑھاتا ہے یا پھر من مانی کرتا ہے اور جو حکم نامہ جاری کیا گیا ہے۔ اس کی خلاف ورزی کرتا ہے تو اس کے خلاف دہلی ایجوکیشن ایکٹ اور ڈیزاسٹر ایکٹ کے تحت کارروائی کی جائے گی ۔
First published: Apr 17, 2020 05:52 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading