உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اڑتا پنجاب کے بعد سینسر بورڈ نے نوازالدين صدیقی کی اس فلم پر لگائی روک ، نہیں دیا سرٹیفکیٹ

    ممبئی : فلم اڑتا پنجاب کے بعد نوازالدين صدیقی کی فلم حرام خور پر نیا تنازع کھڑا ہوسکتا ہے۔ سینسر بورڈ نے فلم کو سرٹیفکیٹ دینے سے انکار کر دیا ہے ۔

    ممبئی : فلم اڑتا پنجاب کے بعد نوازالدين صدیقی کی فلم حرام خور پر نیا تنازع کھڑا ہوسکتا ہے۔ سینسر بورڈ نے فلم کو سرٹیفکیٹ دینے سے انکار کر دیا ہے ۔

    ممبئی : فلم اڑتا پنجاب کے بعد نوازالدين صدیقی کی فلم حرام خور پر نیا تنازع کھڑا ہوسکتا ہے۔ سینسر بورڈ نے فلم کو سرٹیفکیٹ دینے سے انکار کر دیا ہے ۔

    • Agencies
    • Last Updated :
    • Share this:
      ممبئی : فلم اڑتا پنجاب کے بعد نوازالدين صدیقی کی فلم حرام خور پر نیا تنازع کھڑا ہوسکتا ہے۔ سینسر بورڈ نے فلم کو سرٹیفکیٹ دینے سے انکار کر دیا ہے ۔ شلوک شرما کی ہدایت میں بنی اس فلم میں 14 سال کی ایک لڑکی (شویتا ترپاٹھی) اور اس کے ٹیوشن ٹیچر (نوازالدین صدیقی) کے درمیان محبت کی کہانی ہے ۔ ایسی خبریں ہیں کہ فلم کی اسکریننگ حال میں مرکزی فلم سرٹیفیکیشن بورڈ کی انکوائری کمیٹی کے سامنے کی گئی ۔ تاہم کمیٹی نے فلم کو ہری جھنڈی دینے سے انکار کر دیا ۔

      اس بارے میں پوچھے جانے پر سكھيا اینٹرٹینمنٹ کی ڈیولیپر گنيت مونگا نے بتایا کہ ہاں ، بورڈ نے فلم کو سرٹیفکیٹ دینے سے یہ کہتے ہوئے انکار کر دیا ہے کہ فلم کا موضوع قابل اعتراض ہے ۔ انہوں نے کسی منظر کو کاٹنے کیلئے نہیں کہا، بلکہ فلم کو پاس کرنے سے یہ کہتے ہوئے انکار کر دیا کہ یہ اساتذہ کو غلط طور پر پیش کرتا ہے ۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ فلم کا پریمیئر نیویارک انڈین فلم فیسٹیول میں کیا گیا تھا ، جس میں صدیقی کو ان کی اداکاری کے لیے بہترین اداکار کا ایوارڈ دیا گیا تھا ۔

      'حرام خور کو 17 ویں جیو مامی ممبئی فلم فیسٹیول میں سلور گیٹ وے آف انڈیا ٹرافی دی گئی تھی ۔ مونگا نے کہا کہ انہوں نے کمیٹی کے ارکان کو فلم کا حوالہ سمجھانے کی کوشش کی تھی ، لیکن انہوں نے کہا کہ فلم کا موضوع ناقابل قبول ہے ۔ فلم کے پروڈیوسر اب فلم سرٹیفیکیشن اپیل ٹریبونل میں فلم کو لے جائیں گے ۔

      یہ پوچھے جانے پر کہ ضرورت پڑی تو کیا وہ عدالت جائیں گی ، تو انہوں نے کہا کہ مجھے امید نہیں ہے ۔ مجھے امید ہے کہ معاملے کا حل نکل جائے گا ۔
      First published: