ہوم » نیوز » تعلیم و روزگار

مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی فاصلاتی تعلیم کے سالانہ امتحانات میں تاخیر، ہزاروں طلبا پریشان

مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی کے فاصلاتی تعلیمی شعبہ سے ملک و بیرون ملک کے ہزاروں طلبہ تعلیم حاصل کرتے ہیں ، ا یسے طلبہ کی ایک بڑی تعداد موجود ہے جو اپنے روزمرہ کے کاموں کے ساتھ اس یونیورسٹی کے فاصلاتی ڈپارٹمنٹ کے ذریعہ اپنی تعلیم کو جاری رکھتی ہے۔

  • Share this:
مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی فاصلاتی تعلیم کے سالانہ امتحانات میں تاخیر، ہزاروں طلبا پریشان
مانو: فائل فوٹو

مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی کے فاصلاتی تعلیمی شعبہ سے ملک و بیرون ملک کے ہزاروں طلبہ تعلیم حاصل کرتے ہیں ، ا یسے طلبہ کی ایک بڑی تعداد موجود ہے جو اپنے روزمرہ کے کاموں کے ساتھ اس یونیورسٹی کے فاصلاتی ڈپارٹمنٹ کے ذریعہ اپنی تعلیم کو جاری رکھتی ہے۔ ایسے میں ہزاروں طلبہ کا مستقبل اس شعبہ سے منسلک ہے لیکن اس شعبہ کے ذمہ داران کی کاہلی کی وجہ سے ہزاروں طلبہ کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔


فاصلاتی ڈپارٹمنٹ میں مختلف کورسس چلایے جاتے ہیں  لیکن سال 2020 میں ہونے والے سالانہ امتحانات کا انعقاد ابھی تک میں عمل میں نہیں لایا گیا۔ سال 2020 میں کرونا وبا کی وجہ سے دیگر تعلیمی ادورے بھی متاثر رہے ہیں لیکن ان تمام اداروں نے اپنے تعلیمی سال کو جلد از جلد شروع کردیا لیکن مانو کے فاصلاتی شعبہ کی طرف سے ابھی تک کوئی اقدام اس سلسلہ میں نہیں اٹھایا گیا۔


مانو یونین کے سابق صدر عمر دفاروق نے کہا کہ انتظامیہ کی کاہلی کی وجہ سے ہزاروں طلبہ پریشانی کا سامنا کررہے ہیں، ایسے طلبہ جو سال 2021 میں اپنی آگے کی تعلیم کو جاری رکھنا چاہتے ہیں ان کو 2020کے امتحانات نہ ہونے کی وجہ سے دیگر کورسس  میں داخلہ نہیں مل سکا اور ان کا قیمتی ایک سال ضائع ہوگیا۔ جس کی وجہ سے کی طلبہ مسلسل شکایت کررہے ہیں، کئی طلبہ نے یونیورسٹی فاصلاتی انتظامیہ کو میل کیا، بذریعہ فون توجہ دلائی لیکن کوئی مثبت جواب  نہیں ملا۔ عمر فاروق نے مزید کہا کہ اس سلسلہ میں کئی طلبہ نے ان سے بھی رابطہ کیا اور اس جانب توجہ دلائی۔ عمر فاروق نے یونیورسٹی انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ وہ جلد از جلد سالانہ امتحانات کا انعقادعمل میں لائیں۔ مانو سے ہزاروں اردو میڈیم طلبہ کا مستقبل جڑا ہوا، ایسے میں انتظامیہ کی کاہلی یونیورسٹی کے لئے بھی اور طلبہ کے مستقبل کے لئے بھی نقصاندہ ہے۔

Published by: Sana Naeem
First published: Feb 07, 2021 05:51 PM IST