ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

گوا کے بیچ کے کنارے رومانس، سسپینس اور تھرلر سے سجی ہے فلم ملنگ

ڈائریکٹر موہت سوری کی فلم ملنگ میں جو گوا ہے اس میں ڈرگس، شراب اور شباب کی بھرمار ہے۔ دو اجنبی، سارہ (دشا پٹانی) اور آدتیہ رائے کپور ملتے ہیں۔ اور ساتھ نکل پڑتے ہیں زندگی جینے۔ ایک ایسی زندگی جس میں ترل ہی سب کچھ ہے۔ لیکن انہیں معلوم نہیں ہے کہ جلد ہی ان کی خوشیوں کو کسی کی نظر لگنے والی ہے۔

  • Share this:
گوا کے بیچ کے کنارے رومانس، سسپینس اور تھرلر سے سجی ہے فلم ملنگ
ڈائریکٹر موہت سوری کی فلم ملنگ میں جو گوا ہے اس میں ڈرگس، شراب اور شباب کی بھرمار ہے۔ دو اجنبی، سارہ (دشا پٹانی) اور آدتیہ رائے کپور ملتے ہیں۔ اور ساتھ نکل پڑتے ہیں زندگی جینے۔ ایک ایسی زندگی جس میں ترل ہی سب کچھ ہے۔ لیکن انہیں معلوم نہیں ہے کہ جلد ہی ان کی خوشیوں کو کسی کی نظر لگنے والی ہے۔

ڈائریکٹر موہت سوری کی فلم ملنگ میں جو گوا ہے اس میں ڈرگس، شراب اور شباب کی بھرمار ہے۔ دو اجنبی، سارہ (دشا پٹانی) اور آدتیہ رائے کپور ملتے ہیں۔ اور ساتھ نکل پڑتے ہیں زندگی جینے۔ ایک ایسی زندگی جس میں ترل ہی سب کچھ ہے۔ لیکن انہیں معلوم نہیں ہے کہ جلد ہی ان کی خوشیوں کو کسی کی نظر لگنے والی ہے۔

ملنگ کے پہلے سین سے ہی ٹریلر میں کیا گیا اپنا وعدہ نبھاتی ہے۔ یہاں کسی طرح کا بناوٹی پن نہیں ہے جس کا بالی ووڈ فلم ساز عام طور پر شکار ہوجاتے ہیں۔ موہت سوری نے دشا کے گلیمر کو بھی خوب بنایا۔ وہ جب تک سمندر سے ننکلتی نظر ؤتی ہیں۔ ٹھیک اسی طرح آدتیہ بھی اپنے بڑے۔بڑے ڈولے دکھاتے رہتے ہیں۔


فلم کا میوزک بھی اچھا ہے۔ انل کپور جو کہ اپنے آپ  کو لیکر کاپ کہلانا پسند کرتے ہیں پتہ نہیں کیوں کک والے نواز الدین صدیقی سی ہنسی بکھیرتے رہتے ہیں۔ حالانکہ ان کی موجودگی نے فلم کا بھلا ہی کیا ہے۔ ویسے ان سے اس فلم میں اور بہتر کی امید تھی۔


جو بات ملنگ کو بہتر بناتی ہے وہ ہے اس کا اسکرین پلے۔ چیزیں اتینی تیزرفتار سے ہوتی ہیں کہ ناظرین شاید آرام سے کئی کمیاں نظر انداز کر دیں گے۔ اوپر سے موہت سوری کے ٹریڈ مارک سائکو کلرس کا بھی اچھا ڈوز ہے جو مین اسٹریم مصالحہ فلموں میں کھپ ہی جاتا ہے۔

فلم کا تانا بانا وہین پرانے ریوینج ڈرامے کا ہی ہے جس میں تھوڑی اور چاشنی ڈالنے کی کوشش کی گئی ہے۔ اس سے اگر کوئی فائدہ نہیں ہوا ہے تو نقصان بھی نہیں ہوا ہے۔ کل ملاکر مزہ آتا ہے۔ 135 منٹ کی بالی ووڈ فلم میں اتنا بھی ہوجانا کوئی چھوٹی بات تھوڑی ہے۔
First published: Feb 08, 2020 09:08 AM IST