உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہندو۔مسلم سیاست پربالی ووڈ اداکاراداکارنوازالدین کا بیان، کہہ دی یہ بڑی بات

    بالی ووڈ اداکار نواز الدین

    بالی ووڈ اداکار نواز الدین

    • Share this:
      اداکار نوازالدین صدیقی حال ہی میں اپنی فلم بال ٹھاکرے کی مارکیٹنگ ہیڈ نیتا شاہ کی کتاب لانچ کرنے پہنچے۔ جہاں انہوں نے نیوز18 سے ہوئی خاص بات چیت میں صاف کیا کہ اگر نیتا اپنی کتاب 'دا اسٹرینجر ان می' پر فلم بناتی ہیں اور انہیں فلم آفر کرتی ہیں تو وہ ان کی فلم کا حصہ ضرور بنیں گے۔ نوازالدین نے اس دوران یہ بھی بتایا کہ انہیں کتابیں پڑھنا بہت پسند ہے اور وہ بچپن میں کس طرح کی کتابیں پڑھنے کے شوقین تھے۔

      نواز نے نیوز18 سے کھل کر بات چیت میں فلم ، کنٹروورسی اور ملک کے موجودہ حالات پر کھل کر گفتگوکی۔ فلموں سے جڑی کنٹروورسی اور پا لیٹیکل فلم بنانے کی آزادی کے سوال پر ہنستے ہوئے نواز نے کہا کہ آج کل ہر بات پر کنٹروورسی شروع ہوجاتی ہے اس پر بتایئے کیا کریں۔

      تو وہیں سیاسی مسائل پر آج کل بالی ووڈ میں چل رہی ٹویٹر وار پر نواز نے سنجیدہ ہوتے ہوئے کہا کہ میں ٹویٹر پر زیادہ ایکٹو نہیں رہتا ہوں۔ میری ٹیم میرے سوشل میڈیا کو دیکھتی ہے تو مجھے نہیں معلوم رہتا کہ ٹویٹر پر کیا وار چل رہی ہے یا کس کی ٹرولنگ ہوئی۔ میں سوشل میڈیا کے بجائےکام پر دھیان دیتا ہوں۔

      وہیں نواز سے جب ملک میں چل رہی ہندو۔مسلم ووٹ بینک کی سیاست پر سوال کیا تو نواز بیحد سنجیدگی سے بولے کہ میں صرف یہی کر سکتا ہوں کہ اگر ملک  میں ترقی کرنی ہے، ملک کو آگے بڑھانا ہے تو ہم سب کو مل کر کام کرنا پڑےگا تبھی چیزیں اچھی ہوسکتی ہیں۔ لڑائی جھگڑے میں کچھ نہیں رکھا۔ اس سے ہمیشہ نقصان ہی ہوتا ہے ہر آدمی اپنے ملک سے پیار کرتا ہے اور کرنا بھی چاہئے۔ چاہے وہ کسی بھی مذہب کا ہو تو اس وقت ہم سب کو مل کر ملک کو آگے لیکر جانا ہے۔
      First published: