உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Film Based On History:کے آصف کی کرشمہ تھی’مغل اعظم‘، اس تاریخی فلم نے بدل دی تھی ہندوستانی سینما کی تاریخ

    دلیپ کمار اور مدھوبالا کی اداکاری سے سجی فلم مغل اعظم کے آصف کی شاہکار فلم تھی۔

    دلیپ کمار اور مدھوبالا کی اداکاری سے سجی فلم مغل اعظم کے آصف کی شاہکار فلم تھی۔

    Film Based On History: فلم کو تین کیٹیگریز میں فلم فیئر ایوارڈ سے نوازا گیا تھا۔ یہ فلم بہت بڑے بجٹ کے ساتھ بنائی گئی تھی۔ ریلیز کے بعد ہر طرف مغل اعظم کا راج تھا۔ اس وقت اس فلم نے باکس آفس پر تقریباً 11 کروڑ روپے کی کمائی کی تھی۔

    • Share this:
      Film Based On History: ہندی فلم انڈسٹری میں تاریخی موضوعات پر ایک سے زیادہ فلمیں بنائی گئی ہیں۔ ان فلموں کی فہرست میں تاج محل، جودھا اکبر، رضیہ سلطان، باجی راؤ مستانی، پانی پت اور مغل اعظم جیسی فلموں کے نام شامل ہیں جنہیں بالی ووڈ میں سنگ میل کہا جاتا ہے۔ تاہم تاریخی پس منظر پر بننے والی فلموں میں مغل اعظم کا الگ مقام ہے۔ 5 اگست 1960 کو ریلیز ہونے والی اس فلم کو بالی ووڈ کے جینیئس فلم ڈائریکٹر کے آصف نے پروڈیوس کیا تھا۔ ان کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ مغل اعظم بنانے کے لیے ہی پیدا ہوئے تھے۔ انہوں نے اس دور کے سب سے بڑے ستاروں دلیپ کمار، مدھوبالا، پرتھوی راج کپور، درگا کھوٹے اور اجیت کے ساتھ یہ فلم تیار کی تھی۔

      فلم کی کہانی
      فلم میں مغل بادشاہ اکبر (پرتھوی راج کپور) اور ان کے بیٹے سلیم (دلیپ کمار) کی کہانی کو دکھایا گیا ہے۔ فلم میں سلیم اور ان کی کنیر (مدھوبالا) کے درمیان محبت کو دکھایا گیا ہے۔ اس میں دکھایا گیا ہے کہ بیٹا اپنے باپ کے خلاف کیسے کھڑا ہو جاتا ہے۔ جو شہنشاہ ہندوستان سے محبت کرتا ہے وہ کسی کنیز کو ملکہ ہندوستان بنتے نہیں دیکھ سکتا۔ اس تاریخی فلم نے خود ہندوستانی سنیما کی تاریخ بدل دی تھی۔ اس کے بعد اس طرح کوئی اور فلم دوبارہ نہیں بن سکی۔

      فلم کی سب سے بڑی خوبی یہ ہے کہ اس کے تمام کردار آج بھی زندہ دکھائی دیتے ہیں۔ فلم کے مناظر بہترین انداز میں تاریخی شان و شوکت کی جھلک پیش کرتے ہیں۔ کے آصف نے اس کے لیے بہت محنت کی تھی۔ فلم کو حقیقت کے قریب تر بنانے کے لیے نقلی موتیوں کی بجائے اصلی موتیوں کا استعمال کیا گیا۔ پرتھوی راج کپور حقیقت کی جھلک حاصل کرنے کے لیے ننگے پاؤں ریت پر چل پڑے۔ فلم میں ایک عظیم الشان سیٹ استعمال کیا گیا تھا۔ فلم کے گانے، موسیقی، فلم بندی اور مکالموں کو بے حد سراہا گیا۔ اس کے ساتھ اداکاروں کی اداکاری کو بھی خوب پسند کیا گیا۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Bollywood Actress Education: دیپیکا، امیشا پٹیل، پریتی زنٹا اور سونم کپور کی تعلیمی قابلیت

      یہ بھی پڑھیں:
      پانچ نیشنل ایوارڈ جیتنے والیShabana Azmiکتنی تعلیم یافتہ ہیں؟ جانیے اُن کی تعلیمی قابلیت

      فلم کو تین کیٹیگریز میں فلم فیئر ایوارڈ سے نوازا گیا تھا۔ یہ فلم بہت بڑے بجٹ کے ساتھ بنائی گئی تھی۔ ریلیز کے بعد ہر طرف مغل اعظم کا راج تھا۔ اس وقت اس فلم نے باکس آفس پر تقریباً 11 کروڑ روپے کی کمائی کی تھی۔ سال 2009 میں ایک رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ اگر مہنگائی کے لحاظ سے دیکھا جائے تو مغل اعظم اب تک کی سب سے زیادہ کمائی کرنے والی فلم ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: