ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

ٹی ایم سی رکن پارلیمنٹ نصرت جہاں نے پارلیمنٹ میں بیان کی فلم انڈسٹری کی خراب حالت، حکومت سے مانگا راحت پیکیج

ترنمول کانگریس رکن پارلیمنٹ (TMC MP) نصرت جہاں (Nusrat Jahan) نے فلم انڈسٹری اور اس سے منسلک لوگوں کی خراب اقتصادی حالت کا ذکر کرتے ہوئے حکومت سے مدد طلب کی ہے۔ انہوں نے آج اس موضوع کو سنجیدگی سے اٹھاتے ہوئے راحت پیکیج (Relief Packages) کی بھی گزارش کی ہے۔

  • Share this:
ٹی ایم سی رکن پارلیمنٹ نصرت جہاں نے پارلیمنٹ میں بیان کی فلم انڈسٹری کی خراب حالت، حکومت سے مانگا راحت پیکیج
ٹی ایم سی رکن پارلیمنٹ نصرت جہاں نے پارلیمنٹ میں بیان کی فلم انڈسٹری کی خراب حالت

ممبئی: ان دنوں ملک کورونا وائرس (Coronavirus) نام کی مصیبت سے جدوجہد کر رہا ہے۔ ایسے میں کئی لوگوں کا کام ٹھپ ہوگیا اور کئی انڈسٹریزی کو نقصان کا سامنا بھی کرنا پڑا۔ ایسا ہی کچھ انٹرٹینمنٹ انڈسٹری (Entertainment Industry) میں بھی دیکھنے کو ملا۔ وہیں اب بنگلہ سنیما کی مشہور اداکارہ سے ٹی ایم رکن پارلیمنٹ (TMC MP) بنیں نصرت جہاں (Nusrat Jahan) نے پارلیمنٹ میں آج یہ موضوع اٹھایا ہے۔ انہوں نے موجودہ حالات کا اثر بتاتے ہوئے فلم انڈسٹری کی خراب حالت کو تفصیل سے بیان کیا ہے۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے انٹرٹینمنٹ انڈسٹری سے منسلک لوگوں کے لئے حکومت سے راحت پیکیج کی بھی گہار لگائی ہے۔


نصرت جہاں نے پارلیمنٹ میں کہا- ’فلم انڈسٹری بڑے اقتصادی بحران کا سامنا کررہی ہے۔ بنگلہ فلم انڈسٹری بھی کافی خراب حالت میں ہے۔ ہزاروں لوگوں نے اپنی نوکری کھو دی ہے۔ حکومت سے میری گزارش ہے کہ تفریحی انڈسٹری اور اس سے جڑے لوگوں کے لئے ایک راحت پیکیج کو منظوری دیں، جس سے کہ ان لوگوں کا فوراً دوبارہ تبدیلی ہوسکے’۔




واضح رہے کہ کورونا بحران میں فلم انڈسٹری کا کام تقریباً ٹھپ پڑ گیا ہے۔ وہیں اس انڈسٹری کے ذریعہ اپنا گھر چلانے والے لوگوں کے لئے راشن کے پیسے جمع کرنا مشکل ہوگیا۔ وہیں اس دوران انڈسٹری کے کئی بڑے شخصیات لوگوں کی مدد کے لئے آگے آئے تھے۔ کئی لوگوں نے فلم انڈسٹری سے جڑے لوگوں کو نہ صرف تنخواہ اور مالی مدد دی بلکہ راشن کا بھی انتظام کیا۔

اس سے پہلے بنگال سنیما کے چارفنکار کووڈ-19 کے دوران پروٹول کے ساتھ سنیما گھروں کو کھولنے کا مرکزی حکومت نے گزارش کرچکے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ سنیما گھروں کے مالکوں اور وہیں کام کرنے والوں کی مالی حالت بہت خراب ہے۔ ان چار فنکاروں میں سے تین برسراقتدار ترنمول کانگریس کے رکن پارلیمنٹ تھے۔ انڈسٹری سے جڑے ذرائع نے بتایا تھا کہ ان لوگوں نے فنکار کی حیثیت سے یہ گزارش کی ہے۔ کئی بلاک بسٹر فلمیں دینے والے اداکار دیو نے بھی ٹوئٹ کرتے ہوئے لکھا تھا ’ہندوستانی حکومت سے سنیما گھروں کو پھر سے کھولنے پر غور کرنے کی گزارش کر رہے ہیں۔ کئی فیملی سنیما گھروں پر منحصر ہیں’۔ گھٹالہ سے رکن پارلیمنٹ نے کہا تھا- ’ہاتھ جوڑ کر پرکاش جاوڈیکر جی سے گزارش ہے کہ وہ فیصلے پر ازسر نو غور کریں’۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Sep 16, 2020 07:33 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading