ہوم » نیوز » تعلیم و روزگار

NEET Results 2020: مزدور۔ڈرائیور اور سبزی بیچنے والوں کے 19  بچوں نے NEET  امتحان میں پائی شاندار کامیابی

یہ سارے بچے زندگی پروگرام کا حصہ ہیں جو کہ اجے بہادر سنگھ کے ایک این جی او کے ذریعے چلایا جا رہا ہے۔ وہ خود بھی بھوک اور کمی کا شکار رہے ہیں۔ اس کی وجہ سے وہ خود کبھی ڈاکٹر نہیں بن پائے۔ اس پروگرام کے تحت پورے اڈیشہ سے متاثر بچوں کو منتخب کیا جاتا ہے اور انہیں بھوجن کے ساتھ فری (مفت) کوچنگ بھی فراہم کی جاتی ہے۔

  • Share this:
NEET Results 2020: مزدور۔ڈرائیور اور سبزی بیچنے والوں کے 19  بچوں نے NEET  امتحان میں پائی شاندار کامیابی
NEET Results 2020:

غریب بچوں کو میڈیکل امتحان کی تیاری کرنے والے امیدوار کو مدد پہنچانے کی اپنی مہم کو پنکھ دینے کیلئے اڈیشہ کے چیریٹیبل گروپ نے کمر کس رکھی ہے۔ اس سال اس چیریٹیبل گروپ  کے پڑھائے 19 بچوں نے نیٹ امتحان (NEET Exam 2020) میں انٹری پائی ہے۔ جمعے کو نیٹ کے نتائج (NEET Results 2020) جاری کر دئے گئے ۔ یہ بچے دہاڑی مزدور، سبزی بیچنے والے، ٹرک۔ڈرائیور اور اڈلی۔وڈا (idli vada sambar) بیچنے والوں کے بچے ہیں۔

یہ سارے بچے زندگی پروگرام کا حصہ ہیں جو کہ اجے بہادر سنگھ کے ایک این جی او کے ذریعے چلایا جا رہا ہے۔ وہ خود بھی بھوک اور کمی کا شکار رہے ہیں۔ اس کی وجہ سے وہ خود کبھی ڈاکٹر نہیں بن پائے۔ اس پروگرام کے تحت پورے اڈیشہ سے متاثر بچوں کو منتخب کیا جاتا ہے اور انہیں بھوجن کے ساتھ فری (مفت) کوچنگ بھی فراہم کی جاتی ہے۔ اس مرتبہ بھی نہ تو بھوک اور نہ ہی کورونا وائرس انہیں ڈاکٹر بننے سے روک پایا۔ زندگی فاؤنڈیشن کے 19  بچے نیٹ امتحان میں کامیاب پائے گئے۔

زندگی فاؤنڈیشن  کے بچوں میں ایک ہے کھرودنی ساہو جو کہ انگل ضلع کی رہنے والی ہیں۔ کھرودنی کے والد ایک مزدور ہیں۔ کورونا وائرس وبا بحران کی وجہ سے ان کی نوکری چلی گئی اور کھرودنی بتاتی ہیں کہ میں بیمار ہو گئی۔ اس کے بعد ایمبولینس سے بھونیشور آئیں اور اجے سر کو ساری بات بتائی۔ انہوں نے مجھے ساری مدد پہنچائی۔ کھرودنی کو آل انڈیا 2594 رنک حاصل ہوئی ہے۔

وہیں ستیہ ساہو کے والد سائیکل پر رکھ کر سبزیاں بیچتے ہیں۔ ستیہ جیت کو 619 رینک حاصل ہوئی ہے۔ نویدیتا پانڈا کے والد کی پان کی دکان ہے۔ نویدیتا کو 591 رینک ملی ہے۔ اسمرتی رنجن سین پتی ایک ٹرک ڈرائیور کی بیٹی ہیں۔ نیٹ امتحان میں اسمرتی نے   59044 رینک حاصل کی ہے۔


واضح رہے کہ اجے بہادر سنگھ نے یہ فاؤنڈیشن سال 2017 میں شروع کیا تھا۔ انہوں نے بتایا کہ وہ یہ سب کام کرنے کے لئے کسی سے ڈونیشن نہیں لیتے ہیں ، بلکہ اپنے وسائل سے اس کا انتظام کرتے ہیں۔ وہ کہتے ہیں کہ وہ اس میں اپنا بچپن دیکھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مجھے اپنی تعلیم جاری رکھنے کے لئے چائے بیچنا پڑا تھا۔ اس پروجیکٹ کے ذریعے غریب گھرانوں کے بچوں کا انتخاب کیا جاتا ہے اور انہیں مفت میں کھانے کا انتظام کیا جاتا ہے۔
Published by: sana Naeem
First published: Oct 18, 2020 04:36 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading