உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہلی کی ایک ٹیچر نےکردکھایا کمال،ملا دہلی کے بہترین استاد کاایوارڈ، آخرکیوں، جانئے تفصیلات

    روہنی سیکٹر -8 میں سرودیا ودیالیہ کی وائس پرنسپل بھارتی کالرا

    روہنی سیکٹر -8 میں سرودیا ودیالیہ کی وائس پرنسپل بھارتی کالرا

    روہنی سیکٹر -8 میں سرودیا ودیالیہ کی وائس پرنسپل بھارتی کالرا Bharti Kalra نے اپنے خاندان اور دوستوں کے ذریعے 321 اسمارٹ فونز اکٹھے کیے جس سے طلبا آن لائن کلاسوں میں شریک ہو سکے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      دہلی حکومت (Delhi Government) نے اتوار کو ایک سرکاری اسکول کے نائب پرنسپل کو بیسٹ ٹیچر کا ایوارڈ دیا۔اس موقع کوروانا بحران کے دوران خاتون ٹیچر کی خدمات کا اعتراف کیاگیاہے۔ اس مثالی استاد کی غیرمعمولی خدمات کی وجہ سے غریب طلبا کو آن لائن تعلیم حاصل کرنے میں مدد ملی۔

      روہنی سیکٹر -8 میں سرودیا ودیالیہ کی وائس پرنسپل بھارتی کالرا Bharti Kalra نے اپنے خاندان اور دوستوں کے ذریعے 321 اسمارٹ فونز اکٹھے کیے جس سے طلبا آن لائن کلاسوں میں شریک ہو سکے۔


      کالرا نے اے این آئی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ وہ ایوارڈ کے لیے نامزد ہونے پر حیران ہیں کیونکہ انہوں نے اس کے لیے درخواست نہیں دی تھی۔ انہوں نے کہا کہ ’’میں یوم اساتذہ کو یہ ایوارڈ حاصل کرنے کے لیے بہت ہی عاجز ہوں۔ میں نے جو کچھ بھی کیا، اسے اپنے فرض کے طور پر کیا۔ لیکن ایوارڈ ملنا بالکل مختلف احساس ہے‘‘۔

      کورونا وبا کے دوران اس اقدام کے بارے میں پوچھے جانے پر انھوں نے بتایا کہ ان کے اسکول کے بہت سے طلبا کو آن لائن کلاس کی سہولیت دستیاب نہیں تھی۔ کیونکہ ان کے پاس لیپ ٹاپ ، ٹیبلٹ یا اسمارٹ فون نہیں تھے۔

      انہوں نے کہا کہ ’’میں نے اس وقت بہت بے بس محسوس کیا۔ پھر ہمارے ایک طالب علم نے کوویڈ کی وجہ سے اپنے والد کو کھو دیا۔ میں اس سے ممکنہ طور پر اس وقت اسمارٹ فون خریدنے کے لیے نہیں کہہ سکتا تھی‘‘۔

      کسی نہ کسی طرح میں نے اسے خود ایک اسمارٹ فون دیا۔ واٹس ایپ پر اور انہیں ان مسائل کے بارے میں بتایا جو ان بچوں کو وبائی امراض کے دوران درپیش تھے۔

      کالرا یاد کرتی ہیں کہ شروع میں لوگوں کو قائل کرنا ایک مشکل کام تھا لیکن آہستہ آہستہ بہت سے لوگوں نے ان کی کوشش میں ان کی مدد کی۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ مشکل سے تین یا چار فون سے شروع ہوا، لیکن ہم کوشش کرتے رہے۔ مجھے توقع نہیں تھی کہ یہ اتنی بڑی تحریک بن جائے گی‘‘۔

      وائس پرنسپل نے بتایا کہ اسکول ان بچوں کو ورک شیٹ بھی فراہم کرتا ہے جو آن لائن کلاسیں نہیں لے سکتے تھے اور مسلسل ان کی حوصلہ افزائی کرتے رہے کہ وہ وبا کے دوران پڑھائی جاری رکھیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: