ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

طلاق پر چھلکا دیا مرزا کادرد، بولیں ، بدل گیا لوگوں کا برتاؤ

دیا مرزا گزشتہ دنوں پہلے کافی چرچا میں تھی، چرچا کی وجہ تھی ان کے شوہر ساحل سانگھا کے ساتھ ان کا طلاق جس کے بعد اب پہلی مرتبہ دیا نے ساحل سانگھا کے ساتھ اپنے طلاق کو لیکر کھل کر بات چیت کی ہے۔ پنک ولا سے بات کرتے ہوئے دیا نے اپنے طلاق(divorce) کے بارے میں کھل کر بات کی۔

  • Share this:
طلاق پر چھلکا دیا مرزا کادرد، بولیں ، بدل گیا لوگوں کا برتاؤ
دیا مرزا گزشتہ دنوں پہلے کافی چرچا میں تھی، چرچا کی وجہ تھی ان کے شوہر ساحل سانگھا کے ساتھ ان کا طلاق جس کے بعد اب پہلی مرتبہ دیا نے ساحل سانگھا کے ساتھ اپنے طلاق کو لیکر کھل کر بات چیت کی ہے۔ پنک ولا سے بات کرتے ہوئے دیا نے اپنے طلاق(divorce) کے بارے میں کھل کر بات کی۔

بالی ووڈ اداکارہ دیا مرزا گزشتہ دنوں پہلے کافی چرچا میں تھی، چرچا کی وجہ تھی ان کے شوہر ساحل سانگھا کے ساتھ ان کا طلاق جس کے بعد اب پہلی مرتبہ دیا نے ساحل سانگھا کے ساتھ اپنے طلاق کو لیکر کھل کر بات چیت کی ہے۔ پنک ولا سے بات کرتے ہوئے دیا نے اپنے طلاق(divorce) کے بارے میں کھل کر بات کی۔ انہوں نے کہا کہ کیسے شوہر ساحل سانگھا سے الگ ہونے کے بعد ان کے لئے لوگوں کا برتاؤ بدل گیا تھا۔

دیا نے کہا، "آپ کی اپنے بارے میں جو سمجھ ہے، وہ ہی ایک چیز ہے جو آپ کو کسی بھی حالات میں ڈٹے رہنے کی طاقت دیتی ہے۔ ورنہ آپ کبھی اپنے ساتھ ہونے والی چیزوں کا سامنانہیں کرسکتے۔ پھر آپ صرف دوسروں کو ہی نہیں بلکہ خود کو بھی دھوکہ دے رہے ہیں۔ ان کے لئے لوگوں کے برتاؤ کے بارے میں دیا نے آگے کہا ، مجھے ہنسی آتی تھی۔ آج بھی آتی ہے۔ آپ ایک ایسی جگہ میں ہیں جہاں لوگ پڑھے۔لکھے تو ہیں لیکن پھر بھی دکھی محسوس کرتے ہیں۔ وہ آپ کے درد کو دمجھت بھی ہیں۔ اگر وہ آپ کو دیکھ رہے ہیں تو یہ ضروری نہیں کہ آپ کو غلط ہی سمجھ رہے ہوں، کبھی۔کبھی وہ رحم کے نظریے سے بھی آپ کو دیکھتے ہیں۔



انہوں نے آگے کہا، "کبھی۔کبھی لوگ آپ کو عزت کے جذبات سے بھی دیکھتے ہیں۔ لوگ مجھ سے پوچھتے ہیں کہ میں کیسے اتنی طاقتور ہوں اور کیسے اس حالت میں اٹھ کر کام پر چلی جاتی ہوں؟ میں بس انہیں یہی کہنا چاہتی ہوں کہ میں اپنا راستہ ڈھونڈ لیتی ہوں اور یہ امید کرتی ہوں وہ بھی اپنا راستہ ڈھونڈ پائے۔




دیا نے کہا کہ کیسے طلاق کے ساتھ سماج کا دیا ہوا تمغہ بھی آتا ہے۔ انہوں نے کہا، "کچھ لوگ سمجھتے ہیں کہ طلاق کسی بات سے سمجھوتہ نہ کرنے کا بہانہ ہے۔ زندگی میں آپ کو کئی چیزوں  کو اپنانا یا ان سے سمجھوتہ کرنا ہی پڑتا ہے لیکن سوال یہ ہے کہ ی یہ سب کب رکتا ہے؟ کتنا بہت زیادہ یا بہت کم ہوتا ہے؟ یہپ کی خود کی خواہش ہے'۔
First published: Mar 07, 2020 10:13 AM IST