ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

Happy B'day ارمیلا ماتونڈکر: فلمی دنیا سے سیاست تک، ہمیشہ رہا تنازعہ سے ناطہ

اداکارہ سے سیاستداں بنیں ارمیلا ماتونڈکر (Urmila Matondkar) آج اپنا 47 واں یوم پیدائش منا رہی ہیں۔ ان کا اور تنازعہ کا ہمیشہ ساتھ بنا رہا۔ کبھی رام گوپال ورما سے افیئر کو لے کر کبھی مذہب تبدیلی کرکے شادی کرنے پر تو کبھی بیباک سیاسی بیانات کی وجہ سے ارمیلا ماتونڈکر سرخیاں بنیں۔

  • Share this:
Happy B'day ارمیلا ماتونڈکر: فلمی دنیا سے سیاست تک، ہمیشہ رہا تنازعہ سے ناطہ
ارمیلا ماتونڈکر: فلمی دنیا سے سیاست تک، ہمیشہ رہا تنازعہ سے ناطہ

نئی دہلی: اداکارہ سے سیاستداں بنیں ارمیلا ماتونڈکر (Urmila Matondkar) آج اپنا 47 واں یوم پیدائش منا رہی ہیں۔ ہندی فلموں کے علاوہ ارمیلا ماتونڈکر نے تیلگو، تمل، ملیالم اور مراٹھی سنیما میں بھی کام کیا ہے۔ ان کی اداکاری کے لئے انہیں فلم فیئر ایوارڈ اور نندی ایوارڈ سے سرفراز بھی کیا گیا۔ ارمیلا ماتونڈکر کا اور تنازعہ کا ہمیشہ ساتھ بنا رہا۔ کبھی رام گوپال ورما سے افیئر کو لے کر، کبھی مذہب تبدیلی کرکے شادی کرنے پر، تو کبھی بیباک سیاسی بیانات کے لئے۔ پڑھیئے ’رنگیلا گرل’ کے بارے میں۔


ارمیلا ماتونڈکر نے محض تین سال کی عمر میں 1977 میں فلم ‘کرم‘ سے چائلڈ آرٹسٹ کے طور پر ڈیبیو کیا تھا۔ 1983 میں ریلیز ہوئی فلم معصوم سے انہیں ایک پہچان ملی۔ اس میں ان پر فلمایا گیا گانا ’لکڑکی کی کاٹھی، کاٹھی پے گھوڑا’ آج بھی سنا جاتا ہے۔ ارمیلا ماتونڈکر نے مین لیڈ کے طور پر ملیالم فلم چانکین کی اور ان کی پہلی ہندی فلم نرسمہا 1991 میں ریلیز ہوئی، لیکن 1995 میں آئی رام گوپال ورما کی فلم ’رنگیلا’ سے ارمیلا ماتونڈکر بالی ووڈ میں ’رنگیلا گرل’ کے نام سے چھا گئیں۔


 ہندی فلموں کے علاوہ ارمیلا ماتونڈکر نے تیلگو، تمل، ملیالم اور مراٹھی سنیما میں بھی کام کیا ہے۔ ان کی اداکاری کے لئے انہیں فلم فیئر ایوارڈ اور نندی ایوارڈ سے سرفراز بھی کیا گیا۔
ہندی فلموں کے علاوہ ارمیلا ماتونڈکر نے تیلگو، تمل، ملیالم اور مراٹھی سنیما میں بھی کام کیا ہے۔ ان کی اداکاری کے لئے انہیں فلم فیئر ایوارڈ اور نندی ایوارڈ سے سرفراز بھی کیا گیا۔


رنگیلا کے ہٹ ہونے کے بعد رام گوپال ورما اور ارمیلا ماتونڈکر نے ساتھ میں کئی فلمیں کیں۔ میڈیا رپورٹس میں کہا جاتا تھا کہ اس سے ان کے کیریئر کو نقصان ہوا۔ بالی ووڈ میں کئی لوگوں سے رام گوپال ورما کی نااتفاقی تھی، جس کے سبب کوئی ارمیلا ماتونڈکر کے ساتھ بھی کام نہیں کرنا چاہتا تھا۔ میڈیا رپورٹس کی مانیں تو جب رام گوپال ورما نے انہیں لے کر فلمیں بنانی بند کردیں تو ان کے پاس کام نہیں بچا، اسی سبب ارمیلا ماتونڈکر نے انڈسٹری سے کنارہ کشی اختیار کرلی۔

اداکارہ سے سیاستداں بنیں ارمیلا ماتونڈکر کا تنازعہ نے کبھی ساتھ نہیں چھوڑا۔
اداکارہ سے سیاستداں بنیں ارمیلا ماتونڈکر کا تنازعہ نے کبھی ساتھ نہیں چھوڑا۔


ارمیلا ماتونڈکر نے کشمیری بزنس مین (تاجر) محسن اختر کے ساتھ شادی کی، جو ان سے 9 سال چھوٹے ہیں۔ ارمیلا ماتونڈکر کے مذہب تبدیلی کرکے شادی کرنے پر تنازعہ ہوا تھا۔ ارمیلا کی شادی میں صرف دونوں فیملی اور ان کے خاص دوست شامل ہوئے تھے۔ محسن اختر ایک تاجر کے ساتھ ساتھ ماڈل بھی ہیں۔ وہ فلم ’لک بائے چانس’ میں بھی نظر آچکے ہیں۔

ارمیلا ماتونڈکر نے سال 2019 کے لوک سبھا الیکشن سے قبل سیاست میں قدم رکھا۔ انہوں نے اس وقت کانگریس پارٹی کے ٹکٹ پر قسمت آزمائی کی، لیکن انہیں شکست کامنہ دیکھنا پڑا۔ کچھ وقت کے بعد انہوں نے پارٹی سے استعفیٰ دے دیا اورسال 2020 میں ارمیلا ماتونڈکر نے شیو سینا کا دامن تھام لیا۔ ارمیلا ماتونڈکر بڑے ہی بیباکی سے سیاسی بیان دیتی رہتی ہیں اور تنازعہ میں گھر جاتی ہیں۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Feb 04, 2021 08:21 AM IST