உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    4 لاکھ روپے میں شروع کریں یہ شاندار بزنس، ہر مہینے ہوگی زبردست کمائی

    علامتی تصویر

    علامتی تصویر

    یہ بزنس (500x300)اسکوائر فٹ کی جگہ میں شروع ہوجائے گا۔ آپ کے پاس زمین نہیں ہے تو آپ اسے کرایہ پر لے سکتے ہیں۔ بلڈنگ شیڈ بنانے پر مجموعی طور پر 1 لاکھ 50 ہزار روپے کی لاگت آئے گی۔

    • Share this:
      اگر آپ چاہتے ہیں کہ آپ کا اپنا بزنس ہو تو ہم آپ کو ایک شاندار آئیڈیا بتانے جارہے ہیں، جہاں آپ 4 لاکھ روپے لگا کر اچھا منافع کماسکتے ہیں۔ سب سے اچھی بات یہ ہے کہ اسبزنس کو کوئی بھی شروع کرسکتا ہے۔

      ہم بات کررہے ہیں ماتھے کی بندی بنانے کے بزنس کی۔ ہندوستانی خواتین بندی کا انتخاب اپنے گہنوں اور کپڑوں کو دھیان میں رکھ کر کرتی ہیں۔ اس لئے آپ کو ہر گھر میں ایک رنگ کی بندی کے پیکٹ ہی نہیں، بلکہ کئی رنگوں اور ڈیزائنر بندی کے پیکیٹ دیکھنے کو ملیں گے۔ اس بزنس کو شروع کرنے کا سب سے بڑا فائدہ یہ ہے کہ اس کی مانگ ہمیشہ برقرار رہے گی، کیونکہ خواتین اپنے بناو سنگھار کے سامان پر خرچ کرنے میں کوئی کمی نہیں کرتی ہیں اور بِندی اسی کا ایک حصہ ہے۔ ایسے میں بندی مینوفیکچرنگ یونٹ لگانے کا یہ بزنس آئیڈیا بہتر ثابت ہوسکتا ہے۔ آئیے بتاتے ہیں اس کے بارے میں سب کچھ۔

      4 لاکھ روپے میں شروع ہوجائے گا بزنس
      کھادی اینڈ ویلیج انڈسٹریز کمیشن (KVIC) نے دیہی ترقیاتی روزگار یوجنا کے تحت بندی مینوفیکچرنگ یونٹ لگانےپر ایک پروجیکٹ تیار کیا ہے۔ اس پروجیکٹ رپورٹ کے مطابق بندی مینوفیکچرنگ یونٹ لگانے پر مجموعی خرچ 4 لاکھ روپے آئے گا۔ اگر آپ کے پاس بزنس شروع کرنے کے لئے فنڈ نہیں ہے تو آپ پی ایم مُدرا لون اسکیم کے ذریعے لوک بھی لے سکتے ہیں۔ پروجیکٹ رپورٹ کی بنیاد پر آپ لون کے لئے اپلائی کرسکتے ہیں۔

      پروجیکٹ کاسٹ
      کمیشن کی تیاری کی گئی پروجیکٹ پروفائل رپورٹ کے مطابق، بِندی بنانے کا بزنس شروع کرنے کے لئے آپ کو بہت زیادہ زمین کی ضرورت نہیں ہوتی ہے کیونکہ اس کام میں استعمال ہونے والی مشینری اور آلات کو لگانے اور اُن سے کام نکلوانے کے لئے زیادہ جگہ کی ضرورت نہیں ہوتی ہے۔ یہ بزنس (500x300)اسکوائر فٹ کی جگہ میں شروع ہوجائے گا۔ آپ کے پاس زمین نہیں ہے تو آپ اسے کرایہ پر لے سکتے ہیں۔ بلڈنگ شیڈ بنانے پر مجموعی طور پر 1 لاکھ 50 ہزار روپے کی لاگت آئے گی۔
      بِندی کا بزنس شروع کرنے کے لئے آپ کو کئی طرح کے مشینوں کی ضرورت ہوگی۔ جن میں باٹل کیپ سیلینگ مشین، فلٹرنگ یونٹ، اسٹوریج ٹینک و دیگر۔ ان مشینوں کی خریدی پر قریب ایک لاکھ روپے خرچ ہوں گے۔ ساتھ ہی 1 لاکھ 50ہزار روپے ورکنگ کیپٹل کی ضرورت ہوگی۔ اس طرح مجموعی پروجیکٹ کاسٹ 4 لاکھ روپے ہوگیا۔

      مجموعی خرچ کتنا ہوگا
      کے وی آئی سی کی رپورٹ کے مطابق، آپ ایک سال میں 6لاکھ روپے کی قیمت کی بندی کا پروڈکشن کرسکتے ہیں۔ اس کے را مٹیرئیل پر 2 لاکھ 60 ہزار 500 روپے، لیبل اور پیکیجنگ مٹیرئیل پر 50 ہزار روپے، ویج پر 1 لاکھ 50 ہزار روپے، سیلری پر 48 ہزار روپے، مینجمنٹ خرچ 15ہزار روپے، اوور ہیڈس پر 14,500روپے، متفرق اخراجات پر 7,500 روپے، ڈیپریسی ایشن پر 17,500 روپے، انشورنس پر 2,500 روپے خرچ ہوں گے۔

      کیپٹل ایکسپنڈیچر لون پر 32,500 روپے اور ورکنگ کیپٹل لون کے سود پر 19,500 روپے خرچ ہوں گے۔ اس کا مطلب سود پر سالانہ 52,000 روپے خرچ ہوں گے۔

      کتنی ہوگی کمائی
      اگر آپ 100 فیصدی کیپسٹی کا استعمال کر کے پروڈکشن کرتے ہیں تو سالانکہ پروڈکشن 6 لاکھ روپے کا ہوگا۔ پروجیکٹیڈ سیلس کاسٹ 7,50,000 روپے ہوگی۔ گراس سر پلس 1,50,000 روپے ہوگی۔ ممکنہ نیٹ سرپلس 1,32,000 روپے۔ یعنی آپ کی ہر مہینے کی کمائی 11,000 روپے ہوگی۔
      کے وی آئی سی نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ یہ اعدادوشمار صرف علامتی ہیں اور یہ الگ الگ مقامات پر تبدیل ہوسکتے ہیں۔ اگر آپ بلڈنگ بنانے پر خرچ نہ کرکے اسے کرایہ پر لیتے ہیں تو آپ پروجیکٹ کاسٹ گھٹ جائے گا اور آپ کا منافع بڑھ جائے گا۔

      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: