உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    تعلیمی قرض پر ٹیکس کے کیا ہیں فوائد؟ کیا اس کے لیے بھی عمر کی حد طئے ہے؟ جانیے تفصیل

    اگر آپ ریکرینگ ڈپازٹ اکاؤنٹ کھولتے ہیں، تو آپ کو ایک نامزد یا مستفید ہونے والے کا نام بھی درج کرنا ہوگا

    اگر آپ ریکرینگ ڈپازٹ اکاؤنٹ کھولتے ہیں، تو آپ کو ایک نامزد یا مستفید ہونے والے کا نام بھی درج کرنا ہوگا

    ٹیکس کی کٹوتی صرف ای ایم آئی EMI کے سود والے حصے پر لاگو ہوتی ہے۔ تاہم اس فائدے کو حاصل کرنے کے لیے کوئی زیادہ سے زیادہ حد نہیں ہے۔ اس کے لیے صرف آپ کو اپنے بینک یا مالیاتی ادارے سے ایک سرٹیفکیٹ درکار ہوگا جس میں آپ کے EMIs کے اصول اور سود کے حصوں کو الگ کیا جائے۔

    • Share this:
      آپ کو انکم ٹیکس ایکٹ 1961 کے سیکشن 80 ای کے تحت اپنے تعلیمی قرض پر ادا کیے گئے سود پر ٹیکس میں چھوٹ ملے گی۔ یہ فائدہ صرف انفرادی قرض لینے والوں اور اعلیٰ تعلیم کے مقصد کے لیے پیش کیا جاتا ہے۔ اس میں ہندوستان اور بیرون ملک تعلیم کے تمام شعبوں کا احاطہ کیا جاتا ہے۔ اس میں پیشہ ورانہ اور باقاعدہ کورسز بھی شامل ہیں۔

      براہ کرم نوٹ کریں کہ ٹیکس کی کٹوتی صرف ای ایم آئی EMI کے سود والے حصے پر لاگو ہوتی ہے۔ تاہم اس فائدے کو حاصل کرنے کے لیے کوئی زیادہ سے زیادہ حد نہیں ہے۔ اس کے لیے صرف آپ کو اپنے بینک یا مالیاتی ادارے سے ایک سرٹیفکیٹ درکار ہوگا جس میں آپ کے EMIs کے اصول اور سود کے حصوں کو الگ کیا جائے۔

      ہندوستان اور بیرون ملک اعلیٰ تعلیم کے لیے تعلیمی قرضے پیش کیے جاتے ہیں۔ (تصویر: shutterstock)
      ہندوستان اور بیرون ملک اعلیٰ تعلیم کے لیے تعلیمی قرضے پیش کیے جاتے ہیں۔ (تصویر: shutterstock)


      آپ اس فائدے کا دعویٰ کر سکتے ہیں اس سال سے 8 سال تک جس سال آپ نے ادائیگی شروع کی ہے یا جب تک آپ کے قرض کا سود والا حصہ ادا نہیں ہو جاتا، جو بھی پہلے ہوتا ہے۔  طلبا کو ان کے تعلیمی خوابوں کو پورا کرنے کے لیے ہندوستان میں سرکردہ بینکوں کی طرف سے تعلیمی قرض کی پیشکش کی جاتی ہے۔ تعلیمی قرض کی شرح سود 6.75 فیصد سالانہ سے شروع ہوتی ہے۔ 15 سال تک کے قرض کی مدت کے ساتھ۔ ہندوستان اور بیرون ملک اعلیٰ تعلیم کے لیے تعلیمی قرضے پیش کیے جاتے ہیں۔

      تعلیمی قرض کے لیے کون سے کورسز اہل ہیں اس کا فیصلہ قرض دہندہ کرے گا۔ آپ نرسری سے شروع ہونے والی تعلیم کے لیے تعلیمی قرض حاصل کر سکتے ہیں۔ اعلیٰ تعلیم کے لیے بھی آپ کو تعلیمی قرض مل سکتا ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: