உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Mahesh Bhattکے قتل کی سازش میں گرفتار’گینگسٹر عبید ریڈیو والا‘ کو ملی ضمانت، جانیے پورا معاملہ

    مہیش بھٹ کے قتل کی سازش رچنے والے عبید ریڈیو والا کو ملی ضمانت۔

    مہیش بھٹ کے قتل کی سازش رچنے والے عبید ریڈیو والا کو ملی ضمانت۔

    Gangster Obed Radiowala: مہیش بھٹ اور کریمہ مورانی کا یہ معاملہ پرانا ہے لیکن آج بھی مختلف گینگسٹرز فلمی دنیا پر نظریں جمائے ہوئے ہیں۔ اس کی مثال مئی میں 'سدھو موسیوال' کا قتل اور سلمان خان کو جان سے مارنے کی دھمکی ہے۔

    • Share this:
      Gangster Obed Radiowala: گینگسٹر 'عبید ریڈیو والا' کو بدھ کو ممبئی ہائی کورٹ سے راحت ملی ہے۔ عدالت نے عبید کی ضمانت منظور کر لی۔ عبید کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ گینگسٹر روی پجاری کا مبینہ ساتھی ہے، جس نے سال 2014 میں بالی ووڈ کے مشہور فلم ساز مہیش بھٹ کو قتل کرنے کی سازش رچی تھی۔ اس کے ساتھ کریم مورانی پر بھی گولیاں چلائی گئیں۔ عبید روی پجاری کی جانب سے پروڈیوسروں کو دھمکیاں دیتا تھا۔

      ہو گیا تھا امریکہ فرار
      2014 میں 'عبید ریڈیو والا' امریکہ چلا گیا تھا جہاں وہ غیر قانونی طور پر مقیم تھا، جس کی وجہ سے 2017 میں اسے امریکہ کی امیگریشن اور کسٹمز انفورسمنٹ نے گرفتار کر لیا تھا۔ اسی وقت، سال 2019 میں، اسے امریکہ سے ہندوستان واپس لایا گیا اور خصوصی عدالت میں پیش کرنے کے بعد 3 اپریل 2019 کو حراست میں بھیج دیا گیا۔ تاہم اب بامبے ہائی کورٹ نے اسے مشروط ضمانت دے دی ہے۔

      اس شرط کے ساتھ ملی ضمانت
      عدالت نے عبید کو 50 ہزار روپے کے ذاتی مچلکے اور اتنی ہی رقم کی ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دیا۔ اور اسے رہائی کے سات دنوں کے اندر اپنا پاسپورٹ خصوصی عدالت میں جمع کرانے کو کہا۔ ساتھ ہی عبید کو بھی شواہد کے ساتھ چھیڑ چھاڑ نہ کرنے کی ہدایت دی گئی اور اسے استثنیٰ ملنے تک ہر تاریخ پر باقاعدگی سے حاضر ہونے کو کہا۔


      یہ بھی پڑھیں:

      ’تمیز سے بات کرئیے۔مجھ پر کیوں چلا رہے ہو‘پیپرازی پر بھڑکی Taapsee Pannu

      یہ بھی پڑھیں:

      Hina Khanاور راکی جیسوال ایک دوسرے کو9سالوں سے کررہے ہیں ڈیٹ، فیملی بھی ہے راضی تو پھر۔۔۔


      تاہم مہیش بھٹ اور کریمہ مورانی کا یہ معاملہ پرانا ہے لیکن آج بھی مختلف گینگسٹرز فلمی دنیا پر نظریں جمائے ہوئے ہیں۔ اس کی مثال مئی میں 'سدھو موسیوال' کا قتل اور سلمان خان کو جان سے مارنے کی دھمکی ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: