ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

ہندوستان - نیپال تنازعہ: اداکارہ منیشا کوائرالہ نے نیپال کے فیصلے پر کی حمایت، سوشل میڈیا پر بھڑک گئے صارفین

ہندوستان - نیپال (India-Nepal) کے درمیان چل رہے نقشہ تنازعہ پر بالی ووڈ اداکارہ منیشا کوئرالہ (Manisha Koirala) نے نیپال کی حمایت کی ہے۔ انہوں نے ٹوئٹ نے کرکے ہندوستان - نیپال نقشہ تنازعہ پر اپنی رائے رکھی ہے۔

  • Share this:
ہندوستان - نیپال تنازعہ: اداکارہ منیشا کوائرالہ نے نیپال کے فیصلے پر کی حمایت، سوشل میڈیا پر بھڑک گئے صارفین
ہندوستان - نیپال تنازعہ: اداکارہ منیشا کوائرالہ نے نیپال کے فیصلے پر کی حمایت

نئی دہلی: ہندوستان - نیپال (India-Nepal) کے درمیان چل رہے نقشہ تنازعہ پر اداکارہ منیشا کوئرالہ (Manisha Koirala) نے نیپال کی حمایت کی ہے۔ بنیادی طور پر نیپال کی رہنے والی بالی ووڈ اداکارہ نے ٹوئٹ کرکے ہندوستان - نیپال نقشہ تنازعہ پر اپنی رائے رکھی ہے۔ انہوں نے ٹوئٹ میں لکھا، ’علاقائی خودمختاری، سیاسی خودمختاری اور معاشی خودمختاری ایک خودمختار ریاست کے برابر ہوتی ہے۔ آئیے اس پر تبادلہ خیال کریں’۔


 




 لوگوں کے بھڑکنے پر دی صفائی

منیشا کوائرلہ کے اس ٹوئٹ کے بعد ہنگامہ مچ گیا۔ اس کے بعد منیشا کوائرلہ سوشل میڈیا پر ہندوستانی ٹوئٹر صارفین کے نشانے پر آگئیں۔ اداکارہ نے صفائی دیتے ہوئے لکھا، ’میری دل سے دعا ہے کہ آپ اتنا پرجوش اور بے عزت مت بنئے.. ہم لوگ ان حالات میں ایک ساتھ ہیں۔ ہماری حکومتیں اس معاملے کو حل کرلیں گی۔ اس دوران ہمیں بہتر انسان بنے رہنے کی ضرورت ہے۔ میں اب بھی امید کرتی ہوں’۔

منیشا کوائرلہ کے اس ٹوئٹ کے بعد ہنگامہ مچ گیا۔ اس کے بعد منیشا کوائرلہ سوشل میڈیا پر ہندوستانی ٹوئٹر صارفین کے نشانے پر آگئیں۔
منیشا کوائرلہ کے اس ٹوئٹ کے بعد ہنگامہ مچ گیا۔ اس کے بعد منیشا کوائرلہ سوشل میڈیا پر ہندوستانی ٹوئٹر صارفین کے نشانے پر آگئیں۔


کیا ہے معاملہ

دراصل، نیپال کی پارلیمنٹ نے اسی ماہ نیا نقشہ جاری کیا تھا۔ نیپال نے ترمیمی نقشے میں ہندوستان کی سرحد سے سیاسی طور پر متصل اہم علاقوں لپولیکھ (Lipulekh)، کالا پانی (Kalapani) اور لمپیا دھرا علاقوں پر دعویٰ کیا گیا تھا۔

ہندوستان نے نیپال کو دیا تھا یہ جواب

ہندوستان کے وزارت خارجہ کے ترجمان انوراگ شریواستو نے کہا تھا کہ ’ہم نے دھیان دیا ہے کہ ’نیپال کے ایوان نمائندگان نے ہندوستانی علاقے کو شامل کرنے کے لئے نیپال کے نقشے کو بدلنے کے لئے ایک آئینی ترمیمی بل منظور کیا ہے۔ ہم نے اس معاملے پر اپنا موقف پہلے ہی واضح کردیا ہے۔ دعووں کا یہ مصنوعی اضافہ تاریخی حقائق یا ثبوتوں پر مبنی نہیں ہے اور نہ ہی اس کا کوئی مطلب ہے۔ یہ واقعہ سرحد کے موضوعات پر بات چیت کرنے کے لئے ہماری موجودہ سمجھ کی بھی خلاف ورزی ہے’۔
First published: Jun 24, 2020 08:58 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading