உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پربھاس کی ’آدی پروش‘ کو لے کر تنازعہ جاری، رام مندر کے پجاری نے کی فوری بین کرنے کی مانگ

    پربھاس کی ’آدی پروش‘ کو لے کر تنازعہ جاری، رام مندر کے پجاری نے کی فوری بین کرنے کی مانگ

    پربھاس کی ’آدی پروش‘ کو لے کر تنازعہ جاری، رام مندر کے پجاری نے کی فوری بین کرنے کی مانگ

    رام مندر کے چیف پجاری ستیندر داس نے فلم کو بین کرنے کی مانگ کو لے کر کہا ہے کہ بھگوان رام، ہنومان اور راون کا خاکہ غلط ہے اور ان کے اقدار کے خلاف ہے۔ انہوں نے کہا کہ فلم بنانا کوئی جرم نہیں ہے، لیکن انہیں سرخیوں میں لانے کے لئے جان بوجھ کر تنازعہ پیدا کرنے کے لئے بنایا جانا چاہیے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Mumbai | Ayodhya
    • Share this:
      بالی ووڈ ایکٹر پربھاس اور سیف علی خان کی آنے والی فلم آدی پروش کے ٹیزر کے بعد سے ہی لگاتار تنازعہ جاری ہے۔ فلم میں سیف علی خان کے لُک کو لے کر اٹھے تنازعہ کا معاملہ ٹھنڈہ ہونے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ اس کے علاوہ آدی پروش کے ہنومان کے لُک کی بھی جم کر تنقید ہورہی ہے۔ اس درمیان فلم سے جڑی ایک بڑی خبر سامنے آئی ہے۔ ٹیزر کو لے کر چل رہے تنازعہ کے درمیان ایودھیا کے رام مندر کے چیف پجاری نے فلم پر فوری پابندی لگانے کا مطالبہ کیا ہے۔

      دراصل، تنازعہ کے درمیان رام مندر کے چیف پجاری ستیندر داس نے فلم کو بین کرنے کی مانگ کو لے کر کہا ہے کہ بھگوان رام، ہنومان اور راون کا خاکہ غلط ہے اور ان کے اقدار کے خلاف ہے۔ انہوں نے کہا کہ فلم بنانا کوئی جرم نہیں ہے، لیکن انہیں سرخیوں میں لانے کے لئے جان بوجھ کر تنازعہ پیدا کرنے کے لئے بنایا جانا چاہیے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      اننیا پانڈے کو بری طرح نظرانداز کرکے نکل گئے آرین خان، ویڈیو سوشل میڈیا پر ہوا وائرل




      یہ بھی پڑھیں:

      وجئے دشمی کے موقع پر فینس کو سلمان خان نے دیا سرپرائز، شیئر کیا آنے والی فلم کا نیا لُک


      سناتن دھرم کے کسی بھی کردار سے کھلواڑ برداشت نہیں
      انہوں نے آگے کہا کہ سناتن دھرم کے کسی بھی کردار کے ساتھ اگر کھلواڑ کیا جاتا ہے تو سنت سماج اس کی مخالفت کرتا ہے کیونکہ بھگوان رام کا کردار قابل مثال شخص کا کردار ہے۔ رام اور رامائن کے مثال کو چھوڑ کر آج تک نہ تو کوئی بھی چھیڑ چھاڑ ہوئی ہے اور نہ ہی ایسا کردار بنا ہے۔ نہ جانے کون سے رامان کی بنیاد پر فلم بنارہے ہیںَ یہ سناتن دھرم کے بالکل برعکس ہے اس لئے اس پر پابندی لگنی چاہیے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: