اپنا ضلع منتخب کریں۔

    ہندوستان اوربرطانیہ 2023 میں ینگ پروفیشنلز ایکسچینج پروگرام کریں گےشروع، ہندوستانی پروفیشنلز کوملیں گےمواقع

    تصویر بشکریہ پی ایم مودی ٹوئٹر

    تصویر بشکریہ پی ایم مودی ٹوئٹر

    ہندوستان کے ساتھ موبلٹی پارٹنرشپ کے متوازی طور پر ہم امیگریشن کے مجرموں کو ہٹانے جی کوشش کر رہے ہیں۔ ڈاؤننگ اسٹریٹ کے بیان میں مئی 2021 کے ایم او یو کا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا، جو کہ ویزہ سے زیادہ قیام کرنے والوں کو ان کے گھر واپس لوٹنے سے متعلق ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • UK
    • Share this:
      ڈاؤننگ اسٹریٹ نے اعلان کیا ہے کہ برطانوی وزیر اعظم رشی سنک (Rishi Sunak) بدھ کو بالی میں G20 سربراہی اجلاس میں ہندوستان کے ساتھ ایک نئی شراکت داری کا اعلان کریں گے۔ یو کے- انڈیا ینگ پروفیشنلز (U.K-India Young Professionals) اسکیم کے تحت یو کے ہر سال 18 تا 30 سال کی عمر کے گروپوں میں 3,000 ڈگری حاصل کرنے والے ہندوستانیوں کو دو سال تک برطانیہ میں کام کرنے کی پیشکش کرے گا۔ یہ اسکیم 2023 کے اوائل میں شروع ہوگی اور باہمی بنیادوں پر ہوگی۔

      ڈاوننگ اسٹریٹ کے ایک پریس نوٹ میں کہا گیا ہے کہ برطانیہ کے ہندوستان کے ساتھ ہند-بحرالکاہل کے خطے کے تقریباً کسی بھی ملک سے زیادہ روابط ہیں۔ برطانیہ میں تمام بین الاقوامی طلبہ کا تقریباً ایک چوتھائی حصہ ہندوستانیوں پر مشتمل ہے اور برطانیہ میں ہندوستانی سرمایہ کاری 95,000 ملازمتوں کی حمایت کرتی ہے۔ یو کے حکومت نے اس پروگرام کے آغاز کو یو کے-ہندوستان تعلقات کے لیے ایک اہم لمحہ قرار دیا۔ سنک نے کہا کہ ہند بحرالکاہل متحرک اور تیزی سے ترقی کرتی ہوئی معیشتوں سے بھرا ہوا ہے۔

      سونک نے ایک بیان میں کہا کہ میں ہندوستان کے ساتھ ہمارے گہرے ثقافتی اور تاریخی تعلقات کے بارے میں آگاہ ہوں۔ انہوں نے کہا کہ مجھے خوشی ہے کہ ہندوستان کے ذہین ترین نوجوانوں میں سے بھی زیادہ کو اب یوکے میں پیش کی جانے والی تمام سہولیات کا تجربہ کرنے کا موقع ملے گا اور ہماری معیشت اور معاشرے کو مزید امیر اور قابل بنایا جائے گا۔ سنک نے موسم گرما میں وزیر اعظم بننے کی اپنی مہم کے دوران ہندوستان کے ساتھ باہمی تبادلہ کرنے کے بارے میں بات کی۔

      یہ بھی پڑھیں: 


      ہندوستان کے ساتھ موبلٹی پارٹنرشپ کے متوازی طور پر ہم امیگریشن کے مجرموں کو ہٹانے جی کوشش کر رہے ہیں۔ ڈاؤننگ اسٹریٹ کے بیان میں مئی 2021 کے ایم او یو کا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا، جو کہ ویزہ سے زیادہ قیام کرنے والوں کو ان کے گھر واپس لوٹنے سے متعلق ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: