உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Hijab Rowَ: کرناٹک میں پی یو سی امتحانات شروع، حجاب مسئلہ پر دو طالبات نے کیا واک آؤٹ

    کرناٹک پی یو سی کے امتحانات میں کل 6,84,255 طلبا نے شرکت کی۔

    کرناٹک پی یو سی کے امتحانات میں کل 6,84,255 طلبا نے شرکت کی۔

    اس سے قبل دسویں جماعت کے بورڈ امتحانات کے دوران کرناٹک ایس ایس ایل سی امتحانی مرکز کے اندر حجاب پہننے پر ایک نگہبان کو معطل کر دیا گیا تھا۔ کرناٹک حکومت نے طلباء سے بورڈ کے امتحانات میں یکساں رہنما اصولوں پر عمل کرنے کو کہا تھا جس میں حجاب شامل نہیں ہے۔

    • Share this:
      حجاب کے حق میں احتجاج کرنے والے دو طالب علم جمعہ کے روز کرناٹک پی یو سی (Karnataka PUC) دوسری یا کلاس 12 کے بورڈ امتحان سے واک آؤٹ کر گئے ہیں۔ دو احتجاج کرنے والی طالبات جن کی شناخت ریشم اور عالیہ (Resham and Aliya) کے نام سے ہوئی ہے، حجاب (ہیڈ اسکارف) پہن کر امتحانی مرکز پہنچیں جن پر ہائی کورٹ کے مطابق تعلیمی اداروں میں پابندی عائد کر دی گئی ہے۔

      دونوں طالبات کو اڈوپی کے ودیودیا پی یو کالج (Vidyodaya PU College in Udupi) میں امتحان دینا تھا جہاں انہوں نے مبینہ طور پر حکام سے کہا کہ وہ حجاب پہن کر امتحان دینے کی اجازت دیں، تاہم تقریباً 45 منٹ تک بحث کے بعد دونوں کو اجازت نہیں دی گئی۔ عدالت نے اس سے قبل تعلیمی اداروں میں حجاب پر ریاستی حکومت کی پابندی کو برقرار رکھا تھا۔

      کرناٹک کے پرائمری اور سیکنڈری ایجوکیشن کے وزیر بی سی ناگیش نے اے این آئی کو بتایا کہ چونکہ طالبات کے لیے امتحانی ہال کے اندر حجاب کی اجازت نہیں ہے۔ اسی لیے اخلاقی طور پر ہم ان اساتذہ کو مجبور نہیں کر رہے ہیں جو حجاب پہننے پر اصرار کرتے ہیں کہ وہ امتحان کی ڈیوٹی دیں۔ ہم نے انہیں امتحان کی ڈیوٹی دینے کا اختیار دیا ہے بھی ہے اور نہیں بھی۔

      اس سے قبل دسویں جماعت کے بورڈ امتحانات کے دوران کرناٹک ایس ایس ایل سی امتحانی مرکز کے اندر حجاب پہننے پر ایک نگہبان کو معطل کر دیا گیا تھا۔ کرناٹک حکومت نے طلباء سے بورڈ کے امتحانات میں یکساں رہنما اصولوں پر عمل کرنے کو کہا تھا جس میں حجاب شامل نہیں ہے۔

      مزید پڑھیں: Jobs in Telangana: تلنگانہ میں 80 ہزار نئی نوکریوں کا اعلان، لیکن پہلے سے وعدہ شدہ اردو کی 558 ملازمتیں ہنوز خالی!

      سی این این نیوز 18 سے بات کرتے ہوئے وزیر نے کہا کہ حکومت کو حجاب سے متعلق کوئی مطالبہ موصول نہیں ہوا۔ احتجاج کرنا ہر شہری کا حق ہے۔ ریشما نے احتجاج کیا ہو گا۔ لیکن ہائی کورٹ نے واضح طور پر فیصلہ دیا ہے۔ 22 اپریل کو کرناٹک کے 12 ویں کے بورڈ امتحانات کا پہلا دن تھا۔ آج امتحان نہ لکھنے کا فیصلہ کرنے والے طالبات کو شاید ان کے بورڈ میں ایک اور موقع نہیں ملے گا۔

      مزید پڑھیں: TMREIS: تلنگانہ اقلیتی رہائشی اسکول میں داخلوں کی آخری تاریخ 20 اپریل، 9 مئی سے امتحانات

      اطلاع کے مطابق کرناٹک پی یو سی کے امتحانات میں کل 6,84,255 طلبا نے شرکت کی۔ یہاں 6,00,519 ریگولر طلبا، 61,808 ریپیٹر اور 21,928 پرائیویٹ امیدوار ہیں۔ امتحانات ریاست بھر میں 1,076 مراکز پر منعقد ہو رہے ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: