உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    یوپی میں17لاکھ ناخواندہ کو کیا جائے گا خواندہ،بنا معاوضہ کام کریں گے رضاکار

    ۔علامتی تصویر۔

    ۔علامتی تصویر۔

    International Literacy Day: اس اسکیم کے تحت ناخواندہ افراد کی شناخت کونسل اسکولوں کے اساتذہ کے ذریعے کی جارہی ہے۔ یہ اساتذہ اپنے اسکول سے ملحقہ علاقے میں گھر گھر رابطہ کریں گے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Hyderabad | New Delhi | Lucknow
    • Share this:
      International Literacy Day: ریاست میں سیشن 2022-23 میں 17 لاکھ ناخواندہ لوگوں کو خواندہ بنایا جائے گا۔ نو بھارت ساکشرتا ابھیان کے تحت تمام اضلاع کے بنیادی تعلیمی افسروں اور ڈائٹ پرنسپلوں کو ناخواندہ افراد کی نشاندہی کرنے کی ہدایات دی گئی ہیں۔ یہی نہیں، شناخت شدہ ناخواندہ افراد کو تعلیم دینے کے لیے گاؤں اور بستی کے حساب سے رضاکار اساتذہ کی فہرست بھی تیار کی جا رہی ہے۔

      اس اسکیم کے تحت ناخواندہ افراد کی شناخت کونسل اسکولوں کے اساتذہ کے ذریعے کی جارہی ہے۔ یہ اساتذہ اپنے اسکول سے ملحقہ علاقے میں گھر گھر رابطہ کریں گے۔ اس دوران اگر کسی گھر میں بزرگ بھی ناخواندہ ہیں تو ان کا سراغ لگایا جائے گا۔ اس کے بعد انہیں خواندہ بنانے کی مشق شروع ہو جائے گی۔ ایک رضاکار استاد کو دس ناخواندہ افراد کو خواندہ بنانے کی ذمہ داری سونپی جائے گی۔

      اس سلسلے میں ڈائرکٹر لٹریسی اینڈ آلٹرنیٹو ایجوکیشن/ سکریٹری گنیش کمار نے اضلاع کو تفصیلی ہدایات جاری کی ہیں۔ یہی نہیں ناخواندہ افراد کی نشاندہی کے لیے ضلع وار ہدف بھی مقرر کیا گیا ہے۔ اس بجٹ میں 60 فیصد مرکز اور 40 فیصد ریاست کے حصے میں آئے گی۔ مارکنگ کا کام 15 ستمبر تک مکمل کر لیا جائے گا۔ اس کے بعد مستقبل کا لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔

      یہ بھی پڑھیں:

      نیٹ یو جی 2022 کے نتائج جاری، میرٹ لسٹ کیسے کریں چیک؟ کون ہیں ٹاپ رینک ہولڈرز؟

      یہ بھی پڑھیں:
      NCERTکاانکشاف:امتحان و نتائج کی فکر سے دباؤمیں رہتے ہیں 33فیصدی طلبہ،3.79لاکھ بچوں پر سروے

      بنا معاوضہ، خواندہ کریں گے رضاکار
      ناخواندہ کو خواندہ بنانے کے لیے بغیر کسی اعزازیہ یا معاوضے کے تعاون کرنے والے رضاکاروں کو منتخب کرنے کا کام علاقہ واری سطح پر جاری ہے۔ اس کے تحت مختلف محکموں، رضاکار تنظیموں کے نمائندوں کو جوڑا جا رہا ہے۔ جماعت پنجم اور اس سے اوپر کے اسکول کے طلباء سے بھی کہا گیا ہے کہ وہ انہیں رضاکاروں کے طور پر شامل ہونے کی ترغیب دیں۔ ایسے بچے اپنے خاندان یا پڑوسیوں کو تعلیم دیں گے۔ اس کے علاوہ ایم ایڈ، بی ایڈ، بی ٹی سی، جے بی ٹی وغیرہ کورسز کے سابق طلباء کو بھی شامل کرنے کو کہا گیا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: