ہوم » نیوز » تعلیم و روزگار

کرناٹک : کورونا کی وبا کے درمیان ایس ایس ایل سی امتحانات کا آغاز ، تقریبا 8 لاکھ طلبہ نے کی شرکت، حکومت کیلئے بھی ایک بڑا امتحان

صبح 10:30بجے سے دوپہر ڈیڑھ بجے تک طلبہ نے اپنا پہلا پرچہ مکمل کیا ۔ پہلا پرچہ کنڑا ، انگریزی ، اردو اور دیگر زبانوں پر مشتمل تھا ۔

  • Share this:
کرناٹک : کورونا کی وبا کے درمیان ایس ایس ایل سی امتحانات کا آغاز ، تقریبا 8 لاکھ طلبہ نے کی شرکت، حکومت کیلئے بھی ایک بڑا امتحان
کرناٹک : کورونا کی وبا کے درمیان ایس ایس ایل سی امتحانات کا آغاز ، تقریبا 8 لاکھ طلبہ نے کی شرکت، حکومت کیلئے بھی ایک بڑا امتحان

کورونا وائرس کے قہر کے درمیان کرناٹک میں دسویں جماعت کے سالانہ امتحانات کا آغاز ہوچکا ہے۔ ایس ایس ایل سی امتحانات کیلئے ریاست بھر میں بنائے گئے 3 ہزار سے زائد مراکز میں 8 لاکھ کے قریب طلبہ و طالبات امتحان میں شرکت کئے ہوئے ہیں ۔ امتحانات کا آج پہلا دن تھا ۔ صبح 10:30بجے سے شروع ہونے والے اس امتحان کیلئے طلبہ کو ڈیڑھ گھنٹے قبل ہی امتحان کے مرکز پر پہنچنے کی ہدایت دی گئی تھی ۔ تاکہ ہر طالب علم کی طبی جانچ ، تھرمل اسکریننگ ہوسکے۔ تمام طلبہ چہروں پر ماسک پہنے ، ہاتھوں کو سنیٹائزر سے ملتے ہوئے امتحان ہال میں حاضر ہوئے ۔ ایک کمرے میں 15 سے 20 طلبہ ہی امتحان بیٹھے ۔ کھانسی ، سردی ، بخار میں اگر کوئی مبتلا ہو، تو اس کے لئے علاحدہ کمرہ ، کنٹینمنٹ زون کے طلبہ کیلئے قریبی ایگزام سینٹر مقرر، امتحانات کے تمام مراکز میں ہیلتھ ورکرس ، رضاکار ، پولیس اہلکاروں کی تعیناتی اس طرح کے وسیع تر انتظامات کئے گئے تھے ۔


صبح 10:30بجے سے دوپہر ڈیڑھ بجے تک طلبہ نے اپنا پہلا پرچہ مکمل کیا ۔ پہلا پرچہ کنڑا ، انگریزی ، اردو اور دیگر زبانوں پر مشتمل تھا ۔ بنگلورو کے مناہل ہائی اسکول میں پہلا پرچہ لکھنے کے بعد طلبہ نے خوشی اور اطمینان کا اظہار کیا ۔ بچوں نے کہا کہ امتحانات کی تیاری کیلئے انہیں کافی وقت ملا ۔ کورونا کا ڈر ضرور تھا ، لیکن یہاں سماجی فاصلہ ، سنیٹائزر اور دیگر انتظامات کئے گئے تھے ۔ لہذا بغیر کسی دشواری کے انہوں نے امتحان دیا اور پہلا پرچہ آسانی کے ساتھ گزرا ۔


صبح 10:30بجے سے دوپہر ڈیڑھ بجے تک طلبہ نے اپنا پہلا پرچہ مکمل کیا ۔
صبح 10:30بجے سے دوپہر ڈیڑھ بجے تک طلبہ نے اپنا پہلا پرچہ مکمل کیا ۔


بنگلورو میں وزیر تعلیم سریش کمار نے شہر کے چند امتحانات کے مراکز کا دورہ کیا اور یہاں کئے گئے حفاظتی اور احتیاطی اقدامات کا جائزہ لیا ۔ امتحانات کا پہلا دن مکمل ہونے کے بعد سریش کمار نے کہا کہ ریاست بھر سے اطمینان اور حوصلہ افزا رپورٹیں موصول ہوئی ہیں ۔ تمام بچوں نے اطمینان اور سکون کے ساتھ امتحان دیا ہے ۔ ایس ایس ایل سی کے کل طلبہ میں 80.3 فیصد طلبہ نے امتحان میں حصہ لیا ہے ۔ جو طلبہ کسی وجہ سے غیر حاضر رہے ہیں ، ان کے لئے سپلمنٹری امتحانات بھی منعقد کئے جائیں گے ۔ سریش کمار نے ایک بار پھر کہا کہ دسویں جماعت کے سالانہ امتحانات شیڈیول کے مطابق مکمل کئے جائیں گے ۔

واضح رہے 25 جون سے 4 جولائی تک ایس ایس ایل سی کے امتحانات ہورہے ہیں ۔ یہ سالانہ امتحانات ویسے تو 27 مارچ کو ہی طے پائے تھے ۔ لیکن کورونا کی بیماری ، لاک ڈاؤن کی نفاذ کے بعد دیگر امتحانات کے ساتھ ایس ایس ایل سی کے امتحانات کو بھی حکومت نے ملتوی کردیا ۔ اس کے بعد ریاست میں سالانہ امتحانات کروائے جائیں یا نہیں ، اس پر طویل بحث ہوئی ۔ محکمہ تعلیم نے اس سلسلے میں ماہرین تعلیم ، ماہرین طب کے ساتھ کئی میٹنگ کئے ۔ کئی گوشوں سے امتحانات کو رد کرنے کا مطالبہ کیا گیا ۔ یہاں تک کہ یہ معاملہ ہائی کورٹ اور سپریم کورٹ میں بھی پہنچا ، لیکن عدالتوں نے تمام تر احتیاطی تدابیر کے ساتھ امتحانات کروانے کے حکومت کے فیصلے پر روک لگانے سے انکار کیا ۔

اسٹوڈنٹ اسلامک آرگنائزیشن آف انڈیا ( ایس آئی او) اور دیگر تنظیموں نے احتیاطی تدابیر کے ساتھ امتحانات منعقد کرنے کے حکومت کے فیصلے کی تائید کی ہے ۔ حالانکہ پڑوسی ریاستیں تمل ناڈو، آندھراپردیش ، تیلنگانہ نے کورونا کی وبا کے پیش نظر دسویں جماعت کے امتحانات کو رد کرنے کا فیصلہ لیا ہے ۔ بتایا جارہا ہے کہ دیگر ریاستوں کے مقابلے کرناٹک میں کورونا کی وبا کچھ حد تک قابو میں رہنے کی وجہ سے حکومت نے امتحانات کروانے کا فیصلہ کیا ہے ۔ لیکن اب بھی یہ فیصلہ حکومت کیلئے کسی بڑے چیلنج اور امتحان سے کم نہیں ہے ۔ کیونکہ ریاست میں کورونا کے مریضوں کی تعداد 10 ہزار سے زیادہ ہوچکی ہے اور دن بہ دن اس بیماری میں اضافہ ہورہا ہے ۔
First published: Jun 25, 2020 09:50 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading