ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

ملائیکہ اروڑہ سے طلاق پر ارباز خان نے کہا- یہ ضروری ہوگیا تھا

بالی ووڈ اداکاراربازخان نے بتایا کہ ملائیکہ اروڑہ کے ساتھ 19 سال کی شادی کوختم کرنا کیوں ضروری ہوگیا تھا اوران کے بیٹے ارہان نے ان سب چیزوں کا کیسے سامنا کیا۔

  • Share this:
ملائیکہ اروڑہ سے طلاق پر ارباز خان نے کہا- یہ ضروری ہوگیا تھا
بالی ووڈ اداکاراربازخان نے بتایا کہ ملائیکہ اروڑہ کے ساتھ 19 سال کی شادی کوختم کرنا کیوں ضروری ہوگیا تھا اوران کے بیٹے ارہان نے ان سب چیزوں کا کیسے سامنا کیا۔

ممبئی: بالی ووڈ میں بہترہوتےاورخراب رشتوں کی کہانیاں تواکثرہی دیکھنے سننےکومل جاتی ہے۔ ایسی ہی کہانی ہے ملائیکہ اروڑہ اوراربازخان کے رشتے کی۔ ان دونوں کا طلاق 2017 میں ہوچکا ہے اوررشتہ ٹوٹنے کے بعد یہ دونوں کئی بارانٹرویومیں اسے لے کربات بھی کرچکے ہیں، لیکن 19 سال کی اس شادی کے ٹوٹنے کولے کرلوگوں کے سوال ختم نہیں ہوتے ہیں۔ حال ہی میں اربازخان نے ایک بارپھرملائیکہ اروڑہ سے طلاق کولےکر بات کی ہے۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ ان سب کے دوران ان کے بیٹے ارہان خان کا کیا ردعمل تھا۔


اربازخان نے پنکولا کودیئےانٹرویومیں کہا 'ہم ایک بچےکوکئی بارسمجھ نہیں پاتے۔ ارہان اس وقت 12 سال کا تھا، لیکن اسے حالات کی سمجھ تھی۔ اسے سمجھ تھی کہ ہم دونوں کے درمیان کیا ہورہا ہے۔ اسےبیٹھ کرکبھی سمجھانےکی ضرورت نہیں پڑی'۔ انہوں نے بتایا کہ 'والدین ہونےکےناطے ہمارے لئے یہ کافی مشکل فیصلہ تھا، لیکن ہم اس مقام پرکھڑے تھے، جہاں توازن اورحالات کوبہتربنائے رکھنےکے لئے یہی واحد راستہ بچا تھا'۔


اربازخان نے بتایا کہ 'ارہان ایک سمجھدار بچہ ہے، وہ جلد ہی 18 سال کا ہوجائےگا اوراس اہم اسٹیج پراسےطےکرنا ہوگا کہ وہ اپنی زندگی کوکیا موڑدینا چاہتا ہے'۔ اربازخان نےاس بات کا اعتراف کیا کہ انہوں نےارہان کی کسٹڈی کےلئےلڑائی نہیں کی کیونکہ انہیں معلوم تھا کہ اس وقت اسےاپنی ماں کی ضرورت تھی۔


ارباز خان نے بیٹے ارہان خان کو لے کر کی بات

بات کریں اربازخان اورملائیکہ اروڑہ کی تویہ دونوں ہی اپنے رشتے کولےکرکئی بارکھل کر بات کرتے ہوئےنظرآئے ہیں۔ اس سےقبل ملائیکہ اروڑہ انٹرویومیں بتاچکی ہیں کہ دونوں اس رشتےسےخوش نہیں تھےاوراس کا اثرآس پاس کےلوگوں پربھی پڑرہا تھا، جس کے سبب دونوں نےاپنی آپسی اتفاق سےایک دوسرے سےالگ ہونےکا فیصلہ کیا۔ حالانکہ ان دونوں کی فیملی کےدرمیان کافی اچھا رشتہ ہے۔
First published: Dec 23, 2019 07:20 PM IST