ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

لاوڈ اسپیکر پر اذان کو لے کر متنازع بیان دے کر جم کر ٹرول ہوئے جاوید اختر ، اب دی یہ صفائی

سوشل میڈیا پر جم کر ٹرول ہونے کے بعد جاوید اختر نے اپنی صفائی میں ایک دوسرا ٹویٹ کیا ، جس میں انہوں نے لکھا کہ مندر ہو مسجد ، اگر آپ کسی تیوہار پر لاوڈ اسپیکر کا استعمال کرتے ہیں تو ٹھیک ہے ، لیکن اس کا استعمال مندر یا مسجد میں روزانہ نہیں ہونا چاہئے ۔

  • Share this:
لاوڈ اسپیکر پر اذان کو لے کر متنازع بیان دے کر جم کر ٹرول ہوئے جاوید اختر ، اب دی یہ صفائی
بتادیں کہ اذان پر ٹویٹ کے بعد جاوید اختر سوشل میڈیا پر کافی ٹرول ہوئے تھے ۔ کئی لوگوں نے ان کے اس ٹویٹ پر اعتراض کیا تھا ۔ یوزرس نے جاوید اخٹر کے ٹویٹ پر اعتراض کرتے ہوئے ان سے اسلامی نظریہ کے خلاف ٹویٹ نہ کرنے کی بھی بات کہی تھی ۔

بالی ووڈ کے مشہور نغمہ نگار جاوید اختر (Javed Akhtar) نے گزشتہ روز ایک ایسی متنازع بات کہہ دی ، جس کی وجہ سے وہ ٹرولرس کے نشانے پر آگئے ہیں ۔ دراصل جاوید اختر نے لاوڈاسپیکر پر اذان (Azaan on Loudspeaker)  دینے کو لے کر ٹویٹ کیا تھا ، جس میں ان کا کہنا تھا کہ لاوڈ اسپیکر پر اذان دینے کی روایت بند کی جانی چاہئے ، کیونکہ اس سے دوسروں کو پریشانی ہوتی ہے ۔ جاوید اختر کا کہنا تھا کہ اذان مذہب کا اٹوٹ حصہ ہے ، لاوڈ اسپیکر کا نہیں ، ایسے میں اب اپنے ٹویٹ کو لے کر جاوید اختر ٹرولرس کے نشانے پر آگئے ہیں ۔


دراصل ہفتہ کو ایک ٹویٹ میں جاوید اختر نے لکھا کہ ہندوستان میں تقریبا 50 سالوں تک لاوڈ اسپیکر پر اذان دینا حرام تھا ۔ پھر یہ جائز ہوگیا اور اس کا کوئی اختتام نہیں ہے ، لیکن یہ ختم ہونا چاہئے ۔ اذان ٹھیک ہے ، لیکن لاوڈاسپیکر پر اذان دینے سے دوسروں کو پریشانی ہوتی ہے ۔ مجھے امید ہے کہ کم سے کم اس مرتبہ وہ خود ایسا کریں گے ۔



جاوید اختر کے اس ٹویٹ کے بعد اب وہ جم کر ٹرول ہورہے ہیں ۔ لوگ مسلسل ان کے اس ٹویٹ پر اعتراض کررہے ہیں ۔ ایک یوزر نے جاوید اختر کے ٹویٹ پر اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ میں آپ کے اس خیال کی حمایت نہیں کرتا ، برائے کرم اس طرح کے تبصرے نہ کریں ، جو اسلامی نظریہ کو ٹھیکس پہنچاتے ہیں ۔ زندگی میں صحیح راہ پر چلنے کیلئے اذان دعا کا سب سے صحیح طریقہ ہے ۔ وہیں ایک دوسرے یوزر نے لکھا کہ سر آپ کی طبیعت تو ٹھیک ہے نا ۔








سوشل میڈیا پر اس طرح کے رد عمل کو دیکھتے ہوئے جاوید اختر نے اپنی صفائی میں ایک دوسرا ٹویٹ کیا ، جس میں انہوں نے لکھا کہ مندر ہو مسجد ، اگر آپ کسی تیوہار پر لاوڈ اسپیکر کا استعمال کرتے ہیں تو ٹھیک ہے ، لیکن اس کا استعمال مندر یا مسجد میں روزانہ نہیں ہونا چاہئے ۔ تقریبا ایک ہزار سال سے زیادہ وقت سے اذان لاوڈ اسپیکر کے بغیر دی جارہی ہے ۔ اذان آپ کے مذہب کا ایک اٹوٹ حصہ ہے ، کسی گیزیٹ کا نہیں ۔


بتادیں کہ اس سے پہلے مارچ میں بھی جاوید اختر نے کورونا وائرس کے دوران مسجدوں کو بند کرنے کی حمایت کی تھی اور کہا تھا کہ وائرس کے دوران کعبہ اور مدینہ تک بند ہے ۔ ایسے میں سبھی مسلمانوں کو رمضان کے مہینہ میں گھر میں ہی نماز پڑھنے کی اپیل کی تھی ۔
First published: May 10, 2020 08:47 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading