اپنا ضلع منتخب کریں۔

    آخرکار ارباز خان نے اپنے اور جارجیا اینڈریانی کی عمر کے فرق پر توڑی خاموشی، کہی یہ بات

    آخرکار ارباز خان نے اپنے اور جارجیا اینڈریانی کی عمر کے فرق پر توڑی خاموشی، کہی یہ بات

    آخرکار ارباز خان نے اپنے اور جارجیا اینڈریانی کی عمر کے فرق پر توڑی خاموشی، کہی یہ بات

    ارباز نے اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے آگے کہا کہ، یہ ایک چھوٹا افیئر بھی ہوسکتا ہے، لیکن ابھی اپنی ریلیشن شپ کے بارے میں بات کرنا شائد جلد بازی ہوگی۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Mumbai, India
    • Share this:
      سلمان خان کے بھائی ارباز خان کو فلم انڈسٹری میں سلمان جیسی کامیابی نہیں مل پائی، لیکن وہ اپنی پرسنل لائف کی وجہ سے ہمیشہ سرخیوں میں بنے رہے۔ ان دنوں ارباز خان پنی گرل فرینڈ جارجیا اینڈریانی سے ریلیشن شپ کو لے کر موضوع بحث بنے ہوئے ہیں۔ حال ہی میں ارباز نے اپنے اور جارجیا کے درمیان عمر کے فرق کو لے کر کچھ شیئر کیا ہے۔ آئیے جانتے ہیں کہ ارباز نے کونسی بات کا خلاصہ کیا ہے۔

      ارباز خان کا انکشاف
      ارباز خان اور جارجیا اینڈریانی کی عمر میں ایک بڑا فرق ہے۔ ایک انٹرویو میں ارباز نے جارجیا کو ایک بہت ہی بہترین لڑکی قرار دیتے ہوئے کہا، میں جانتا ہوں کہ میرے اور جارجیا کے درمیان عمر کا ایک بڑا فاصلہ ہے، لیکن جب آپ ایک ریلیشن شپ میں آجاتے ہیں تو بہت آگے کی نہیں سوچتے۔ حالانکہ میں کبھی کبھی جارجیا سے اس بارے میں کہتا ہوں کہ کیا سچ میں، ہم اب لائف کے اس موڑ پر ہیں جہاں سے میں یہ بات سوچ رہا ہوں کہ کس طرح سے اس رشتے کو آگے لے کر جانا ہے۔‘

      یہ بھی پڑھیں:
      ’بھائی-بھائی کوسپورٹ نہیں کرے گاتوکون کرے گا‘،سلمان کے لیے آخر ارباز نے کیوں کہی یہ بات

      سشمیتانے سابق بوائے فرینڈروہمن کے ساتھ منائی تھی پچھلی سالگرہ، اس مرتبہ کچھ ایسی ہی پلاننگ

      یہ بھی پڑھیں:
      ادا خان سے لے کر ایشوریہ اور ثنا خان تک کئی ٹی وی اداکارائیں کھاچکی ہیں پیار میں دھوکہ

      ارباز نے اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے آگے کہا کہ، یہ ایک چھوٹا افیئر بھی ہوسکتا ہے، لیکن ابھی اپنی ریلیشن شپ کے بارے میں بات کرنا شائد جلد بازی ہوگی۔‘ آپ کو بتادیں کہ اس وقت ارباز خان 55 سال کے ہیں اور جارجیا اینڈریانی 33 سال کی ہیں۔ دونوں کی عمر میں پورے 22 سال کا فاصلہ ہے۔ حالانکہ عمر کا گیپ دونوں کے رشتے کے درمیان نہیں آیا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: