ہوم » نیوز » تعلیم و روزگار

سینٹرل بورڈ آف سیکنڈری اسکول ایجوکیشن کے امتحان میں کشمیری طالب علم کی شاندار کامیابی

طالب علم کی کامیابی پر یہاں کی مقامی آبادی، اسکول عملے اور والدین نے زبردست خوشی کا اظہار کیا ہے۔

  • Share this:
سینٹرل بورڈ آف سیکنڈری اسکول ایجوکیشن کے امتحان میں کشمیری طالب علم کی شاندار کامیابی
سینٹرل بورڈ آف سیکنڈری اسکول ایجوکیشن کے امتحان میں کشمیری طلباء کی شاندار کامیابی

سری نگر۔ سینٹرل بورڈ آف سکنڈری ایجوکیشن کی دسویں جماعت کے نتائج گزشتہ روزمنظر عام پر آئے جس میں وادی کشمیر کے مختلف علاقوں میں قائم تعلیمی اداروں میں زیر تعلیم طلباء نے شاندار کامیبابی حاصل کر کے اپنا اور اپنے والدین اور اسکول کے نام روشن کئے ہیں۔ اس دوران جنوبی کشمیر کے ضلع سری نگر کے سمپورہ پانتھ چوک کی ناز کالونی سے تعلق رکھنے والے 17سالہ طالب علم نعمان جاوید بٹ ولد جاوید احمد بٹ نے اٹھانویں (98%)فیصد نمبر کے ساتھ امتیازی پوزیشن حاصل کر کے نہ صرف اپنے اسکول کا بلکہ اپنے علاقے اور اپنے والدین کا بھی نام روشن کیا ہے۔ اس دوران مذکورہ طالب علم کی کامیابی پر یہاں کی مقامی آبادی ،اسکول عملے اور والدین نے زبردست خوشی کا اظہار کیا ہے۔


نعمان نے نیوز 18اردو کو بتایا کہ اپنی علمی صلاحیت بڑھانے کے لئے طالب علموں کو مختلف کتابوں کا بغور مطالعہ کرنا چاہیے۔ تاہم اس عمر میں ایک طالب علم کو اپنے نصاب کی ہی طرف دھیان دینا چاہیے تاکہ وہ امتحان میں اچھی طرح سے  اپنے آپ کو کامیابی سے سرفراز کرسکے۔ امتیازی پوزیشن حاصل کرنے والے نعمان کہتے ہیں کہ اگست 2019کے بعد اسکول بند رہے تاہم گھر میں بیٹھ کر انہوں نے از خود محنت کی اور گھر والوں نے بھی نعمان کو محنت کرنے پر زور دیا جس کی وجہ سے انہوں نے اس امتحان میں امتیازی پوزیشن حاصل کی ہے۔ انہوں نے اپنی کامیابی کا سہرا اپنے والدین اور اساتذہ کرام کے سر باندھا۔


انہوں نے مزید کہا کہ نصاب کے ساتھ ساتھ غیر نصابی سرگرمیاں بھی ضروری ہیں، تاکہ بچوں کی نشونما اچھی طرح سے ہو سکے جس سے وہ جسمانی اور دماغی طور پرتندرست رہیں گے اور وہ پڑھائی بھی اچھی طرح سے دل لگا کر کرتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ موجودہ دور میں موبائل فون بھی ضروری ہے تاہم اس کا جس انداز سے بیشتر طلباء استعمال کرتے ہیں وہ بچوں کے لیے نقصان دہ ثابت ہو سکتے ہیں۔ انہوں نے دوسرے طالب علموں کو نصیحت آموز پیغام دیتے ہوئے کہا کہ وہ کھیل کود میں بھی حصہ لیں  لیکن پڑھائی کی طرف خصوصی طور پر اپنی دھیان مرکوز کریں۔ تاکہ وہ زندگی کے ہر میدآن میں آگے بڑھیں۔


ادھر مقامی لوگوں نے بتایا کہ وادی کشمیر میں گزشتہ سال سے تعلیمی ادارے تقریبا بند ہیں جس کی وجہ سب سے پہلے جموں کشمیر کے خصوصی دفعات کی منسوخی ہے جس دوران سرکاری احکامات کے تحت کئی ماہ تک بندشوں کانفاذ رہا ہے۔ انہوں نے بتایا اس کے بعد امسال کورونا وائرس نے تمام شعبہ جات کو بری طرح متاثر کیا ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ اب بیرون ریاستوں میں طلبا ءنے آن لائن تعلیم حاصل کی ہے تاہم وادی میں ایک سال سے تیز رفتار انٹرنیٹ پر روک کے باعث طلباء تعلیم حاصل نہیں کر سکے، پھر بھی اگر کوئی طالب علم اتنی ساری مشکلات کے باوجود شاندار کامیابی حاصل کرے گا تو یہ فخر کی بات ہے۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Jul 17, 2020 08:04 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading