ہوم » نیوز » تعلیم و روزگار

بڑی خبر: جموں کشمیر میں اسکول بند، کووڈ کے بڑھتے معاملات کے پیش نظر انتظامیہ کا بڑا فیصلہ

جموں کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے آج ایک ٹویٹ کے ذریعے اعلان کردیا کہ جموں کشمیر میں کووڈ 19 کے بڑھتے معاملات کے مد نظر نویں جماعت تک کے اسکول دو ہفتے یعنی 5 اپریل سے 18 اپریل تک بند رہیں گے ۔

  • Share this:
بڑی خبر: جموں کشمیر میں اسکول بند، کووڈ کے بڑھتے معاملات کے  پیش نظر انتظامیہ کا بڑا فیصلہ
جموں کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے آج ایک ٹویٹ کے ذریعے اعلان کردیا کہ جموں کشمیر میں کووڈ 19 کے بڑھتے معاملات کے مد نظر نویں جماعت تک کے اسکول دو ہفتے یعنی 5 اپریل سے 18 اپریل تک بند رہیں گے ۔

سرینگر: جموں کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے آج ایک ٹویٹ کے ذریعے اعلان کردیا کہ جموں کشمیر میں کووڈ 19 کے بڑھتے معاملات کے مد نظر نویں جماعت تک کے اسکول دو ہفتے یعنی 5 اپریل سے 18 اپریل تک بند رہیں گے  (School closures) جبکہ دسویں، گیارہویں اور بارہویں جماعت کے اسکول 5اپریل سے 11 اپریل تک بند رکھنے کااعلان کیا گیا ہئے۔اس دوران لیکن دسویں اور بارہویں کے امتحانات پہلے سے طے شدہ شیڈول کے مطابق منغقد کئے جائیں گے۔


جموں کشمیر اور خاص طور سے کشمیر وادی میں کئی طلبا اور اساتذہ کووڈ مثبت پائے گئے ہیں جس کے چلتے اسکول بند کرنے پڑے۔کووڈ معاملات کے اعداد و شمار کا تجزیہ کرنے پر پتہ چلتا ہئے کہ پچھلے ہفتے مطلب 21 سے 27 مارچ کے مقابلے میں اس ہفتے 28 مارچ سے 3 اپریل تک کووڈ کے نئے کیس 110 فیصد بڑھ گئے ہیں اور اموات میں چار گُنا اضافہ ہوا ہے۔ جہاں پچھلے ہفتے 1295 نئے کووڈ 19 مثبت کیس درج کئے گئے تھے وہیں ۳ اپریل کو ختم ہوئے اس ہفتے 2710 نئے معاملے درج کئے گئے ہیں ۔یعنی 1415 معاملات کا اضافہ۔ کشمیر وادی میں اس دوران 1189 معاملات کا اضافہ ہوا ہے۔



اموات کی بات کریں تو پچھلے ہفتے جہاں چار اموات ہوئی تھیں وہیں اس ہفتے 16 اموات واقع ہوہیں یعنی چار گُنا اضافہ ہوا ہے۔ محکمہ صحت کے ڈائریکٹر ڈاکٹر مشتاق کا کہنا ہئے کہ اسکولوں میں رینڈم ٹیسٹنگ کے دوران کئی طلبا مثبت پائے
گئے ہیں جسکی وجہ سے نئے معاملات میں اضافہ ہوا۔

عوام بھی بڑھتے کووڈ معاملات کو لیکر پریشان ہئے۔ ادھر کچھ لوگ انتظامیہ سے ناراض بھی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ سیاحت کے نام پر بڑے پروگرام منعقد کئے جارہئے ہیں جہاں کووڈ قواعد و ضوابط کا خیال نہیں رکھا جارہا ہے۔
Published by: Sana Naeem
First published: Apr 04, 2021 03:09 PM IST