உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مسلم لڑکی نےبھگوت گیتاکاکیااردومیں ترجمہ، بھگوت گیتا اورقرآن کےدرمیان مماثلت پرکتاب لکھنےکاہےادارہ 

    تصویر ٹوئٹر High Range World Records

    تصویر ٹوئٹر High Range World Records

    ہیبہ فاطمہ نے بھگوت گیتا کے 18 ابواب میں سے کل 700 سلوکوں کا تین ماہ کے اندر اردو میں ترجمہ کیا۔ جب نیوز 18 نے رابطہ کیا تو ہیبا فاطمہ نے کہا کہ کچھ الفاظ کے صحیح معنی جاننے میں انہیں کافی وقت لگا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Nizamabad, India
    • Share this:
      پی مہندر۔ نیوز18، نظام آباد 

      دنیا بھر میں تقابل ادیان اور مختلف مذاہب کے مشترکہ تعلیمات کو عام کرنے کی کوششیں ہوتی رہتی ہیں۔ مختلف مذاہب کے صحیفوں کا مطالعہ کرنے کے اسی جذبے و عزم نے ایک مسلم لڑکی کو بڑی کام کے لیے تحریک فراہم کی ہے۔ اسی ضمن میں مسلم طالبہ نے بھگوت گیتا کا اردو میں ترجمہ کیا، جہاں انھوں نے سادہ زبان میں بھگوت گیتا اور قرآن کے درمیان مماثلت' نامی کتاب لکھی، جسے تمام مذاہب کے لوگوں کی جانب سے سراہا گیا اور اس کا نام درج کیا گیا۔

      ہیبہ فاطمہ (Heba Fathima) تلنگانہ کے ضلع نظام آباد کے قصبے بودھن کے راکاسی پیٹ محلے کی رہنے والی ہے، ان کے والد احمد خان قصبے میں چھوٹے پیمانے پر تاجر ہیں۔ ہیبہ فاطمہ ایم اے (انگلش) کر رہی ہے۔ ہیبا فاطمہ دوسرے مذاہب کو جاننا چاہتی ہیں اور اس نے اپنے والد کے مشورے سے ہندو برادری کی مقدس کتاب بھگوت گیتا کا مطالعہ کرنے کا فیصلہ کیا۔ ہیبہ فاطمہ نے اردو میڈیم میں انٹرمیڈیٹ تک تعلیم حاصل کی اور انگریزی میڈیم میں گریجویشن مکمل کیا۔

      ہیبہ فاطمہ نے بھگوت گیتا کے 18 ابواب میں سے کل 700 سلوکوں کا تین ماہ کے اندر اردو میں ترجمہ کیا۔ جب نیوز 18 نے رابطہ کیا تو ہیبا فاطمہ نے کہا کہ کچھ الفاظ کے صحیح معنی جاننے میں انہیں کافی وقت لگا۔ انھوں نے کہا کہ اس نے بھگواد گیتا میں 500 سلوکوں اور قرآن کی 500 آیات کی ایک ہی معنی کے ساتھ شناخت کی ہے۔ ہیبہ فاطمہ نے کہا کہ انہوں نے بھگواد گیتا کا اردو میں آسان زبان میں ترجمہ کیا ہے جس سے پڑھنے والے آسانی سے زندگی گزارنے کا نچوڑ سمجھ سکتے ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں: 


      وہ یوٹیوب چینل بھی چلا رہی ہیں، جس کا نام ’میسج فار آل بائی ہیبہ فاطمہ‘ (Message For all by Heba Fathima) ہے۔ اس میں نیٹیزنز کے لیے 100 سے زیادہ ویڈیوز دستیاب ہیں، جہاں وہ اپ لوڈ کردہ ویڈیوز میں بھگوت گیتا کی اردو میں وضاحت کرتی ہیں۔ ہیبہ فاطمہ مختلف پروگراموں کا انعقاد کرنا چاہتی ہیں تاکہ یہ سمجھا جا سکے کہ انسانیت ہی اصل مذہب ہے۔


      ان کا نام ورلڈ وائڈ بک آف ریکارڈز، نوٹ بک آف ریکارڈز، ہائی رینج بک آف ریکارڈز، مارویلس بک آف ریکارڈز، انٹرنیشنل بک آف ریکارڈز، انڈیا بک آف ریکارڈز، تیلگو بک آف ریکارڈز اور میجک بک آف ریکارڈز میں درج ہے۔ وہ ’’بھگوت گیتا اور قرآن کے درمیان مماثلت‘‘ کے عنوان سے ایک کتاب بھی لکھ رہی ہیں۔ چونکہ ان کی والدہ مہاراشٹر سے ہیں، اس لیے مہاراشٹر کے سیاسی رہنما اردو زبان میں بھگوت گیتا کی کتاب چھاپنے کے لیے آگے آرہے ہیں۔



      جب کہ بودھن شہر کے لوگ تلنگانہ حکومت سے اس کتاب کو شائع کرنے کی درخواست کر رہے ہیں کیونکہ وہ تلنگانہ میں پیدا ہوئی اور پرورش پائی۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: