உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بے رو زگار نوجوانوں کے احتجاج کے دوران پولیس نے کیا لاٹھی چارج،دودرجن سے زیادہ نوجوان ہوئے زخمی

    کورونا کے ایکٹو معاملات میں بھلے ہی حالات قابو میں ہوں اور ریاست میں کورونا کے ایکٹو مریضوں کی تعداد گھٹ کر سو سے نیچے آگئی ہو لیکن بڑھتی مہنگائی نے بے روزگار نوجوانوں کے سامنے زندگی کو لیکر مسائل پیدا کردئے ہیں ۔

    کورونا کے ایکٹو معاملات میں بھلے ہی حالات قابو میں ہوں اور ریاست میں کورونا کے ایکٹو مریضوں کی تعداد گھٹ کر سو سے نیچے آگئی ہو لیکن بڑھتی مہنگائی نے بے روزگار نوجوانوں کے سامنے زندگی کو لیکر مسائل پیدا کردئے ہیں ۔

    کورونا کے ایکٹو معاملات میں بھلے ہی حالات قابو میں ہوں اور ریاست میں کورونا کے ایکٹو مریضوں کی تعداد گھٹ کر سو سے نیچے آگئی ہو لیکن بڑھتی مہنگائی نے بے روزگار نوجوانوں کے سامنے زندگی کو لیکر مسائل پیدا کردئے ہیں ۔

    • Share this:
    مدھیہ پردیش میں کورونا کے ایکٹو معاملات میں بھلے ہی حالات قابو میں ہوں اور ریاست میں کورونا کے ایکٹو مریضوں کی تعداد گھٹ کر سو سے نیچے آگئی ہو لیکن بڑھتی مہنگائی نے بے روزگار نوجوانوں کے سامنے زندگی کو لیکر مسائل پیدا کردئے ہیں ۔ کورونا قہر میں بے روزگار ہوئے ہزارنوجوان آنکھیوں میں ایک امید سجائے مدھیہ پردیش کی راجدھانی بھوپال آج اس لئے پہنچے تھے کہ وزیر اعلی شیوراج سنگھ ان سے ملاقات کرینگے اور انہیں روزگار کے مواقع فراہم کرنے کی کوئی راہ نکالیں گے ۔لیکن ان   ہزاروں نوجوانوں کے خواب اس وقت چکنا چور ہوگئے ہیں جب پولیس نے انہیں روشن پورا چوراہے سے ہٹایا اور جب وہ نیلم پارک میں اپنے مطالبات کو لیکر جمع ہوئے تو بے روزگار نوجوانوں اور پولیس کے بیچ نہ صرف جھوما جھٹکی ہوئی بلکہ پولیس نے لاٹھی چارج بھی کیا ۔ لاٹھی چارج جہاں دو درجن سے زیادہ طلبا کو شدید چوٹیں آئیں ہیں وہیں کئی پولیس اہلکار بھی زخمی ہوئے ہیں ۔پولیس نے سو سے زیادہ بے روزگار نوجوانوں کو گرفتار کرکے جیل بھی بھیجا ہے ۔
    مومنٹ ایگینسٹ ان امپلائمنٹ کے کنوینر منوج رجک کہتے ہیں کہ ریاست بھر سے بے روزگار نوجوان اس امید کے ساتھ بھوپال آئے تھے کہ کورونا قہر میں جہاں ان کی زندگی بے نور ہوگئی ہے یہاں وزیر اعلی شیوراج سنگھ ان کی مسیحائی کرینگے اور کوئی ایسی راہ نکلے گی جس سے بے روزگار نوجوانوں کو روزگار فراہم ہوسکیں گے ۔لیکن وزیر اعلی اور ان کے وزیر نے تو بات کرنے سے ہی منع کردیا ۔ہم لوگ روشن پورا چوراہے پر جمع ہوئے تو وہاں سے ہمیں نیلم پارک جانے کو کہا گیا اور جب یہاں پر یوتھ اپنی مانگوں کو لیکر ٖپرامن طریقے سے احتجاج کر رہے تھے پولیس کے ذریعہ بے رحمی سے لاٹھیوں سے  پیٹا گیا ۔دو درجن سے زیادہ یوتھ زخمی ہوئے ہیں ۔حکومت اور پولیس نے اپنے عمل سے ہمارے ارادوں کو اور مضبوط کردیا ہے ۔ ہم بے روزگار یوتھ روزگار کے مطالبہ کو لیکر تحریک چلاتے رہیں گے۔

    وہیں یوتھ اگینسٹ ان امپلائمنٹ کے رکن محمد دانش کہتے ہیں کہ کورونا قہر میں وقت کا ستم جاری ہوا۔ ملازمت سے گھروالوں کی کفالت ہوجاتی تھی مگر چھ ماہ سے کوئی نوکری ہے ۔ سرکاریں تو اسے لئے ہوتی ہیں کہ اپنے شہروں کے درد کا مدواکرینگی لیکن یہاں تو منتری سے سنتری تک کسی کے پاس بات سننے کا وقت نہیں ہے ۔ بے روزگار نوجوانوں نے روزگار مانگا توبدلے میں انہیں پولیس کی لاٹھیاں ملیں ۔حکومت جتنا ظلم کریگی یوتھ کے ارادے اتنے ہی مضبوط ہونگے ۔ روزگار کو لیکر یوتھ کی تحریک جاری رہے گی۔
    ایے ایس پی انکت جیسوال کہتے ہیں کہ یہاں پر احتجاج کے نام پر لا اینڈ آرڈد کو ہاتھ میں لینے کی کوشش کی گئی ۔ پولیس کے ساتھ جھوما جھٹکی گئی جس میں کئی پولیس اہلکار زخمی ہوئے ہیں ۔احتجاج کرنے والوں کی گرفتاری کی گئی ہے اور ان پر ضابطہ کے تحت کاروائی کی جائے گی ۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: