உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    National Education Day 2021: مولانا ابوالکلام آزاد کے معروف اقوال، قومی یوم تعلیم پر خاص پیشکش

    مولانا ابوالکلام آزاد بے باک مقرر، نامور صحافی اور سب سے بڑھ کر مجاہد آزادی اور ملک کے پہلے وزیر تعلیم تھے۔

    مولانا ابوالکلام آزاد بے باک مقرر، نامور صحافی اور سب سے بڑھ کر مجاہد آزادی اور ملک کے پہلے وزیر تعلیم تھے۔

    مولانا ابوالکلام آزاد نے کہا تھا کہ ’’ہمیں ایک لمحے کے لیے بھی نہیں بھولنا چاہیے کہ بنیادی تعلیم ہر ایک کا فرض ہے۔ یہ ہر فرد کا پیدائشی حق ہے کہ وہ کم از کم بنیادی تعلیم حاصل کرے جس کے بغیر وہ بطور شہری اپنے فرائض پوری طرح ادا نہیں کر سکتا‘‘۔

    • Share this:
      قومی یوم تعلیم ہر سال 11 نومبر کو آزاد ہندوستان کے پہلے وزیر تعلیم مولانا ابوالکلام آزاد کی یوم پیدائش کی یاد میں منایا جاتا ہے۔ مولانا ابوالکلام آزاد بے باک مقرر، نامور صحافی اور سب سے بڑھ کر مجاہد آزادی اور ملک کے پہلے وزیر تعلیم تھے مولانا آزاد نے ہندوستان میں کئی بہترین تعلیمی اداروں کی بنیاد رکھنے میں اہم کردار ادا کیا۔

      مولانا آزاد نے یونیورسٹی گرانٹ کمیشن (یو جی سی) کے قیام میں بڑا کردار ادا کیا۔ وہ پہلا انڈین انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی (IIT) بنانے کے لیے جانے جاتے ہیں۔

      وزارت برائے انسانی وسائل کی ترقی (MHRD) نے 11 ستمبر 2008 کو قومی یوم تعلیم کے طور پر منانے کا اعلان کیا تھا۔
      وزارت برائے انسانی وسائل کی ترقی (MHRD) نے 11 ستمبر 2008 کو قومی یوم تعلیم کے طور پر منانے کا اعلان کیا تھا۔


      مولانا ابوالکلام آزاد کے یوم پیدائش کے موقع پر مشہور اور اہم اقوام یہاں نقل کیے جاتے ہیں:

      1۔ ہمیں ایک لمحے کے لیے بھی نہیں بھولنا چاہیے، یہ ہر فرد کا پیدائشی حق ہے کہ وہ کم از کم بنیادی تعلیم حاصل کرے جس کے بغیر وہ بطور شہری اپنے فرائض پوری طرح ادا نہیں کر سکتا۔

      2. جو شخص موسیقی سے متاثر نہیں ہوتا ہے وہ دماغ کا کمزور اور ادب لطیف سے غیر محظوط ہوتا ہے۔ گویا وہ پرندوں سے بھی کم تر ہے، کیونکہ پرندے بھی موسیقی سے متاثر ہوتے ہیں۔

      3. ماہرینِ تعلیم کو طلبا میں استفسار، تخلیقی صلاحیت، کاروباری و اخلاقی قیادت کی صلاحیتیں پیدا کرنی چاہئیں اور ان کو رول ماڈل بننا چاہیے۔

      4. چوٹی پر چڑھنا طاقت کا تقاضا کرتا ہے، چاہے وہ ماؤنٹ ایورسٹ کی چوٹی پر ہو یا آپ کے کیریئر کی چوٹی پر۔

      5. سائنس غیر جانبدار ہے۔ اس کی دریافتوں کو یکساں طور پر استعمال کیا جا سکتا ہے۔ یہ صارف کے نقطہ نظر اور ذہنیت پر منحصر ہے کہ سائنس کو زمین پر ایک نیا آسمان بنانے کے لیے استعمال کیا جائے گا یا دنیا کو ایک مشترکہ تصادم میں تباہ کرنے کے لیے اس کا استعمال کیا جائے گا۔

      6۔قومی تعلیم کا کوئی بھی پروگرام اس وقت مناسب نہیں ہو سکتا جب اس میں معاشرے کے ایک آدھے حصے یعنی خواتین کی تعلیم اور ترقی پر پوری توجہ نہ دی جائے۔

      7۔فن جذبات کی تعلیم ہے اور اس طرح حقیقی قومی تعلیم کی کسی بھی اسکیم میں ایک لازمی عنصر ہے۔ تعلیم، خواہ ثانوی ہو یا یونیورسٹی کے مرحلے میں، اگر یہ ہمارے اساتذہ کو خوبصورتی کے ادراک کی تربیت نہیں دیتی ہے تو اسے مکمل نہیں سمجھا جا سکتا۔

      8۔تیز لیکن مصنوعی خوشی کے پیچھے بھاگنے کی بجائے ٹھوس کامیابیاں حاصل کرنے کے لیے زیادہ کوشش کریں۔

      9۔آپ کے خواب سچ ہونے سے پہلے آپ کو خواب دیکھنا ہوں گے۔

      10-اپنے مشن میں کامیاب ہونے کے لیے آپ کو اپنے مقصد کے لیے لگن اور جستجو ضروری ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: