உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کیا ہے اونٹنی کے دودھ کی کہانی... آخر کیوں اتنا مہنگا فروخت ہوتا ہے یہ اور کیسے ہورہا ہے اس کا بزنس

    دنیا بھر میں بڑھتی جارہی ہے اونٹنی کے دودھ کی مانگ۔

    دنیا بھر میں بڑھتی جارہی ہے اونٹنی کے دودھ کی مانگ۔

    جانتے ہیں کہ اونٹنی کے دودھ میں ایسا کیا ہے کہ یہ اتنا مہنگا فروخت ہورہا ہے اور کس طرح سے لوگ اس کا بزنس کررہے ہیں۔ جانتے ہیں اس سے جڑی ہر ایک بات۔۔۔

    • Share this:
      اونٹنی کا دودھ (Camel Milk) اب کافی مقبول ہورہا ہے۔ جسے پہلے بالکل توجہ نہیں دی جاتی تھی، وہ دودھ اب 30 ڈالر فی لیٹر فروخت ہورہا ہے یعنی ایک لیٹر دودھ کے لوگ قریب 2500 روپے (Camel Milk Rate) تک ادا کررہے ہیں۔ ایسے میں جانتے ہیں کہ اونٹنی کے دودھ میں ایسا کیا ہے کہ یہ اتنا مہنگا فروخت ہورہا ہے اور کس طرح سے لوگ اس کا بزنس کررہے ہیں۔ جانتے ہیں اس سے جڑی ہر ایک بات۔۔۔

      300 ٹن اونٹنی کے دودھ کی پیداوار
      بزنس انسائیڈر کی ایک رپورٹ کے مطابق، اونٹ کا دودھ ہوسکتا ہے کہ گائے کے دودھ جتنا مشہور نہ ہو۔ ایک اعدادوشمار کے مطابق پوری دنیا میں ہر سال 600 ملین ٹن گائے کے دودھ کا پروڈکشن ہوتا ہے۔ اس میں ہر سال صرف 3 ملین ٹن دودھ ہی اونٹنی (Camel Milk) کا ہوتا ہے۔ کم پیداوار کے باوجود پورے افریقہ اور مشرق وسطیٰ میں اونٹنی کے دودھ کی بہت مانگ ہے۔

      صومالیہ-کینیا میں سب سے زیادہ پروڈکشن
      صومالیہ اور کینیا جیسے ممالک میں 64 فیصد اونٹنی کا دودھ پیدا کیا جاتا ہے۔ یہاں اونٹ کے کئی فارم کام کررہے ہیں اور جہاں سے دودھ کا پروڈکشن ہورہا ہے اور انہیں شہروں میں سپلائی کیا جاتا ہے۔ اب گاوں میں چارے کا سامان بھی کم ہورہا ہے، جس کے بعد لوگ اونٹوں کو اچھا چارا دے کر اچھا بزنس کررہے ہیں۔ مشرق وسطیٰ کی بات کریں تو اونٹنی کے دودھ کی مانگ تیزی سے بڑھ رہی ہے لیکن اس حساب سے سپلائی نہیں ہے۔

      کس طرح سے فائدہ مند ہے؟
      اس میں سیچوریٹیڈ فیٹ کی مقدار بہت کم ہوتی ہے۔ دیگر دودھ کے مقابلے اس میں 10 گنا زیادہ وٹامن سی ہوتا ہے، پوٹیشیم کی مقدار بہت زیادہ ہوتی ہے۔ ان فائدوں کی وجہ سے دنیا کے کئی لوگ اونٹنی کے دودھ کا استعمال متبادل دوا کے طور پر کرتے ہیں۔

      بزنس کا بن رہا ہے ذریعہ
      اب یہ بزنس کا اہم ذریعہ بن رہا ہے اور لوگ اونٹنی پالن کر کے مہنگے داموں میں دودھ بیچ رہے ہیں۔ افریقن ممالک میں تو بھلے ہی اس کا ریٹ کم ہے، لیکن کئی ملکوں میں تو 30 ڈالر فی لیٹر کے حساب سے اسے بیچا جارہا ہے۔ صحت کے لئے فائدہ مند ہونے کے ساتھ ساتھ اس سے کئی طرح کے پروڈکٹ بنتے ہیں، جس میں چیز و دیگر شامل ہیں۔ اس لئے اب بازار میں بھی اس کی فروخت ہورہی ہے۔

      کیوں ہوتا ہے اتنا مہنگا
      اس کے مہنگے ہونے کی وجہ یہ ہے کہ ایک تو ان کی تعداد کم ہے اور دودھ کی پیداوار بھی کافی کم ہے۔ ایک دن میں اوسطاً ایک گائے 50 لیٹر دودھ دے سکتی ہے، جب کہ اونٹنی 6-7 لیٹر تک ہی دودھ دیتی ہے۔ 3 سال میں ایک گائے 50 ہزار لیٹر تک دودھ دے سکتی ہے، جب کہ اونٹنی اسی مدت میں زیادہ سے زیادہ 4-7 ہزار لیٹر دودھ دے سکتی ہے۔ اس لئے اس کا ریٹ کافی زیادہ ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: