ہوم » نیوز » No Category

ایم پی دسویں بورڈ کا نتیجہ ہوا جاری لیکن طلبا میں نظر آئی مایوسی: جانیں کیوں

دسویں بورڈ کی طالبہ مصباح کہتی ہیں کہ ہم نے کورونا قہر میں بورڈ امتحان کو لیکر جتنی تیاری کی تھی حکومت نے ہمارے سارے خوابوں پر پانی پھیر دیا ہے ۔ ہم نے کبھی ایسا نہیں سوچا نہیں تھا۔

  • Share this:
ایم پی دسویں بورڈ کا نتیجہ ہوا جاری لیکن طلبا میں نظر آئی مایوسی: جانیں کیوں
دسویں بورڈ کی طالبہ مصباح کہتی ہیں کہ ہم نے کورونا قہر میں بورڈ امتحان کو لیکر جتنی تیاری کی تھی حکومت نے ہمارے سارے خوابوں پر پانی پھیر دیا ہے ۔ ہم نے کبھی ایسا نہیں سوچا نہیں تھا۔

مدھیہ پردیش مادھیمک شکشا منڈل نے دسویں بورڈ کا نتیجہ جاری کردیا ہے۔ بورڈ کی تاریخ میں یہ پہلا موقعہ ہے جب بورڈ کے نتیجہ میں کسی قسم کی نہ تو میرٹ لسٹ جاری کی گئی ہے اور نہ ہی ٹاپ ٹین طلبا کی فہرست جاری کی گئی ہے۔ یہی نہیں بورڈ کی تاریخ میں یہ بھی پہلا موقع ہے جب دسویں بورڈ کے امتحان میں شامل سبھی طلبا پاس ہوئے ہیں۔ دسویں بورڈ نتائج کا اعلان ایم پی وزیر برائے اسکول تعلیم اندر سنگھ پرمار نے سنگل کلک کے ساتھ کیا ہے۔دسویں بورڈ کےامتحان میں پوری ریاست سے نو لاکھ تیرہ ہزار چھ سو بانوے طلبا نے شرکت کی تھی ۔دسویں بورڈ میں تین لاکھ چھہن ہزار دو سو انچاس طلبا اول،تین لاکھ ستانوے ہزار چھ سو چھبیس طلبا دوئم اور ایک لاکھ انسٹھ ہزار آٹھ سو سترہ طلبا سوئم آئےہیں۔

واضح رہے کہ مدھیہ پردیش میں کورونا قہر کے سبب شیوراج سنگھ حکومت نے دسویں بورڈ کے امتحان کو منسوخ کرتے ہوئے انٹرنل اسسمنٹ اور پری بورڈ کے نتائج کی بنیاد پر ہائی اسکول کا نتیجہ جاری کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔ حالانکہ حکومت کی جانب سے طلبا کو ایک خاص موقع دینے کا اعلان کیا گیا ہے وہ طلبا جو بورڈ نتائج سے مطمئن نہیں ہیں یا وہ اپنی رینکنگ میں سدھار کرنا چاہتے ہیں۔ وہ بورڈ کے ذریعہ پچیس ستمبر سے منعقد ہونے والے خصوصی امتحان میں شرکت کر سکتےہیں ۔دوہزار اٹھارہ میں ایم پی دسویں بورڈ کا نتیجہ ۶۶ فیصد تھا جبکہ دوہزار انیس دسویں بورڈ کا نتیجہ ایکسٹھ اعشاریہ بتیس فیصد رہااور دوہزار بیس میں دسویں بورڈ کے امتحان میں ترقی دیکھنے کو ملی تھی اور دسویں بورڈ کا نتیجہ باسٹھ اعشاریہ چوراسی فیصد درج کیاگیا تھا۔ امسال ایم پی بورڈ نے سبھی طلبا کو پاس کیا ہے۔

مدھیہ پردیش کے وزیر برائے اسکول تعلیم اندر سنگھ پرمار کہتے ہیں کہ دسویں بورڈ کا نتیجہ جاری کردیا گیا ہے جو طلبا اپنی ریکنگ سے خوش نہیں ہیں ان کے لئے حکومت نے ایک اور خصوصی امتحان منعقد کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ امتحان کا انعقاد ستمبر ماہ میں ہوگا۔اس بار کے امتحان میں کوئی طالب علم فیل نہیں ہواہے ۔ بارہویں بورڈ کا نتیجہ بھی جولائی مہینے کے آخر میں آئے گا۔یہ نتیجہ کورونا قہر کے سبب جاری کیاگیا ہے ۔اسے سبھی کو تسلیم کرنا چاہئے۔

ایم پی بورڈ نے نتائج کا اعلان تو کردیا ہے لیکن طلبا کے چہروں پر نتائج کو لیکر کوئی خوشی دکھائی نہیں دی رہی ہے ۔ طلبا کا کہنا ہے کہ کورونا قہر میں انہوں نے بڑی محنت سے بورڈ امتحان کی تیاری کی تھی اور اب بورڈ کا نتیجہ جاری ہوگیا ہے لیکن سب کو پاس کردیا گیا ہے تو اب ان کے لئے نتائج میں دیکھنے جیسا کچھ بچا ہی نہیں ہے ۔ وہ اپنی پرفارمینس بورڈ کی میرٹ لسٹ میں دیکھنا چاہتے تھے مگر بورڈ نے میرٹ لسٹ جاری نہ کرنے کا فیصلہ کر کے ہماری امیدوں پر پانی پھیر دیا ہے۔


دسویں بورڈ کی طالبہ مصباح کہتی ہیں کہ ہم نے کورونا قہر میں بورڈ امتحان کو لیکر جتنی تیاری کی تھی حکومت نے ہمارے سارے خوابوں پر پانی پھیر دیا ہے ۔ ہم نے کبھی ایسا نہیں سوچا نہیں تھا۔۔حکومت نے کورونا قہر میں ہماری زندگی کی حفاظت کو لیکر ایسا قدم اٹھایا ہوگا  ۔اگر بورڈ نے میرٹ لسٹ جاری کی ہوتی تو ہمیں اور خوشی ہوتی ۔
وہیں حسان سہیل کہتےہیں کہ یہ ایسا بورڈ امتحان ہے جس میں گدھے اور گھوڑے ایک ہی صف میں کھڑے ہوگئےہیں ۔جب سبھی پاس کر دیئے گئے ہیں تو پھر کچھ کہنے کے لئے کچھ بچتا ہی نہیں ہے ۔نتیجہ آیا۔بہر کیف یہ بھی زندگی کا ایک سبق ہے ۔حکومت نے ہمیں اپنی رینکنگ کو سدھارنے کو لیکر ایک اور موقعہ دیا ہے اور پچیس ستمبر سے ہونے والے خصوصی امتحان میں وہ شرکت کر کے اپنی رینکنگ کو بہتر بنائیں گے ۔
دسویں بورڈ کی طالبہ بینش مہتاب کہتی ہیں کہ ہم نے اپنا نتیجہ میرٹ لسٹ میں دیکھنے کا خواب دیکھا تھا۔ خیر اللہ نے کورونا قہر میں یہی منظور کیا تھا۔اب اور محنت کرکے اپنی منزل کو طے کرنا ہے۔
Published by: Sana Naeem
First published: Jul 15, 2021 12:11 PM IST