உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Russia-Ukraine Crisis: حکومت ہند کی طرف سےہرہندوستانی کویوکرین سےواپس لانےکاعزم، کوششیں ہوئیں تیز

    Youtube Video

    نیوز 18 کے مطابق سو سے زیادہ پھنسے ہوئے ہندوستانی طلبا اور شہریوں کو لے کر ایک پرواز منگل کی صبح ممبئی پہنچی۔ ایک اور پرواز بوڈاپیسٹ سے نئی دہلی میں اترے گی۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے مرکزی وزرا ہردیپ پوری، جیوتیرادتیہ سندھیا، کرن رجیجو اور جنرل وی کے سنگھ کو بھی بھیجا جنہوں نے بالترتیب ہنگری، رومانیہ اور مالڈووا، سلووینیا اور پولینڈ میں خود کو تعینات کیا ہے۔

    • Share this:
      جنگ زدہ یوکرین کے متعدد علاقوں میں مسلسل ہوائی حملوں اور گولہ باری کے درمیان حکومت ہند نے بڑا قدم اٹھایا ہے۔ وہاں پھنسے ہوئے ہندوستانی شہریوں کو واپس لانے کے لیے اپنی انخلا کی کوششیں تیز کردی ہیں۔ اسی دوران منگل (1 مارچ 2022) کو ایک ہندوستانی میڈیکل طالب علم کی موت واقع ہوئی ہے۔

      ہزاروں ہندوستانی شہریوں میں زیادہ تر میڈیکل کے طالب علم ہیں۔ وہ باہر نکلنے کا راستہ تلاش کر رہے ہیں، جب کہ ہندوستان میں ان کے اہل خانہ ان کے محفوظ انخلا اور ہندوستان واپسی کی اپیل کر رہے ہیں۔ پھنسے ہوئے شہریوں کی محفوظ واپسی کو یقینی بنانے کے لیے آپریشن گنگا (Operation Ganga) چلانے کی مرکزی حکومت کی حکمت عملی پر ایک نظر یہ ہے۔

      سو سے زیادہ پھنسے ہوئے ہندوستانی طلبا اور شہریوں کو لے کر ایک پرواز منگل کی صبح ممبئی پہنچی۔ ایک اور پرواز بوڈاپیسٹ سے نئی دہلی میں اترے گی۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے مرکزی وزرا ہردیپ پوری، جیوتیرادتیہ سندھیا، کرن رجیجو اور جنرل وی کے سنگھ کو بھی بھیجا جنہوں نے بالترتیب ہنگری، رومانیہ اور مالڈووا، سلووینیا اور پولینڈ میں خود کو تعینات کیا ہے۔ یہ مرکزی وزرا پھنسے ہوئے شہریوں کو گھر واپس لانے کے لیے وہاں موجود اہلکاروں کے ساتھ رابطہ کریں گے۔

      یوکرین بھیجے گئے چار وزرا میں سے مرکزی وزیر ہردیپ سنگھ پوری ہنگری میں انخلا کی کوششوں کے انچارج ہوں گے۔ شہری ہوا بازی کے وزیر جیوتیرادتیہ سندھیا رومانیہ اور مالڈووا میں مشن کی نگرانی کریں گے۔ وزیر قانون کرن رجیجو سلووینیا سے سرحد پار نقل و حرکت کو تیز کریں گے اور سڑکوں اور ٹرانسپورٹ کے وزیر جنرل وی کے سنگھ پولینڈ سے انخلاء کے انچارج ہیں۔

      کیف میں ہندوستانی سفارت خانے نے ہندوستانی طلبا اور شہریوں کو فوری طور پر کیف چھوڑنے کو کہا ہے۔ اس نے طلبا اور پھنسے ہوئے شہریوں کو ٹرین یا نقل و حمل کے دیگر ذرائع اختیار کرنے کو کہا۔ کیف میں ہندوستانی سفارت خانے نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ تمام ہندوستانی شہریوں بشمول طلبا کو مشورہ دیا جاتا ہے کہ وہ آج فوری طور پر کیف چھوڑ دیں۔ ترجیحی طور پر دستیاب ٹرینوں کے ذریعے یا دستیاب کسی دوسرے ذرائع سے کیف سے باہر نکلا جائے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: