ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

بالی ووڈ اداکارہ کمکم کا رانچی سے تھا گہرا رشتہ، یہاں کے سجاد حسین خان عرف پنکی خان سے ہوئی تھی شادی

رانچی کے اردو ادیب حسین کچھی کہتے ہیں کہ انہوں نے رانچی میں ملاقات میں یہ محسوس کیا کہ کمکم بیحد خلیق، نیک دل، پر کشش اور پروقار شخصیت کی مالک تھیں۔

  • Share this:
بالی ووڈ اداکارہ کمکم کا رانچی سے تھا گہرا رشتہ، یہاں کے سجاد حسین خان عرف پنکی خان سے ہوئی تھی شادی
بالی ووڈ اداکارہ کمکم کا رانچی سے تھا گہرا رشتہ، یہاں کے سجاد حسین خان عرف پنکی خان سے ہوئی تھی شادی

رانچی۔ کبھی آر کبھی پار لگا تیر نظر ، سال ١٩٥٤ میں بنی فلم آر پار کا یہ نغمہ آپ نے ضرور سنا ہوگا۔ یہ نغمہ معروف فلمساز گرودت نے اداکارہ کمکم پر فلمایا تھا ۔ تقریباً ایک سو پندرہ فلموں میں اپنی اداکاری کا جوہر دکھانے والی ٨٦ سالہ اداکارہ کا گذشتہ منگل کو حرکت قلب بند ہو جانے سے انتقال ہوگیا۔ کمکم کا حقیقی نام زیب النساء تھا ۔ ان کی پیدائش ٢٢ اپریل ١٩٣٤ کو ریاست بہار کے شیخپورہ واقع حسین آباد میں ایک نواب خاندان میں ہوئی تھی۔ کمکم نے ١٩٦٣ میں بھوجپوری فلم گنگا مییا تو ہے پییاری چڑھیبو سے اپنے فلمی کیریر کی شروعات کی تھی۔


رانچی کے اردو ادیب حسین کچھی کہتے ہیں کہ کمکم کی شادی رانچی کے سجاد حسین خان عرف پنکی خان سے ہوئی تھی ۔ شادی کے بعد کمکم رانچی میں چند ماہ قیام کے بعد ہی اپنے شوہر کے ساتھ ممبئی چلی گئیں اور وہاں مستقل سکونت اختیار کر لی۔ حسین کچھی کہتے ہیں کہ حقیقی طور پر الہ آباد کے باشندہ پنکی خان کے والد اکبر حسین خان رانچی واقع ہیوی انجینئرنگ کارپوریشن میں ایک بڑے عہدے پر فائز تھے۔


کمکم نے فلم مسڑ ایکس ان بامبے ۔ مدر انڈیا ۔ سن آف انڈیا ۔ کوہ نور ۔ اجالہ ۔ نیا دور ۔ شری مان فنٹوس ۔ ایک لٹیرا ایک سپیرا جیسے تقریباً ایک سو پندرہ فلموں میں اپنی اداکاری کے جوہر دکھائے۔ کمکم ٥٠ اور ٦٠ دہائی کی کافی مقبول اداکارہ تھیں۔


رانچی کے اردو ادیب حسین کچھی کہتے ہیں کہ انہوں نے رانچی میں ملاقات میں یہ محسوس کیا کہ کمکم بیحد خلیق، نیک دل، پر کشش اور پروقار شخصیت کی مالک تھیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ کراچی پاکستان میں مقیم معروف ہومیوپیتھ ڈاکٹر رانچی کے باشندہ علی جاوید حسین نے بتایا کہ زیب النساء عرف کمکم ممبئی منتقل ہونے کے باوجود متواتر رانچی آتی رہیں اور رانچی کے معروف وکیل سید یاور حسین کی رہائش گاہ پر منعقد ہونے والے مجالس میں شرکت کرتی رہیں۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ کمکم شادی سے قبل بھی رانچی ان مجالس میں شرکت کی غرض سے آتی رہتی تھیں۔ زیب النساء عرف کمکم کے انتقال سے رانچی میں ان کے جاننے والوں میں غم و اندوہ کا ماحول ہے۔

 
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Jul 31, 2020 10:32 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading