ہوم » نیوز » تعلیم

کے امتحان، طلبا منتخب کر سکیں گے تاریخ JEE اور NET، NEET اب نیشنل ٹیسٹنگ ایجنسی لے گی

وزارت برائے فروغ انسانی وسائل نے نیشنل ایلیجیبلیٹی کم اینٹریس ٹیسٹ (نیٹ) اور جوائنٹ امتحان (جے ای ای ) کو سال میں دو مرتبہ کرائے جانے کو ہری جھنڈی دے دی گئی ہے۔

  • Share this:
کے امتحان، طلبا منتخب کر سکیں گے تاریخ JEE اور NET، NEET اب نیشنل ٹیسٹنگ ایجنسی لے گی
مرکزی وزیر پرکاش جاوڑیکر ۔ فائل فوٹو

وزارت برائے فروغ انسانی وسائل نے نیشنل ایلیجیبلیٹی کم اینٹریس ٹیسٹ (نیٹ) اور جوائنٹ امتحان (جے ای ای ) کو سال میں دو مرتبہ کرائے جانے کو ہری جھنڈی دے دی گئی ہے۔ایک پریس کانفرنس میں مرکزی وزیر پرکاش جاوڈیکرنے بتایا کی نیشنل ٹیسٹنگ ایجنسینیٹ (این اے ٹی ) (این ای ای ٹی )  نیٹ ،جے ای ای میںس اور نیٹ (این ای ٹی ) کا منعقد کرائے گی۔اس سے پہلے  سینٹرل  بورڈ آف سیکنڈری ایجوکیشن (سی بی ایس سی ) ان امتحانات کا انعقاد کرتی تھی۔وزارت برائے فروغ انسانی وسائل نےبتایا کہ نیشنل ٹیسٹنگ ایجنسی نے اپنا کام شروع کر دیا ہے۔


جاوڈیکر نے بتیا کہ ہندستان کے امتحان کے نظام کو غیر ممالک کی طرح شفاف بنانے کیلئے سبھی امتحانات کو کمپوٹر کے ذریعے لینے کا فیصلہ لیا گیا ہے۔انہوں نے بتایا کہ کورسز، فیس اور زبانوں میں کسی بھی طرح کی کوئی تبدیلی نہیں کی گئی ہے۔


امتحان میں پوچھےجانے والے سوالات کے پیٹرن میں بھی کسی طرح کی کوئی تبدیلی نہیں کی گئی ہے۔انہوں نے کہا کہ نیٹ (این ای ای ٹی ) میں 13 لاکھ طلبا ہوتے ہیں ، جبکہ (جے ای ای ) میں 12 لاکھ اور (سی میٹ )میں 1 لاکھ اسٹوڈینٹ بیٹھتے ہیں۔


وزارت برائے فروغ انسانی وسائل نے بتایا کہ نیٹ (این ای ٹی )کے امتحان سال میں ایک مرتبہ دسمبر میں ہوں گے۔وہیں (جے ای ای  مینس) کے امتحان سال میں دو بار ہوں گے۔نیٹ (این ای ای ٹی ) کے امتحان بھی فروری اور مئی میں دو مرتبہ ہوں گے ۔دونوں امتحانات میں سے بہتر اسکور کی بنیاد پر داخلہ ہوگا۔

پرکاش جاوڈیکر نے بتایا کہ کمپیوٹر مراکز کا اعلان جلد ہوگا۔امتحان کے دوران اس بات کا بھی دھیان رکھا جائےگا کہ طلبا اپنے نزدیکی مراکز پر امتحان دے سکیں۔

طلبا منتخب کر سکیں گے تاریخ

ہر امتحان چار۔پانچ دنوں تک رہے گا۔چلبا کے پاس امتحان کی تاریخ منتکب کی سہولت ہوگی۔امتحان کے دوران سکیورٹی کا خاص خیال رکھا جائے گا۔کوئی طلبا اگر امتحان کی تاریخ (چھوڑ ) مس کر دیتا ہے تو اسے دوسرا چانس بھی مل سکتا ہے۔
First published: Jul 07, 2018 06:18 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading