ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

سلمان خان کی ایکس گرل فرینڈ کا سنسنی خیز انکشاف ، کہا : 5 اور 9 سال کی عمر میں ہوا جنسی استحصال ، 14 سال کی عمر میں ہوئی آبروریزی

سلمان خان کی ایکس گرل فرینڈ سومی علی (Salman Khan's ex girlfriend Somy Ali) پھر سے سرخیوں میں ہیں ۔ سومی نے حال ہی میں اپنے ساتھ پیش آئے جنسی استحصال کے واقعات پر کھل کر بات چیت کی ۔

  • Share this:
سلمان خان کی ایکس گرل فرینڈ کا سنسنی خیز انکشاف ، کہا : 5 اور 9 سال کی عمر میں ہوا جنسی استحصال ، 14 سال کی عمر میں ہوئی آبروریزی
سلمان خان کی ایکس گرل فرینڈ کا سنسنی خیز انکشاف ، کہا : 5 اور 9 سال کی عمر میں ہوا جنسی استحصال ، 14 سال کی عمر میں ہوئی آبروریزی۔ تصویر : @realsomyali/Instagram ۔

سومی علی نے 90 کی دہائی میں بالی ووڈ میں قدم رکھا تھا ۔ اپنی قابلیت کے دم پر بالی ووڈ میں الگ شناخت تو بنالی ، لیکن ان کے نام کی چرچا اس وقت شروع ہوئی جب سلمان خان کے ساتھ وہ ریلیشن شپ میں آئیں ، لیکن یہ رشتہ زیادہ دنوں تک نہیں چل سکا ۔ اس کے کچھ دنوں بعد ہی انہوں نے انڈسٹری کو الوداع بھی کہہ دیا تھا ۔ ان دنوں وہ نومور ٹیئرس نام کے ایک این جی او سے وابستہ ہیں ۔ حال ہی میں انہوں نے کچھ چونکانے والے انکشافات کئے ہیں ، جس کے بعد وہ پھر سے سرخیوں میں آگئی ہیں ۔ سومی نے ایک تازہ انٹرویو کے دوران اپنے ساتھ پیش آئے جنسی استحصال کے واقعات پر کھل کر بات کی ۔


کہتے ہیں کہ کچھ درد ایسے ہوتے ہیں ، جنہیں بھول پانا مشکل ہوتا ہے ۔ سومی علی کی زندگی میں بھی کچھ ایسے درد ہیں ۔ حال ہی میں پیپنگ مون کو دئے ایک انٹرویو کے دوران انہوں نے بتایا کہ جب وہ پانچ اور نو سال کی عمر کی تھیں ، تب ان کا جنسی استحصال ہوا تھا اور چودہ سال کی عمر میں ان کی آبروریزی کی گئی تھی ۔ انہوں نے بتایا کہ میرا پہلا جنسی استحصال پاکستان میں ہوا تھا ۔ اس وقت میں پانچ سال کی تھی ۔ سروینٹ کوارٹر میں ایسے تین واقعات پیش آئے ۔ میں نے اپنے والدین کو اس بابت بتایا ، ایکشن بھی لیا گیا تھا ، لیکن میرے والدین نے مجھ سے کہا تھا کہ بیٹا یہ بات کسی کو مت بتانا ۔


انہوں نے مزید کہا کہ میرے دماغ میں یہ کئی سالوں تک رہا ۔ میں سوچ رہی تھی کہ میں نے کچھ غلط کیا تھا ؟ میں نے اپنے والدین کو کیوں بتایا ؟ پاکستان اور ہندوستان کی تہذیب بہت ہی شبیہ پر مبنی ہے ، وہ مجھے تحفظ دے رہے تھے ، لیکن میں اس کو سمجھ نہیں سکی ۔ جب میں نو سال کی ہوئی تب پھر ایسا ہی واقعہ پیش آیا اور پھر چودہ سال کی عمر میں میری آبروریزی کی گئی ۔




سومی نے بتایا کہ جب وہ اپنی خودنوشت لکھنے جاتی ہیں تو انہیں وہ تاریک سروینٹ کوارٹر یاد آجاتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مجھے آج بھی اس کک کی بو یاد ہے ۔ مجھے سب یاد ہے ، ان سب میں واپس جاکر ان واقعات کے بارے میں لکھنا واقعتا تاریکی سے بھرا ہے ، اس لئے مجھے اتنا وقت لگا ۔

سومی علی نے مزید کہا کہ کچھ تین سال پہلے میں نے اس پر بات کرنی شروع کی ۔ میں ایک این جی او کے ساتھ وابستہ ہوئی ہوں جو آبروریزی متاثرین کی مدد کرتا ہے ۔ ان کا کہنا ہے کہ اس این جی او کی وجہ سے ہی ان بھیانک واقعات پر بات کر پارہی ہیں ۔ نو مور ٹیئرس نام کا ادارہ گھریلو تشدد کا شکار ہوئیں خواتین کی مدد کرتا ہے ۔ گزشتہ چودہ سالوں میں اس ادارہ نے ہزاروں خواتین ، مرد اور بچوں کے چہرے پر مسکراہٹ لانے کا کام کیا ہے ۔

آپ کو بتادیں کہ سومی علی اس سے پہلے بھی 2018 میں ایک سوشل میڈیا پوسٹ کے ذریعہ ان بھیانک واقعات کے بارے میں بتا چکی ہیں ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Mar 13, 2021 04:47 PM IST