உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بیچ پارٹی میں انکتا لوکھنڈے اور وکی جین ہوئے انتہائی رومانٹک ، سب کے سامنے کردیا ایسا کام ، رہ جائیں گے حیران

    بیچ پارٹی میں انکتا لوکھنڈے اور وکی جین ہوئے انتہائی رومانٹک ، سب کے کردیا ایسا کام ، رہ جائیں گے حیران ۔ تصویر : انسٹاگرام ۔

    بیچ پارٹی میں انکتا لوکھنڈے اور وکی جین ہوئے انتہائی رومانٹک ، سب کے کردیا ایسا کام ، رہ جائیں گے حیران ۔ تصویر : انسٹاگرام ۔

    اداکارہ انکتا لوکھنڈے (Ankita Lokhande Vicky Jain Kiss) نے اپنی انسٹاگرام اسٹوریز پر کئی تصویریں اور ویڈیوز شیئر کئے ہیں ۔ انہوں نے لال رنگ کی ساڑی اور نیکلیس پہنا ہوا ہے ۔ ان کے بال کندھوں پر گرے ہوئے کافی خوبصورت نظر آرہے ہیں ۔

    • Share this:
      ممبئی : اداکارہ انکتا لوکھنڈے نے ہفتہ کو اپنے دوستوں کے ساتھ دیوالی پارٹی میں شرکت کی اور یہ بھی طے کیا کہ ان کی زندگی کا آنے والا وقت بھی پارٹی میں ہی گزرے ۔ اداکارہ کے ساتھ ان کے بوائے فرینڈ وکی جین بھی اس پارٹی میں شامل ہوئے اور دنوں نے ایک ساتھ ڈانس کرتے ہوئے کس کیا ۔ یہ ویڈیو اب سوشل میڈیا پر جم کر وائرل ہورہا ہے ۔

      اداکارہ انکتا لوکھنڈے نے اپنی انسٹاگرام اسٹوریز پر کئی تصویریں اور ویڈیوز شیئر کئے ہیں ۔ انہوں نے لال رنگ کی ساڑی اور نیکلیس پہنا ہوا ہے ۔ ان کے بال کندھوں پر گرے ہوئے کافی خوبصورت نظر آرہے ہیں ۔ ان میں سے ایک ویڈیو میں وہ وکی جین کے ساتھ ڈانس کرتی ہوئی نظر آرہی ہیں ۔ دونوں ڈانس کرتے کرتے ایک دوسرے میں کھو جاتے ہیں اور کس کرتے ہیں ۔

      تصویر : انسٹاگرام ۔ @lokhandeankita
      تصویر : انسٹاگرام ۔ @lokhandeankita


      اداکارہ انکتا لوکھنڈے کو آخری مرتبہ پوتر رشتہ ریبوٹ میں دیکھا گیا تھا ۔ انہوں نے کنگنا رناوت اسٹارر فلم منی کرنیکا : دی کوئن آف جھانسی سے اپنا فلمی ڈیبیو کیا تھا ۔ انہوں نے فلم میں کنگنا کی دوست جھلکاریبائی کا کردار ادا کیا تھا ۔ نیز وہ ٹائیگر شراف کی باغی تھری میں نظر آئی تھیں ۔

      انکتا لوکھنڈے اپنے آنجہانی بوائے فرینڈ سشانت سنگھ راجپوت کیلئے انصاف کے مطالبہ کو لے کر کھل کر بات کرنے کی وجہ سے بھی سرخیوں میں رہی تھیں ۔ ان کے موجودہ بوائے فرینڈ وکی جین ہر وقت ان کے ساتھ کھڑے رہے ۔ انہوں نے حالات کو کیسے سنبھالا ، اس کیلئے ان کی تعریف کرتے ہوئے انکتا نے ان کو دنیا کا سب سے اچھا بوائے فرینڈ بتایا تھا اور ایک نوٹ لکھا تھا ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: